ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کے خلاف یوگی حکومت کی اپیل سپریم کورٹ سے مسترد

سپریم کورٹ نے ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کے خلاف یوپی حکومت کی اپیل جمعرات کو مسترد کردی اتر پردیش حکومت نے ڈاکٹر کفیل خان کے خلاف قومی سلامتی ایکٹ (این ایس اے) کی دفعات ہٹانے کے الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو عدالت عظمی میں چیلنج کیا تھا۔

  • Share this:
ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کے خلاف یوگی حکومت کی اپیل سپریم کورٹ سے مسترد
ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کے خلاف یوگی حکومت کی اپیل سپریم کورٹ سے مسترد

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کے خلاف یوپی حکومت کی اپیل جمعرات کو مسترد کردی اتر پردیش حکومت نے ڈاکٹر کفیل خان کے خلاف قومی سلامتی ایکٹ (این ایس اے) کی دفعات ہٹانے کے الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو عدالت عظمی میں چیلنج کیا تھا۔ سپریم کورٹ میں چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس وی سبرامنیم کے بنچ نے ریاستی حکومت کی اپیل یہ کہتے ہوئے یوگی حکومت کی درخواست مسترد کر دی کہ اس کو ہائی کورٹ کے فیصلے میں مداخلت کی کوئی وجہ نظر نہیں آتی ہے۔


جسٹس بوبڈے نے کہا ’’ ہم (ہائی کورٹ) کے فیصلے میں مداخلت نہیں کریں گے۔ تاہم ہمارے کسی بھی تبصرے سے متعلقہ دیگر کارروائی متاثر نہیں ہوگی‘‘۔ ڈاکٹر کفیل خان اس وقت سرخیوں میں آئے جب گورکھپور میڈیکل کالج میں بچوں کی ہلاکت کے معاملے میں انہیں معطل کردیا گیا تھا۔ تاہم انہیں شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) اور این آر سی کے حوالے سے اشتعال انگیز تقاریر کرنے پر گرفتار کیا گیا تھا۔ الہ آباد ہائی کورٹ نے انھیں ستمبرمیں رہا کردیا تھا۔ وہ ساڑھے سات ماہ سے جیل بند تھے۔


سپریم کورٹ میں چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس وی سبرامنیم کے بنچ نے ریاستی حکومت کی اپیل یہ کہتے ہوئے یوگی حکومت کی درخواست مسترد کر دی کہ اس کو ہائی کورٹ کے فیصلے میں مداخلت کی کوئی وجہ نظر نہیں آتی ہے۔
سپریم کورٹ میں چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس وی سبرامنیم کے بنچ نے ریاستی حکومت کی اپیل یہ کہتے ہوئے یوگی حکومت کی درخواست مسترد کر دی کہ اس کو ہائی کورٹ کے فیصلے میں مداخلت کی کوئی وجہ نظر نہیں آتی ہے۔


اس لئے ہوئی تھی ڈاکٹر کفیل خان کی گرفتاری

واضح رہے کہ شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) اور این آر سی کو لے اشتعال انگیز بیانات دینے کے الزام میں ڈاکٹر کفیل خان کو گرفتار کیا گیا تھا۔ یکم ستمبر 2020 کو الہ آباد ہائی کورٹ نے ڈاکٹر کفیل خان پر لگائے گئے این ایس اے کو غلط بتاتے ہوئے اسے ہٹا دیا اور فوراً رہائی کا حکم دیا تھا۔ الہ آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس گووند ماتھر اور جسٹس سومتر دیال سنگھ کی بینچ نے ڈاکٹر کفیل خان کو فوری طور پر رہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

نیوز ایجنسی یو این آئی اردو کے اِن پُٹ کے ساتھ۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 18, 2020 12:45 AM IST