ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد کے ساتھ سوتیلا برتاو، ڈیڑھ ماہ سےکوارنٹائن سینٹروں میں قید ہیں کارکنان

میرٹھ کی سردهنہ تحصیل کے جین انٹر کالج کوارنٹائن سینٹر میں 90 میں سے 56 جماعتی کارکنان کو تو 45 دن سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہے، لیکن ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔

  • Share this:
تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد کے ساتھ سوتیلا برتاو، ڈیڑھ ماہ سےکوارنٹائن سینٹروں میں قید ہیں کارکنان
تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد کے ساتھ سوتیلا برتاو

نئی دہلی: کورونا متاثرین سے رابطے میں آنے والے افراد کو احتیاط کے طور پر 14 دنوں کے لئے کوارنٹائن کر دیا جاتا ہے اور اس مدت میں کسی طرح کی علامات ظاہر نہ ہونے پر سینٹر سے  ڈسچارج کر دیا جاتا ہے، لیکن یو پی کے مختلف اضلاع میں کوارنٹائن کئے گئے تبلیغی جماعتی کارکنان کے معاملے میں ان گائیڈ لائن پر عمل ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے۔ میرٹھ میں ہی مختلف کوارنٹائن سینٹروں پر سینکڑوں جماعتی گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے اپنی رہائی کا انتظار کر رہے ہیں۔ میرٹھ کی سردهنہ تحصیل کے جین انٹر کالج کوارنٹائن سینٹر میں 90 میں سے 56 جماعتی کارکنان کو تو 45 دن سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہے، لیکن ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔


جمعہ کے روز ان افراد سے ملاقات کے بعد قاضی سردھنه نےحکومت اور ضلع انتظامیہ سے انہیں ڈسچارج کرنے کی گزارش کی ہے۔ وہیں تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد کے ساتھ ہو رہے برتاؤ کو لے کر نائب شہر قاضی میرٹھ اور جمیعت علماء ہند شہر میرٹھ کے ذمہ دران نے افسوس ظاہر کرتے ہوئے انہیں ڈسچارج کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ میرٹھ میں سردهنه تحصیل کے جین انٹر کالج کوارنٹائن سینٹر میں گزشتہ ڈیڑھ مہینے سے موجود ایک جماعتی کارکن نے بتایا کہ 90 میں سے 56 جماعتی ایسے ہیں جو 45 دن مکمل کر چکے ہیں، لیکن ابھی تک ان کو ڈسچارج نہیں کیا گیا ہے۔ زیادہ تر جماعتیوں کا تعلق مغربی بنگال آسام اور آندھرا پردیش سے ہے۔


بتایا جاتا ہے کہ 90 میں سے 56 جماعتی ایسے ہیں جو 45 دن مکمل کر چکے ہیں، لیکن ابھی تک ان کو ڈسچارج نہیں کیا گیا ہے۔
بتایا جاتا ہے کہ 90 میں سے 56 جماعتی ایسے ہیں جو 45 دن مکمل کر چکے ہیں، لیکن ابھی تک ان کو ڈسچارج نہیں کیا گیا ہے۔


سر دھنه میں کوارنٹائن کئے گئے غیرمقامی جماعتیوں کے گھر والے ان کی واپسی کو لےکر بہت پریشان ہیں۔ جمعہ کے روز مقامی ذمہ داران اور قاضی نے افسران کی اجازت سے اس مرکز کا دورہ کیا اور حالات کا جائزہ لیا تو معلوم ہوا کہ اس سینٹر پر موجود افراد کتنی پریشانی میں ہیں اور کس طرح ان کے ساتھ غیر جانبدرانہ رویہ برتا جا رہا ہے۔ سر دهنہ کے سابق چیئرمین نے ضلع انتظامیہ سے ان کو ڈسچارج کرنےکا مطالبہ کیا ہے اور ذاتی طور پر ان افراد کے لئے گاڑی کا انتظام کرکے بھیجنے کی پیشکش کی ہے۔
First published: May 17, 2020 12:53 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading