ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

سی اے اے مخالف احتجاج کی نہیں ہے اجازت،تلنگانہ پولیس کے رویہ کے خلاف ایک نوجوان کاانوکھا احتجاج

سیاے اے اور این آر سی کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے تئیںتلنگانہ پولیس کے رویہ کے خلاف  حیدرآباد کے ایک نوجوان محمد عرفان قادری  نے  گنبداں قطب شا ہی سے گن پارک تک  مارچ کیا

  • Share this:
سی اے اے مخالف احتجاج کی نہیں ہے اجازت،تلنگانہ پولیس  کے رویہ کے خلاف ایک نوجوان کاانوکھا احتجاج
سی اےاے مخالف انوکھا احتجاج۔(تصویر:نیوز18اردو)۔

تلنگانہ کے وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراؤ نے شہریت ترمیمی قانون اور این آرسی کی مخالفت کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ تاہم تلنگانہ پولیس کی جانب سے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ہونے والے احتجاجی مظاہروں کی اجازت نہیں دی جارہی ہے اور اگر کسی تنظیم کی جانب سے احتجاجی مظاہرے کیے جاتے ہیں تو تلنگانہ پولیس احتجا جیوں کے خلاف کارروائی کررہی ہے۔ تاہم جمہوریت میں عوام کو اپنی ناراضگی کا اظہارکرنے کی پوری آزادی ہے۔ حیدرآباد میں ایک جدوجہد کار نے اپنے ہی دم پر تلنگانہ پولیس اور شہریت ترمیمی قانون کے خلاف انوکھا احتجاج درج کروایاہے۔


 ہاتھ میں نو سی اے اے نو این آر سی اور نو این پی آر (NO CAA NO NRC NO NPR)لکھے پلا کارڈ اور ساتھ میں ترنگا تھامے محمد عرفان

ہاتھ میں نو سی اے اے نو این آر سی اور نو این پی آر (NO CAA NO NRC NO NPR)لکھے پلا کارڈ اور ساتھ میں ترنگا تھامے محمد عرفان


ہاتھ میں نو سی اے اے نو این آر سی اور نو این پی آر (NO CAA NO NRC NO NPR)لکھے پلا کارڈ اور ساتھ میں ترنگا تھامے محمد عرفان کو حکومت تلنگانہ اور خاص طور پر محکمہ پولیس سے شکایت ہے ان کا سوال ہے ریاست تلنگانہ میں سی اے اے اور ین آر سی کے خلاف پر امن احتجاج کی اجازت کیوں نہیں ملتی ؟ ۔حال ہی میں مختلف تنظیموں کی جانب سے شہرت قانون کے خلاف احتجاج کی زیادہ تر درخواستیں کو پولیس نے مسترد کر دیا۔محکمہ پولیس کے رویہ کے خلاف عرفان نے گنبدان قطب شاہی سے گن پارک تک اکیلے ہی مارچ کا ا رادہ کیا


 محمد عرفان اکیلے ہی پیدل چلتے ہوئے احتجاج کررہے تھے تو انکے اس مارچ کے دوران پولیس نے انھیں دوجگہ روکنے کی کوشش کی
محمد عرفان اکیلے ہی پیدل چلتے ہوئے احتجاج کررہے تھے تو انکے اس مارچ کے دوران پولیس نے انھیں دوجگہ روکنے کی کوشش کی


محمد عرفان قادری کا ماننا ہے کہ جمہوری طریقہ سے پرامن احتجاج کرنا ہر شہری کا حق ہے جبکہ حیدرآباد پولیس شہریان حیدرآباد کو سی اے اے اور این آر سی کے خلاف احتجاج کی اجا زت نہ دے کر انکے حقوق سلب کر رہی ہے جب محمد عرفان اکیلے ہی پیدل چلتے ہوئے احتجاج کررہے تھے تو انکے اس مارچ کے دوران پولیس نے انھیں دوجگہ روکنے کی کوشش کی لیکن عرفان نے اپنا ارادہ نہیں بدلا لیکن محمد عرفان نے پولیس سے یہی سوال کیا کہ کیا ترنگا لے کر پیدل چلنے پر پابندی ہے؟

اسکے باوجود مقامی پولیس کے جوانوں نے انہیں روک کر واپس بھیجنے کی کوشش کی۔ پولیس کی مزاحمت کے باوجود محمد عرفان نے نا مپلی کے علاقہ میں اسمبلی کے روبرو گن پارک تک اپنا مارچ جاری رکھا اور یہ پیام دینے کی کوشش کی کہ جمہوری طریقہ سے اپنا احتجاج درج کروانے کیلئے ایک شخص بھی کافی ہوتا ہے
First published: Feb 09, 2020 07:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading