ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

تلنگانہ: سر سے جڑی بچیوں نے پاس کیا 10 ویں کا امتحان، والد کا خواب- انجینئر بنیں

وینا اور وانی کے والد مرلی نے نیوز 18 کو بتایا، ’میں دونوں کو اچھے عہدوں پر دیکھنا چاہتا ہوں۔ انہیں آئی ٹی پروفیشنل (انجینئر) بننا چاہئے۔ تاکہ وہ ساتھ کام کرسکیں اور ساتھ رہ سکیں۔

  • Share this:
تلنگانہ: سر سے جڑی بچیوں نے پاس کیا 10 ویں کا امتحان، والد کا خواب- انجینئر بنیں
تلنگانہ: سر سے جڑی بچیوں نے پاس کیا 10 ویں کا امتحان۔ تصویر: نیوز 18

حیدرآباد: تلنگانہ (Telangana) کی سر سے جڑی ہوئی بچیاں وینا اور وانی (Veena and Vani) نے سیکنڈری اسکول سرٹیفکیٹ (Secondary school certificate) کا امتحان پاس کرلیا ہے۔ وینا کو 9.3 گریڈ پوائنٹ ایوریج (GPA) اور وانی کو 10 میں سے 9.2 جی پی اےملا ہے۔ انہوں نے مدھرا نگر کے پرتھوی اسکول میں الگ الگ اپنی ایس ایس سی امتحانات دی تھیں۔ دونوں نے تین امتحانات میں جواب لکھے تھے، جس کے بعد حکومت نے کووڈ-19 عالمی وبا (Covid-19 Pandemic) کے سبب باقی امتحانات کو منسوخ کردیئے تھے۔ حال ہی میں، محکمہ تعلیم (Education Department) نے امتحان دینے والے تقریباً 5.34 لاکھ طلبا کے نتائج کا اعلان کیا اور طلبا کے پہلے نمبرات کے مطابق انہیں جی پی اے دیا گیا۔


وینا اور وانی نے نیوز 18 کو بتایا، ’ہم 10 ویں کے امتحان  (tenth exams) پاس کرنے پر بہت خوش ہیں اور سبھی ضروری انتظامات (necessary arrangements)کے لئے حکومت کے شکر گزار ہیں۔ ابھی ہمارے پاس مستقبل کا کوئی منصوبہ نہیں ہے، لیکن ہم بارہویں (10+2)میں ایم ای سی لینا چاہتا ہیں۔


وینا اور وانی کے والد نے کہا، ’دونوں کو بننا چاہئے انجینئر’


وینا اور وانی کے والد مرلی نے نیوز 18 کو بتایا، ’میں دونوں کو اچھے عہدوں پر دیکھنا چاہتا ہوں۔ انہیں آئی ٹی پروفیشنل (انجینئر) بننا چاہئے۔ تاکہ وہ ساتھ کام کرسکیں اور ساتھ رہ سکیں۔ وینا اور وانی نے وینگل راو نگر کے سرکاری ہائی اسکول میں رجسٹریشن نمبر 5618 اور 5619 کے ساتھ داخلہ لیا تھا۔ تلنگانہ حکومت نے ان کی تعلیم کے لئے خصوصی انتظامات کئے تھے اور گھر میں بھی انہیں پڑھایا جاتا تھا۔

وینا اور وانی نے نیوز 18 کو بتایا، ’ہم 10 ویں کے امتحان  پاس کرنے پر بہت خوش ہیں اور سبھی ضروری انتظامات کے لئے حکومت کے شکر گزار ہیں۔ تصویر: نیوز 18
وینا اور وانی نے نیوز 18 کو بتایا، ’ہم 10 ویں کے امتحان  پاس کرنے پر بہت خوش ہیں اور سبھی ضروری انتظامات کے لئے حکومت کے شکر گزار ہیں۔ تصویر: نیوز 18


سرکاری احکامات کے مطابق دونوں کا ہوا تھا سرکاری اسکول میں داخلہ

دسمبر 2019 میں، ضلعی تعلیمی افسر نے حکومت کو ایک خط لکھا تھا، جس میں لڑکیوں کی مدد کرنے کے لئے اجازت اور اس پر وضاحت طلب کی گئی تھی کہ کیسے ان کی مدد کی جاسکتی ہے۔ ضوابط کے مطابق، اپنے اسکول سسٹم کے طلبا جو امتحانات میں لکھنا چاہتے ہیں، انہیں کسی بھی سرکاری یا پرائیویٹ اسکول میں خود کو رجسٹرڈ کرنا ہوتا ہے۔

دونوں نے الگ - الگ امتحان دینے کی ظاہر کی تھی خواہش

جس کے مطابق، وینا اور وانی کو ان کی تعلیم اور صلاحیت کی بنیاد پر وینگل راو نگر، حیدرآباد میں ایک سرکاری اسکول میں داخل کرایا گیا تھا۔ آخر کار افسران نے وینا اور وانی کو ایک ہی امتحانی مراکز میں لیکن الگ الگ ہال ٹکٹوں پر، 10 ویں کے امتحانات دینے کی اجازت دے دی۔ ایسا اس لئے کیا گیا کیونکہ دونوں نے الگ الگ امتحانات لکھنے کی خواہش ظاہر کی تھی۔

پی وی رمنا کمار کی رپورٹ
First published: Jun 23, 2020 06:36 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading