உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Telangana: دھان کی خریداری کی مرکزی پالیسی کے خلاف احتجاج، KCR کریں گے احتجاج کی قیادت

    Youtube Video

    احتجاج سے پہلے وزیر اعلیٰ کی بیٹی اور ٹی آر ایس ایم ایل سی کلواکنٹلا کویتا نے میڈیا سے بات چیت کی۔ کویتا نے کہا کہ پارٹی دھان کی خریداری کے تئیں مرکزی حکومت کے لاتعلق رویے کی روشنی میں تلنگانہ کے کسانوں کے مفادات کے تحفظ کے لیے پوری طرح تیار ہے۔

    • Share this:
      تلنگانہ کے سی ایم کے چندر شیکھر راؤ (Telangana CM K Chandrashekar Rao) آج یعنی 11 اپریل 2022 کو مرکز کی دھان کی خریداری کی پالیسی (paddy procurement policy) کے خلاف احتجاج کے لیے دہلی میں دھرنے کی قیادت کریں گے۔ تلنگانہ حکومت مرکزی حکومت کی 'امتیازی' دھان کی خریداری کی پالیسی کے خلاف احتجاج کرنے کے لیے ایک دن کے دھرنے پر بیٹھے گی، جس سے 61 لاکھ کسانوں اور ان کے خاندان متاثر ہوئے ہیں۔

      احتجاج کی جگہ دہلی میں بڑے پیمانے پر احتجاج کے لیے تلنگانہ بھون قائم کیا جا رہا ہے۔ ریاستی حکومت کے کئی وزرا، حکمراں تلنگانہ راشٹرا سمیتی (TRS) پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ، ایم ایل سی، ایم ایل ایز اور شہری اور دیہی بلدیاتی اداروں کے دیگر منتخب نمائندے مرکزی حکومت کے خلاف احتجاج میں شامل ہوں گے۔

      احتجاج سے پہلے وزیر اعلیٰ کی بیٹی اور ٹی آر ایس ایم ایل سی کلواکنٹلا کویتا نے میڈیا سے بات چیت کی۔ کویتا نے کہا کہ پارٹی دھان کی خریداری کے تئیں مرکزی حکومت کے لاتعلق رویے کی روشنی میں تلنگانہ کے کسانوں کے مفادات کے تحفظ کے لیے پوری طرح تیار ہے۔

      مزید پڑھیں: EXPLAINED: پاکستان میں سیاسی ہلچل کا باقی دنیا کے لیے کیا ہےمطلب؟ کیاعالمی سیاست ہوگی متاثر؟

      سابق ایم پی نے جو احتجاجی مقام کا معائنہ کر رہے تھے، اس بات کی تصدیق کی کہ مرکزی حکومت کی اسکیمیں اور پالیسیاں قومی غذائی تحفظ کے نظام کے لیے خطرہ ہیں اور ٹی آر ایس پارٹی کسانوں کے مفاد کے لیے لڑے گی۔ سی ایم کے چندر شیکھر راؤ کی کوششوں اور ویژن کی تعریف کرتے ہوئے، کویتا نے کہا کہ یہ سی ایم کے سی آر کی سراسر ہمت ہے جس نے "بنجر تلنگانہ کو ایک خوشحال اور پیداواری زمین" بنا دیا ہے جو ملک کے باقی حصوں کی خدمت کے لیے تیار ہے۔

      یہ بھی پڑھئے : کیا رمضان کے مہینہ میں میک اپ کرنے سے ٹوٹ جاتا ہے روزہ؟



      انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستان میں کسانوں کی قیمت پر کبھی بھی کوئی حکومت خوشحال نہیں ہوئی اور انہوں نے بھارتیہ جنتا پارٹی کی قیادت والی حکومت کو کسانوں کو نظر انداز کرنے کے نتائج کی یاد دلائی۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کی قیادت میں ٹی آر ایس پارٹی کھڑی رہے گی اور ہر کسان کے مفادات کے لئے لڑے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: