راکیش استھانہ کی جانچ کررہے سی بی آئی افسرنے لی سپریم کورٹ کی پناہ، رشوت لینے کے شواہد کا دعویٰ

بسی نے اپنے ٹرانسفرکے حکم کوعدالت میں چیلنج دیتے ہوئے عرضی دائرکی۔ عرضی میں انہوں نے کہا کہ شواہد کی بنیاد پروہ استھانہ کو قصوروارٹھہرانے والے تھے۔

Oct 30, 2018 02:21 PM IST | Updated on: Oct 30, 2018 02:21 PM IST
راکیش استھانہ کی جانچ کررہے سی بی آئی افسرنے لی سپریم کورٹ کی پناہ، رشوت لینے کے شواہد کا دعویٰ

ڈپٹی ایس پی اے کے بسی سی بی آئی دفتر کے باہر جاتے ہوئے۔

سی بی آئی کے اسپیشل ڈائریکٹر راکیش استھانا پرعائد الزامات کی جانچ کررہے سی بی آئی افسر اے کے بسی نے معین قریشی معاملے میں سپریم کورٹ کی پناہ لی ہے۔ گزشتہ ہفتے ڈائریکٹر آلوک ورما اورراکیش استھانہ کو چھٹی پربھیجے جانے پرہوئی ہنگامہ آرائی کے بعد بسی کو پورٹ بلیئرٹرانسفرکردیا گیا تھا۔

بسی نے اپنے ٹرانسفرکے حکم کوعدالت میں چیلنج دیتے ہوئے عرضی دائرکی۔ عرضی میں انہوں نے کہا کہ شواہد کی بنیاد پروہ استھانہ کو قصوروارٹھہرانے والے تھے۔ انہوں نے کورٹ میں منگل کو کہا کہ ان کے پاس اس بات کے ثبوت تھے کہ ایف آئی آر میں جن لوگوں کا نام شامل تھا، ان لوگوں نے 3.3 کروڑ روپئے کی رشوت لی تھی۔

Loading...

واضح رہے کہ استھانہ نے سی بی آئی میں بسی کے خلاف ایک شکایت درج کرائی تھی، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ بسی آلوک ورما کے احکامات پرکام کررہے ہیں۔ دراصل دہلی ہائی کورٹ نے سی بی آئی کو حکم دیا تھا کہ راکیش استھانہ کے خلاف یکم نومبرتک اسٹیٹس کو برقرار رکھاجائے۔

دراصل یہ پورا معاملہ حیدرآباد کے ایک ریئل اسٹیٹ ایجنٹ ستیش سانا کا بیان درج کرنے کے بعد روشنی میں آیا، جس کی جانچ راکیش استھانا کی ایک ٹیم رشوت کے معاملے میں کررہی تھی۔ الزام تھا کہ ستیش سانا نے گوشت تاجرمعین قریشی کو 50 لاکھ روپئے رشوت کے طورپردیئے تھے، جو کہ ایک کمپنی میں شیئرکے طورپردکھایا گیا تھا تاکہ رشوت کے معاملے میں راحت مل سکے۔

تفتیش کے دوران اسپیشل ڈائریکٹرراکیش استھانا کی ٹیم کو خدشہ ہوا کہ ستیش سانا کا بیان جھوٹا ہے، اس کے بعد سانا کے خلاف لک آوٹ نوٹس جاری کی گئی، جس کی وجہ سے 25 ستمبر2018 سے ملک چھوڑکر باہرجانے پرستیش کے اوپرروک لگ گئی۔

یہ بھی پڑھیں:    سپریم کورٹ کا حکم - دو ہفتے میں پوری ہو جانچ، ناگیشور راؤ نہیں لیں گے کوئی بڑا فیصلہ

یہ بھی پڑھیں:    گرفتاری کے بعد بولے راہل گاندھی، وزیر اعظم بدعنوان ہیں، وہ سچ نہیں چھپا سکتے

یہ بھی پڑھیں:             گرفتاری کے خلاف ہائی کورٹ پہنچے سی بی آئی کے ڈی ایس پی دیویندرکمار

یہ بھی پڑھیں:    سی بی آئی کے رشوت لینے کے معاملے پرراہل گاندھی کا طنز، وزیراعظم مودی کے پسندیدہ تھے استھانا

Loading...