ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مختارعباس نقوی کامتنازعہ: کہایہ طالبانی جرم ہے،تبلیغی جماعت کے خلاف ہونی چاہیے کارروائی

نقوی نے کہا ہے کہ اس تبلیغی جماعت نے بہت سارے لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈال دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تبلیغی جماعت نے طالبان کا جرم کیا ہے اور اسے معاف نہیں کیا جاسکتا

  • Share this:
مختارعباس نقوی کامتنازعہ: کہایہ طالبانی جرم ہے،تبلیغی جماعت کے خلاف ہونی چاہیے کارروائی
مختار عباس نقوی ۔ فائل فوٹو ۔ اے این آئی ۔

نئی دہلی:تبلیغی جماعت کے نظام الدین مرکز میں قیام کرنے والے افراد کے کورونامتاثر ہونے کی تصدیق کے بعد بی جے پی لیڈراور مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے اس پورے معاملے پر اپنے ردعمل کا اظہار کیاہے۔۔ نقوی نے کہا ہے کہ اس تبلیغی جماعت نے بہت سارے لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈال دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تبلیغی جماعت نے طالبان کا جرم کیا ہے اور اسے معاف نہیں کیا جاسکتا۔ مختار عباس نقوی نےاس پور ے معاملہ کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔


ہم آپ کو بتادیں کہ دہلی کے نظام الدین مرکز میں تبلیغی جماعت کے پروگرام میں شریک دیگر 24 افراد بھی کورونا وائرس سے متاثر ہوئے پائے گئے ہیں او ر یہاں اجتماع میں شرکت کرنے والے 9 افرا د انتقال کر گئے ہیں۔حکومت کے حکم کی خلاف ورزی کرنے پر تبلیغی جماعت کے ذمہ دار مولانا کے خلاف ایف آئی آر درج کرلیاگیاہے۔وہیں پولیس نے نظام الدین اور اطراف کے علاقوں کا محاصرہ کرلیاہے۔



دہلی پولیس نے جاری کیا ویڈیو

دہلی پولیس نے منگل کے روز ایک ویڈیو جاری کیاہے۔ جس میں ایک سینئر پولیس آفیسر نظام الدین مرکز کے ذمہ داروں سے درخواست کر رہا ہے کہ وہ زائرین سے اپنے گھر اورعلاقوں میں واپس جانےاور ایک دوسرے کے درمیان معاشرتی دور ی رکھنے کی اپیل کریں ۔تاکہ وہ کورونا وائرس کے امکانی خطرے سے محفوظ رہیں۔۔ ۔ پولیس عہدیداروں نے بتایا کہ یہ ویڈیو 23 مارچ کو حضرت نظام الدین کے اسٹیشن انچارج (ایس ایچ او) کے دفتر میں بنایا گیاتھا۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایس ایچ او باربار مرکز کےارکان سے کہے رہے ہیں کہ تمام مذہبی مقامات بند ہیں اور ایک جگہ پر پانچ سے زیادہ افراد جمع نہیں ہوسکتے ہیں۔ وہ مرکزکے ارکان کو بتا رہیں کہ امتناعی احکامات کے باوجود بھی بڑی تعداد میں لوگ مرکز کی عمارت میں جمع ہیں اور اگر وہ پولیس کی بات نہیں مانتے ہیں تو پھر پولیس کو ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کرنی پڑے گی۔

اہم بات یہ ہے کہ نظام الدین میں واقع تبلیغی جماعت کے مرکز میں ، پچھلے دو دنوں کے دوران ، دہلی پولیس نے مرکز میں قیام کرنے والے 1830 افراد کی نشاندہی کی ہے۔ جن میں 281 غیر ملکی باشندے بھی شامل ہیں۔ ان غیر ملکی شہریوں میں برطانیہ اور فرانس کے شہری بھی شامل ہیں۔ مارچ کے وسط میں نظام الدین مرکز میں اجتماع منعقد کیاگیاتھا اور اس میں شرکت کرنے والے 9 افراد کی موت ہوگئی جبکہ کورونا وائرس سے متاثربتائے گئے ہیں ۔ دہلی حکومت کی جانب سے فراہم کردہ تفیصلات میں یہ بات کہی گئی ہے۔ مرکز میں قیام کرنے والے زیادہ تر لوگوں کو مختلف طبی مراکز اور اسپتالوں کے مختلف وارڈوں میں بھیج دیا گیا ہے۔
First published: Apr 01, 2020 02:17 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading