ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہاتھرس واقعہ : سامنے آئی "مشتبہ" خاتون ، کہا : مجھے نکسل کیسے کہا ، ثبوت پیش کرے پولیس

بتادیں کہ ایس آئی ٹی کی جانچ میں سامنے آیا ہے کہ 16 ستمبر سے لے کر 22 ستمبر تک متاثرہ کے گھر میں رہ کر ایک مبینہ نکسلی خاتون بڑی سازش رچ رہی تھی ۔

  • Share this:
ہاتھرس واقعہ : سامنے آئی
ہاتھرس واقعہ : سامنے آئی "مشتبہ" خاتون ، کہا : مجھے نکسل کیسے کہا ، ثبوت پیش کرے پولیس

اترپردیش کے ہاتھرس میں ہوئے مبینہ اجتماعی آبروریزی معاملہ میں نکسل کنیکشن سامنے آنے کے بعد ہنگامہ مچ گیا ہے ۔ ایس آئی ٹی کی ٹیم مدھیہ پردیش کے جبل پور کی رہنے والی ایک خاتون کی تلاش میں مصروف ہے ۔ وہیں اس درمیان نکسلی ہونے کا الزام لگنے پر پروفیسر ڈاکٹر راجکماری بنسل نے میڈیا میں ایک بیان جاری کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میرا کوئی رشتہ نہیں ہے ، میں صرف لگاو کی وجہ سے ہاتھرس متاثرہ کے گھر گئی تھی ۔


راجکماری بنسل نے بتایا کہ ان کو اچھا لگا کہ ہمارے سماج کی ایک لڑکی اتنی دور سے آئی ہے تو انہوں نے کہا کہ بیٹا ایک دو دن رک جاو ، تو میں رک گئی ۔ انہوں نے کہا کہ میں متاثرہ کنبہ کی مالی مدد کرنا چاہتی تھی ، صرف شوہر کو بتاکر گئی تھی ۔ ادھر ایس آئی ٹی کی جانچ پر سوال کھڑا کرتے ہوئے خاتون نے کہا کہ پولیس پہلے ثبوت پیش کرے ، بولنا اور الزام لگانا بہت آسان ہوتا ہے ۔


پیشہ سے میڈیکل کالج میں پروفیسر ڈاکٹر راجکماری بنسل نے کہا کہ مجھے لگا کہ میرے نمبر کے ساتھ ٹیمپرنگ کی جارہی ہے ۔ میں نے فورا سائبر پولیس میں رپورٹ کی ہے ۔ یہ میری عزت کی بات ہے ، کیسے مجھے نکسل کہا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ میں فارینسک رپورٹ دیکھنے گئی تھی ، کیونکہ میں ایکسپرٹ ہوں اس سبجیکٹ میں ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے بھابھی بن کر کبھی انٹرویو نہیں دیا ، میں نے کہا کہ میں بیٹی ہوں ۔


بتادیں کہ ایس آئی ٹی کی جانچ میں سامنے آیا ہے کہ 16 ستمبر سے لے کر 22 ستمبر تک متاثرہ کے گھر میں رہ کر مبینہ نکسلی خاتون بڑی سازش رچ رہی تھی ۔ اس سے پہلے پولیس نے جمعہ کو بتایا کہ اس کیس سے وابستہ فنڈنگ معاملہ میں پاپولر فرنٹ آف انڈیا اور بھیم آرمی کے لنک بھی ملے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 10, 2020 04:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading