உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کیسا ہوگا e-passport جس کو لانچ کرنے جارہی ہے TCS، کیا کاغذ کے بدلے CHIPسے ہوگا کام؟

    TCS نے بتایا کیسا ہوگا ای پاسپورٹ۔

    TCS نے بتایا کیسا ہوگا ای پاسپورٹ۔

    پاسپورٹ میں فنگر پرنٹ کا استعمال پہلے سے ہوتا ہے۔ فنگر پرنٹ بھی بائیومیٹرک کا حصہ ہے۔ اس لئے ای پاسپورٹ میں فنگر پرنٹ تو رہے گا ہی، اس کے علاوہ بھی کئی طرح کی سہولیات مہیا کرائی جائیں گی۔ شخص کی پہچان کے لئے فنگر پرنٹ کے علاوہ آئی رِس اور الگورتھم کا استعمال ہوگا۔ آئی رِس کا استعمال ویسے ہی ہوگا جیسا آدھار و دیگر میں کیا جاتا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ملک کے سب سے بڑے سافٹ ویئر ایکسپورٹر ٹی سی ایس (TCS) کو پاسپورٹ سیوا پروگرام (PSP) کا دوسرا مرحلہ شروع کرنے کی اجازت مل گئی ہے۔ ای گورننس پروگرام کے تحت ہندوستان کے لاکھوں لوگوں کا پاسپورٹ بنایا جائے گا۔ اس میں ٹاٹا کی کمپنی ٹی سی ایس سب سے نئی جدید تکنیک کا استعمال کرے گی۔ ٹی سی ایس اس مرتبہ ای پاسپورٹ (e-passport) بھی شروع کرنے جارہی ہے جس کا انتظار کئی سالوں سے ہے۔

      ٹی سی ایس نے ای پاسپورٹ کے بارے میں کہا ہے کہ اس کی لیٹسٹ ٹکنالوجی ہم لے کر آرہے ہیں، لیکن پاسپورٹ پاس کرنا یا شائع کرنے کا کام مرکزی حکومت ہی کرے گی۔ لوگوں کے ایسے سوال ہیں کہ کیا ای پاسپورٹ پوری طرح سے الیکٹرانک ہوگا یا اس کی شکل کیسے ہوگی؟ اس بارے میں ٹی سی ایس نے واضح کیا ہے کہ e-passport پوری طرح سے پیپر فری نہیں ہوگا اور اس میں کچھ کاغذ بھی ہوں گے۔ کاغذ کی ضرور اس لئے ہوگی کیونکہ ویزا اسٹامپنگ کا کام ابھی چل رہا ہے جو کاغذ پر ہی ہوپائے گا۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ بعد میں آٹومیشن کے ذریعے کاغذ کی ضرورت کو ختم کیا جاسکتا ہے۔

      پاسپورٹ میں لگی ہوگی چپ
      پاسپورٹ کے جیکٹ(صفحہ اول) میں ایک الیکٹرانک چپ لگی ہوگی جس میں سیکورٹی سے متعلق سبھی جانکاری درج ہوگی۔ دنیا کے کئی ملکوں میں ای پاسپورٹ ہے اور کئی ملک اس پر کام بھی کررہے ہیں لیکن ہندوستان کا ای پاسپورٹ باقی ممالک سے بالکل الگ ہوگا۔ بس کچھ مہینوں کی بات ہے اور ہندوستان بھی اُن ملکوں کی فہرست میں شامل ہوجائے گا جہاں ای پاسپورٹ کا استعمال کیا جارہا ہے۔ ٹی سی ایس نے ملک میں پہلے فیز کا پاسپورٹ پروگرام بھی چلایا ہے جس میں 8.6 کروڑ سے زیادہ لوگوں کو پاسپورٹ جاری کیا گیا۔ مستقبل میں ہندوستان کے لوگ دنیا کے الگ الگ حصے میں سفر کریں گے اور اس سے پاسپورٹ بنانے کا کام اور تیز ہوگا۔

      فنگر پرنٹ اور آئی رِس کا استعمال
      پاسپورٹ میں فنگر پرنٹ کا استعمال پہلے سے ہوتا ہے۔ فنگر پرنٹ بھی بائیومیٹرک کا حصہ ہے۔ اس لئے ای پاسپورٹ میں فنگر پرنٹ تو رہے گا ہی، اس کے علاوہ بھی کئی طرح کی سہولیات مہیا کرائی جائیں گی۔ شخص کی پہچان کے لئے فنگر پرنٹ کے علاوہ آئی رِس اور الگورتھم کا استعمال ہوگا۔ آئی رِس کا استعمال ویسے ہی ہوگا جیسا آدھار و دیگر میں کیا جاتا ہے۔ آئی رِس سے بھی شخص کی پہچان ہوتی ہے اور اس سے فراڈ اور دھوکہ دہی کو روکنے کو میں مدد ملے گی۔ ای پاسپورٹ میں آئی رِس کی سہولت کا اضافہ کیا جارہا ہے۔

       
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: