رافیل سودا معاملہ میں مودی حکومت کو راحت، نظرثانی کی عرضیاں سپریم کورٹ میں مسترد

عدالت عظمی نے گزشتہ سال 14 دسمبر کو اپنا فیصلہ سنایا تھا اور معاہدہ کی آزادانہ تحقیقات کرانے کے مطالبہ کو مسترد کردیا تھا۔

Nov 14, 2019 12:24 PM IST | Updated on: Nov 14, 2019 12:27 PM IST
رافیل سودا معاملہ میں مودی حکومت کو راحت، نظرثانی کی عرضیاں سپریم کورٹ میں مسترد

رافیل سودا معاملہ میں مودی حکومت کو راحت، نظرثانی کی عرضیاں سپریم کورٹ میں مسترد

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے رافیل لڑاکا طیارہ  سودا معاملے میں اپنے فیصلے پر نظر ثانی سے جمعرات کو انکار کر دیا۔ چیف جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس کے ایم جوزف کی بینچ نے مرکزی حکومت کو کلین چٹ دینے کے اپنے فیصلہ کے خلاف دائر تمام نظر ثانی عرضیاں مسترد کر دیں۔

قابل غور ہے کہ عدالت عظمی نے گزشتہ سال 14 دسمبر کو اپنا فیصلہ سنایا تھا اور معاہدہ کی آزادانہ تحقیقات کرانے کے مطالبہ کو مسترد کردیا تھا۔ سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا اور ارون شوری اور جانے مانے وکیل پرشانت بھوشن سمیت کچھ دیگر نے فیصلہ پر نظر ثانی کے لئے عرضیاں دائر کی تھیں۔ اسی سے منسلک ایک اور معاملہ میں بینچ نے کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کے خلاف توہین عدالت کا معاملہ ختم کر دیا۔

بینچ نے سیاسی طور پر حساس ان نظر ثانی درخواستوں پر 10 مئی کو سماعت مکمل کی تھی اور فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔ بنچ کی جانب سے جسٹس کول نے فیصلہ پڑھا۔

Loading...

Loading...