ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اجودھیا اراضی تنازع : ثالثی پینل نے سیل بند لفافے میں سپریم کورٹ میں پیش کی اپنی رپورٹ ، دو اگست کو ہوگی سماعت

اجودھیا اراضی تنازع کیلئے تشکیل ثالثی پینل نے اپنی رپورٹ سیل بند لفافے میں سپریم کورٹ میں پیش کردی ہے ۔ سپریم کورٹ کی آئینی بینچ اس رپورٹ پر جمعہ کی دوپہر 2 بجے سماعت کرے گی ۔

  • Share this:
اجودھیا اراضی تنازع : ثالثی پینل نے سیل بند لفافے میں سپریم کورٹ میں پیش کی اپنی رپورٹ ، دو اگست کو ہوگی سماعت
آئین کی نظر میں سبھی آستھائیں (عقیدے) یکساں ہیں۔ کورٹ آستھا نہیں ثبوتوں پرفیصلہ دیتا ہے۔

اجودھیا اراضی تنازع کیلئے تشکیل ثالثی پینل نے اپنی رپورٹ سیل بند لفافے میں سپریم کورٹ میں پیش کردی ہے ۔ سپریم کورٹ کی آئینی بینچ اس رپورٹ پر جمعہ کی دوپہر 2 بجے سماعت کرے گی ۔ رپورٹ دیکھنے کے بعد سپریم کورٹ یہ طے کرے گا کہ اس معاملہ کی سماعت کب سے شروع کی جائے ۔ غور طلب ہے کہ اجودھیا معاملہ میں سپریم کورٹ کی ہدایت پر اراضی تنازع کے حل کیلئے مارچ میں ثالثی پینل بنایا گیا تھا ۔ اس کمیٹی نے اپنی رپورٹ پوری کرلی ہے ۔


چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی صدارت والی پانچ ججوں کی بینچ نے 11 جولائی کو اس ثالثی پینل سے رپورٹ مانگی تھی ۔ متازع اراضی کے سبھی فریقوں نے دہلی میں واقع اترپردیش بھون میں پیر کو اس معاملہ میں اپنی آخری میٹنگ کی تھی ۔


خیال رہے کہ ثالثی پینل نے اپنی پیش رفت کے بارے میں آخری رپورٹ 18 جولائی کو سپریم کورٹ میں پیش کی تھی ، جس پر چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا تھا کہ ثالثی پینل کی رپورٹ خفیہ ہے ، اس لئے ابھی اس کو ریکارڈ میں نہیں لیا جارہا ہے ۔ سپریم کورٹ نے یہ بھی کہا تھا کہ پینل جلد ہی اپنی رپورٹ سونپے ۔ رپورٹ سونپے جانے کے بعد چیف جسٹس اس معاملہ میں دو اگست کو سماعت کریں گے ، جو پہلے تین اگست کو ہونے والی تھی ۔


غور طلب یہ بھی ہے کہ ایک ہندو فریق نے گزشتہ 9 جولائی کو سپریم کورٹ سے اس معاملہ میں جلد از جلد سماعت کی گزارش کی تھی ۔ اس نے باقاعدہ اس کیلئے درخواست بھی دائر کی تھی ۔ فریق گوپال سنگھ وشارد کی جانب سے عدالت میں کہا گیا تھا کہ ثالثی کے معاملوں میں کوئی خاص پیش رفت نہیں دیکھی گئی ہے ، اس لئے جلد سے جلد سماعت کیلئے تاریخ مقرر کی جائے ۔
First published: Aug 01, 2019 10:57 PM IST