ہوم » نیوز » وطن نامہ

دہلی کو دہلانےکی تھی سازش، پریشرکوکر بم کے ساتھ مشتبہ آئی ایس آئی ایس دہشت گرد گرفتار، پولیس کا دعویٰ

یکم جولائی 2007 میں انگلینڈ واقع گلاسگو ایئر پورٹ (Glosgow Airport) پر خود کش حملہ ہوا تھا۔ اسی وقت ڈاکٹر سبیل احمد (Sabeel Ahmad) کے بارے میں تفتیش ہوئی تھی۔ اس کے بعد انگلینڈ پولیس کی ٹیم نے سبیل احمد کو گرفتار کیا تھا۔

  • Share this:
دہلی کو دہلانےکی تھی سازش، پریشرکوکر بم کے ساتھ مشتبہ آئی ایس آئی ایس دہشت گرد گرفتار، پولیس کا دعویٰ
دہلی کو دہلانے کی تھی سازش، پریشر کوکر بم کے ساتھ مشتبہ آئی ایس آئی ایس دہشت گرد گرفتار

نئی دہلی: دہشت گرد تنظیم القاعدہ انڈین سب کارڈیننس (AQIS) کا مشتبہ دہشت گرد اور انگلینڈ کے گلاسگو ایئر پورٹ پر حملہ کرنے کا ملزم ڈاکٹر سبیل احمد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ مرکزی تفتیشی ایجنسی این آئی اے نے رسمی طور پر اس کو گرفتار کرنے کے بعد اب پوچھ گچھ میں مصروف ہوگئی ہے۔ ڈاکٹر سبیل احمد کی بات اگر کریں تو یہ دہشت گرد ذیشان علی کا سالا ہے۔ ذیشان علی جھارکھنڈ (Jharkhand) کا رہنے والا دہشت گرد ہے، جسے سال 2017 میں دہلی پولیس کی اسپیشل سیل (Special cell) کی ٹیم نے گرفتار کیا تھا۔


اس سے ہوئی پوچھ گچھ کے دوران سبیل احمد اور اس کے دہشت گردانہ کنکشن کے بارے میں اسپیشل سیل سمیت دیگر ایجنسیوں کو اطلاع ملی تھی، جس کے بعد اسپیشل سیل کی ٹیم اپنے غیر ملکی ذرائع کے معرفت نظر بنائے ہوئے تھی، لیکن سبیل احمد کے خلاف مرکزی تفتیشی ایجنسی این آئی اے نے بھی ایک معاملہ درج کر رکھا تھا، اس لئے ہندوستان کے خصوصی خفیہ محکمہ کے افسران کے ذریعہ سعودی عرب سے دہلی لانے کے بعد سب سے پہلے اسے این آئی اے کو سونپ دیا گیا۔ این آئی اے کی ٹیم اسے دہلی ایئر پورٹ سے لے کر سی جی او کامپلیکس واقع دفتر میں رکھ کر اس سے تفصیل سے پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

یوپی - بہار کے نوجوانوں کو ورغلایا

اسپیشل سیل کے ذرائع کے مطابق ان دونوں بہنوئی - سالا نے آپس میں مل کر یوپی، بہار، جھارکھنڈ کے چھوٹے چھوٹے گاوں - قصبوں میں رہنے والے نوجوانوں کو ورغلا کر اپنے دہشت گرد گینگ میں شامل کرنے لگا۔ یہ دونوں سعودی عرب میں رہ کر وہیں سے کئی نوجوانوں کو جہاد کی طرف راغب کرنے لگا، جس سے کئی دہشت گردوں کو اس نے تیار کرلیا تھا۔ دہشت گرد عبدالرحمن کٹکی کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اگر صحیح وقت پر اگر اس کی گرفتاری ہوگئی ہوتی تو قندھار طیارہ ہائی جیک جیسا معاملہ نہیں ہوتا کیونکہ اس نے ہی ان دہشت گردوں کو پناہ دیا تھا اور اس کے لئے دیگر انتظامات کئے تھے۔


بنگلورو سے واپس چلا گیا سبیل احمد

ڈاکٹر سبیل، دہشت گرد آرسیان اور ذیشان کے رابطہ میں جھارکھنڈ، بہار اور یوپی کے کئی نوجوان تھے، لیکن صحیح وقت پر اسپیشل سیل اور این آئی اے کی ٹیم نے اس پورے ماڈیول کو تباہ کردیا۔ این آئی اے کے ذرائع کے مطابق دہشت گرد ڈاکٹر سبیل احمد نے کئی نوجوانوں کو دہشت گرد ٹریننگ لینے کے لئے پاکستان بھیجا تھا۔ سال 11-2010 کے دوران ڈاکٹر سبیل احمد بنگلورو سے واپس سعودی عرب چلا گیا اور دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ اور القاعدہ کے بڑے کارندوں سے رابطہ میں آیا۔ اس کے بعد وہیں سے رہ کر وہ مسلسل ہندوستان ملک کے اندر دہشت گردانہ واردات کو انجام دیتا رہا، جس کے بعد ہندوستان کی جانچ ایجنسیاں مسلسل اس دہشت گرد کو تلاش ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 29, 2020 11:44 AM IST