سی بی آئی جج بی ایچ لويا موت معاملہ کی جانچ سے متعلق تمام عرضیاں مسترد

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے سی بی آئی خصوصی کورٹ کے جج بی ایچ لویا کی موت پر ایس آئی ٹی کی تحقیقات کی درخواست مسترد کردی ہے۔

Apr 19, 2018 11:30 AM IST | Updated on: Apr 19, 2018 11:52 AM IST
سی بی آئی جج بی ایچ لويا موت معاملہ کی جانچ سے متعلق تمام عرضیاں مسترد

سی بی آئی خصوصی کورٹ کے جج بی ایچ لویا : فائل فوٹو۔

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے جج بی ایچ لويا موت کیس کی آزادانہ جانچ کرانے سے متعلق تمام عرضیاں آج مسترد کر دیں۔ چیف جسٹس دیپک مشرا، جسٹس اے ایم كھانولكر اور جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ کی بنچ نے عرضیاں یہ کہتے ہوئے مسترد کر دیں کہ لويا موت معاملہ کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کرنے والی ان درخواستوں میں کوئی ’میرٹ‘ نہیں ہے۔

جسٹس چندرچوڑ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا’’بی ایچ لويا کی موت کے معاملہ میں شک کی کوئی بنیاد نظر نہیں آتی۔ لہذا معاملہ کی آزادانہ تحقیقات کےحکم کی کوئی بنیاد نظر نہیں آتی‘‘۔

عدالت نے گزشتہ 16 مارچ کو اس معاملے میں فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔

عدالت عظمی نے کہا کہ سی بی آئی جج بی ایچ لويا کی موت سے منسلک واقعات کے بارے میں چار جوڈیشل افسران - سری کانت کلکرنی،سری رام مودك ،آر راٹھی اور وجے کماررڈے اور بمبئی ہائی کورٹ کے ججوں- جسٹس بھوشن گوئی اور جسٹس سنیل شكرے کے بیان پر عدم اعتماد ظاہر کرنے کی کوئی وجہ نظر نہیں آتی۔ عدالت نے درخواست گزاروں میں سے ایک بمبئی لائرز ایسوسی ایشن کی جانب سے پیش ہوئے سینئر وکیل دشینت دوے کی کچھ دلیلوں پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ دوے نے معاملہ سے منسلک ججوں کے خلاف الزام لگانے سے بھی گریز نہیں کیا۔

Loading...

جسٹس چندرچوڑ نے کہا کہ معاملہ کی آزادانہ تحقیقات کے مطالبہ کی آڑ میں عدلیہ کی شبیہ کو بھی تار تار کرنے کی کوشش کی گئی۔ عدالت نے کہا کہ کاروباری اور سیاسی جنگ مفاد عامہ کی درخواستوں کے ذریعے نہیں لڑی جا سکتی اور متعلقہ درخواستوں میں’میرٹ‘ کا فقدان نظر آتا ہے۔

دراصل، سی بی آئی کے خصوصی جج بی ایچ لویا سہراب الدین شیخ انکاونٹر معاملہ کی سماعت کر رہے تھے۔ ان کی وفات یکم دسمبر، 2014 کو ناگپور میں اس وقت ہوئی تھی جب وہ اپنے ساتھی کی بیٹی کی شادی میں جا رہے تھے۔ بتایا جاتا ہے کہ جج لویا پر دل کا دورہ پڑا تھا۔ نومبر 2017 میں جج لویا کی موت کے حالات پر ان کی بہن نے شک ظاہر کیا۔ جج لویا کی بہن کے مطابق، ان کی موت فطری نہیں تھی۔ اس کے تار سہراب الدین انکاونٹر سے جوڑے گئے۔ اس کے بعد یہ معاملہ میڈیا کی سرخیاں بنا۔

نیوز ایجنسی یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ

Loading...