ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سپریم کورٹ میں آج سماعت: کیا شاہین باغ کااحتجاج 60 دن مکمل کرپائیگا؟

گزشتہ 58دنوں سے نئی دہلی کے شاہین باغ میں خواتین کی جانب سے شہریت ترمیمی قانون ، این آرسی ، این پی آر کے خلاف احتجاج کیاجارہاہے۔

  • Share this:
سپریم کورٹ میں آج سماعت: کیا شاہین باغ کااحتجاج 60 دن مکمل کرپائیگا؟
شاہین باغ کے احتجاج پر آج ہوگا اہم فیصلہ

شہریت ترمیمی قانون ، این آرسی، این پی آر کے خلاف کے دہلی کے شاہین باغ کو لیکر آج سپریم کورٹ میں اہم سماعت ہے۔ سپریم کورٹ میں شاہین باغ احتجاج کو ختم کرانے اور بند شاہراہ کو کھولنے کی مانگ کرتے ہوئے متعدد عرضداشتیں دائر کی گئی تھی۔ یاد رہے کہعدالت نے کہا تھاکہ اس معاملہ کی آئندہ سماعت اب پیرکو ہوگی۔ عدالت نے بتایا کہ دہلی اسمبلی انتخابات کے پیش نظر سماعت کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کیاجارہاہے۔ کیونکہ دہلی میں 8فروری کو اسمبلی انتخابات کے لیے پولنگ تھی۔ اس لیے کورٹ اس معاملہ کی اب پیر یعنی آج تک ملتوی کردیاتھا۔ کورٹ نے کہا کہ ہم اس معاملہ کو حل کرنے پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہیں اورہم سجھ سکتے ہیں احتجاج کے سبب سڑک بند ہونے سے کئی لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہورہاہے ۔



گزشتہ 58دنوں سے نئی دہلی کے شاہین باغ میں خواتین کی جانب سے شہریت ترمیمی قانون ، این آرسی ، این پی آر کے خلاف احتجاج کیاجارہاہے۔ سپریم کورٹ میں سماعت کو لیکر لوگوں کے ذہین میں یہ سوال ہے کہ کیا شاہین باغ کا احتجاج 60 دن بھی مکمل نہیں کرپائےگا ؟۔ اس پہلے شاہین باغ کے احتجاج کی قیادت کرنے والی تین بزرگ خواتین نے گورنر سے ملاقات کی تھی۔شاہین باغ میں احتجاج جاری: فائل فوٹو

واضح رہے کہ درخواست گذار کشور گرگ نے معاملہ کی جلد سماعت کیلئے چیف جسٹس آف انڈیا اروند بوبڈے کی سربراہی والی ڈیویژن بنچ کو اس کاخصوصی ذکر کیا۔ جس کے بعد عرضی کی سماعت 7 فروری کو مقرر کی گئی تھی۔یاد رہے کہ عرضدداشت شاہین باغ میں چل رہے احتجاج کو جلد ختم کرانےکا مطالبہ کیاگیا ہے تاکہ کالندی گنج و شاہین باغ کا راستہ دوبارہ کھل سکے۔ اس کے لئے عدالت مرکزی حکومت اور متعلقہ محکمہ کو ہدایت جاری کرے۔عرضی گذار نے یہ بھی کہا کہ عدالت عظمی مرکزی حکومت کو عوامی مقامات پر دھرنا اورمظاہرہ پر پابندی کیلئے رہنمایا نہ اصول جاری کرنے کا حکم دے۔
First published: Feb 10, 2020 08:48 AM IST