உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Kisan Andolan: سپریم کورٹ نے کہا- کسانوں کو دہلی میں انٹری ملے یا نہیں، طے کرے گی دہلی پولیس

    سپریم کورٹ نے کہا- کسانوں کو دہلی میں انٹری ملے یا نہیں، طے کرے گی دہلی پولیس

    سپریم کورٹ نے کہا- کسانوں کو دہلی میں انٹری ملے یا نہیں، طے کرے گی دہلی پولیس

    Tractor Rally: سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ دہلی میں 26 جنوری کو کسانوں کی ٹریکٹر ریلی نکلے گی یا نہیں اور رام لیلا میدان میں احتجاج کے لئے جگہ دی جائے یا نہیں، اس پر فیصلہ لینے کا اختیار دہلی پولیس کو ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: مرکزی حکومت کے نئے زرعی قوانین (New Farm Laws) کے خلاف ٹریکٹر ریلی (Tractor Rally) پر روک لگانے کی عرضی کی سپریم کورٹ (Supreme Court) میں سماعت بدھ تک کے لئے ملتوی کردی گئی ہے دلی پولیس کی عرضی پر پیر کو چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے (Justice SA Bobde) کی صدارت والی تین رکنی بنچ کے سامنے سماعت ہونی تھی لیکن جسٹس بوبڈے نے کہا کہ کسان تحریک کی سماعت کرنے والی بنچ ہی اس معاملے کی سماعت کرے گی۔ آج چیف جسٹس کے ساتھ دو دیگر جسٹس بیٹھے تھے۔ جسٹس بوبڈے نے سماعت کے دوران کہا کہ دلی میں داخلہ کا سوال قانون و انتظام کا معاملہ ہے اور دلی میں کون آئے گا یا نہیں، اسے دلی پولیس کو طے کرنا ہے۔ جسٹس بوبڈے نے کہا کہ انتظامیہ کو کیا کرنا ہے اور کیا نہیں، عدالت طے نہیں کرے گی اب اس معاملے کی سماعت 20 مارچ کو ہوگی۔

      کیا ہے دہلی پولیس کا مطالبہ؟

      سپریم کورٹ (Supreme Court) دہلی پولیس (Delhi Police) کی اس عرضی پر سماعت ہو رہی تھی کہ کسانوں کی ٹریکٹر ریلی کو منسوخ کیا جائے۔ پولیس کی دلیل ہے کہ اس سے یوم جمہوریہ پریڈ خراب ہوسکتی ہے۔ ساتھ ہی لا اینڈ آرڈر خراب ہونے کا بھی حوالہ دیا گیا تھا۔ تاہم سپریم کورٹ نے کہا کہ پہلے دہلی پولیس اس پر کوئی فیصلہ لے، پھر عدالت دیکھے گا کہ کیا ہوسکتا ہے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ دہلی پولیس اپنا کام عدالت سے نہ کروائے۔

      سپریم کورٹ کا جواب

      چیف جسٹس ایس ایے بوبڈے نے کہا کہ لا اینڈ آرڈر بنائے رکھنا پولیس کا کام ہے۔ پولیس طے کرے کہ ریلی یا احتجاج ہونا چاہئے یا نہیں۔ اگر ہو تو کس طرح سے اس کا انعقاد ہو۔ ساتھ ہی یہ بھی طے کرے کہ اس سے کیا خطرہ ہوسکتا ہے۔ عدالت ایسے معاملوں میں دخل نہیں دے سکتا۔ اب اس معاملے میں سپریم کورٹ میں بدھ کو سماعت ہوگی۔ امید کی جا رہی ہے کہ آئندہ سماعت سے پہلے دہلی پولیس ریلی اور احتجاجی مظاہرہ پر کوئی فیصلہ لے گی۔ پھر سپریم کورٹ دیکھے گا کہ وہ فیصلہ صحیح ہے یا نہیں۔

      کیا ہے کسان تنظیموں کی دلیل؟

      دوسری جانب کسان تنظیموں نے بھی کہا ہے کہ وہ دہلی کے اندر یوم جمہوریہ پریڈ کے نزدیک نہیں جانا چاہتے۔ بلکہ دہلی کے رنگ روڈ پر ٹریکٹر ریلی نکالنا چاہتے ہیں۔ یوم جمہوریہ تقریب میں کوئی رخنہ اندازی نہیں کی جائے گی۔ فی الحال انہیں دہلی کے بارڈر سے باہر رکھا گیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: