உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کاشی وشواناتھ-گیانواپی تنازعہ پرSCمیں سماعت آج، شیولنگ اور تہہ خانے میں موجود مورتیوں کی پوجا کی اجازت کی بھی ہے مانگ

    Gyanvapi Masjid Case: آج ہے اہم سماعت۔

    Gyanvapi Masjid Case: آج ہے اہم سماعت۔

    Gyanvapi Masjid Case: گیانواپی کمپلیکس کے کورٹ سروے کے دوران وہاں مبینہ طور پر پائے جانے والے شیولنگ اور اس کے قریب تہہ خانے کی پوجا کرنے کی اجازت مانگنے والی 3 درخواستیں سپریم کورٹ میں دائر کی گئی ہیں۔

    • Share this:
      Gyanvapi Masjid Case: کاشی وشوناتھ-گیانواپی مسجد تنازعہ پر سپریم کورٹ میں آج دوپہر 2 بجے سماعت ہوگی۔ یہ معاملہ جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ، سوریہ کانت اور پی ایس نرسمہا کی خصوصی بنچ کے سامنے سماعت کے لیے آیا ہے۔ اہم کیس کے ساتھ ساتھ سپریم کورٹ مسجد کے احاطے میں پائے جانے والے شیو لنگ کی پوجا کرنے کی اجازت مانگنے والی تازہ درخواستوں پر بھی سماعت کرے گی۔

      سپریم کورٹ کا سابقہ حکم
      سپریم کورٹ میں اس پورے معاملے کی آخری سماعت 20 مئی کو ہوئی تھی۔ اس دن سپریم کورٹ نے گیانواپی کیس وارانسی کے ڈسٹرکٹ جج کو منتقل کر دیا۔ یہ حکم دیتے ہوئے جسٹس چندر چوڑ کی سربراہی میں تین ججوں کی بنچ نے کہا کہ کیس کی پیچیدگی کو دیکھتے ہوئے اسے زیادہ تجربہ کار جج کے پاس بھیج دیا جا رہا ہے۔ بنچ نے کہا تھا کہ ضلع جج کو مسلم فریق کی درخواست کو ترجیح دینی چاہیے، جس میں ہندو فریق کے معاملے کو سماعت کے لیے نااہل قرار دیا گیا ہے۔

      سپریم کورٹ نے بھی کیمپس میں جمود برقرار رکھنے کا حکم دیا تھا۔ عدالت نے کہا تھا کہ 17 مئی کو دیا گیا عبوری حکم نافذ رہے گا۔ اس کے تحت شیولنگ کی جگہ کو محفوظ رکھا جائے گا۔ یعنی وہاں وضو نہیں کیا جائے گا لیکن احاطے میں پہلے کی طرح نمازیں ادا کی جاتی رہیں گی۔ عدالت نے انتظامیہ سے وضو کے لئے مناسب انتظامات کرنے کو کہا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:

      جرنلسٹ محمد زبیر تہاڑ جیل سے رہا، سپریم کورٹ نے دی یوپی میں درج سبھی معاملوں میں ضمانت

      یہ بھی پڑھیں:
      MHA: ہندوستان میں دہشت گردانہ نظریات کی طرف جھکاؤ ملک کیلئے خطرہ، وزارت داخلہ کا بیان

      پوجا کی اجازت طلب کرنے والی نئی درخواستیں
      گیانواپی کمپلیکس کے کورٹ سروے کے دوران وہاں مبینہ طور پر پائے جانے والے شیولنگ اور اس کے قریب تہہ خانے کی پوجا کرنے کی اجازت مانگنے والی 3 درخواستیں سپریم کورٹ میں دائر کی گئی ہیں۔ پہلی درخواست 7 خواتین کی ہے۔ ان کے نام ہیں امیتا سچدیو، لکشمی دیوی، سیتا ساہو، منجو ویاس، ریکھا پاٹھک، پرینکا گوسوامی اور پارول کھیڑا۔ ایسی ہی ایک درخواست راجیش منی ترپاٹھی نامی درخواست گزار نے بھی دائر کی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: