உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Gujarat: ٹیلی کام کمپنی نے موبائل نمبر کیا بلاک، اب دینا ہوگا 50 ہزار روپے کا جرمانہ، جانئے پورا معاملہ

    Gujarat: ٹیلی کام کمپنی نے موبائل نمبر کیا بلاک، اب دینا ہوگا 50 ہزار روپے کا جرمانہ ۔ علامتی تصویر ۔

    Gujarat: ٹیلی کام کمپنی نے موبائل نمبر کیا بلاک، اب دینا ہوگا 50 ہزار روپے کا جرمانہ ۔ علامتی تصویر ۔

    Telecom company: گجرات اسٹیٹ کنزیومر ڈسپیوٹ ریڈریسل کمیشن نے ایک ٹیلی کام کمپنی کو 50,000 روپے ہرجانہ کے طورپر ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔ دراصل کمپنی نے ایک شخص کا موبائل نمبر بلاک کرنے کے بعد بند کردیا تھا ۔

    • Share this:
      احمد آباد : گجرات اسٹیٹ کنزیومر ڈسپیوٹ ریڈریسل کمیشن نے ایک ٹیلی کام کمپنی کو 50,000 روپے ہرجانہ کے طورپر ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔ دراصل کمپنی نے ایک شخص کا موبائل نمبر بلاک کرنے کے بعد بند کردیا تھا ۔ اس پر الزام تھا کہ اس نے رجسٹریشن کے بغیر اپنا نمبر ٹیلی مارکیٹنگ کے لئے استعمال کیا۔ لیکن اب کمیشن نے کمپنی کے تمام دلائل کو مسترد کر دیا ہے۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ اس شخص کو نمبر بلاک کرنے کی وجہ سے مالی نقصان ہوا۔

      انگریزی اخبار ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ معاملہ اکتوبر 2014 کا ہے۔ سورت کے رہنے والے نرمل کمار مستری کو ووڈافون سے میسیج آیا کہ وہ ٹیلی مارکیٹنگ کے لیے اپنا نمبر استعمال کر رہے ہیں، اس لئے کمپنی نے ان کا نمبر بلاک کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ میسیج میں یہ بھی کہا گیا کہ انہیں کمپنی کے اسٹور سے ایک نیا سم کارڈ بھیج دیا جائے گا۔

       

      یہ بھی پڑھئے : جہانگیر پوری تشدد معاملہ میں دہلی پولیس نے درج کی FIR، اب تک 15 مشتبہ افراد حراست میں، جانئے 10 بڑی اپ ڈیٹس


      اس کے بعد نرمل نے ووڈافون کو قانونی نوٹس بھیج دیا ہے۔ اس کے جواب میں کمپنی نے کہا کہ انہیں اس نمبر سے ٹیلی مارکیٹنگ سے وابستہ میسیج کی شکایت موصول ہوئی تھی، لیکن ووڈافون نے ان الزامات کو ثابت کرنے کیلئے صرف ایک نمبر بھیجا ، جس کے بارے میں کہا گیا کہ اس نمبر پر ٹیلی مارکیٹنگ کے پیغامات بھیجے گئے تھے۔ مستری نے بعد میں کنزیومر ڈسپیوٹ ریڈریسل کمیشن سورت کے دفتر سے رابطہ کیا۔

       

      یہ بھی پڑھئے : Alia-Ranbir Wedding Reception کی دیکھئے یہ 1-1 تصویر، کیسے سلیبریٹیز نے لوٹی محفل


      کمیشن کو اپنی شکایت میں مستری نے کہا کہ وہ ایک سافٹ ویئر ڈیولپر ہیں اور ان کا نمبر بغیر کسی ٹھوس وجہ کے بلاک کر دیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ اس کی وجہ سے انہیں اپنے کاروبار میں ساڑھے تین لاکھ روپے کا نقصان ہوا ۔ لیکن کمیشن نے ان کی یہ دلیل قبول نہیں کی۔ کمپنی نے کمیشن کو بتایا کہ ان کا نمبر ٹیلی مارکیٹنگ کے لئے استعمال کیا گیا تھا۔

      اس کے بعد مستری نے گجرات اسٹیٹ کنزیومر ڈسپیوٹ ریڈریسل کمیشن سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے یہاں اپنے وکیل ملن دودھیا کے ذریعہ اپنا موقف پیش کیا ۔ وکیل نے کہا کہ ٹرائی کے قوانین کے مطابق کسی کا نمبر بلاک کرنے کے لئے جس شخص کو ٹیلی مارکیٹنگ سے متعلق میسیج بھیجے گئے تھے ، اس کی شکایت بھی ضروری ہے، لیکن یہاں ووڈافون کو ایسی کوئی شکایت نہیں ملی تھی۔ لہذا مستری کے دلائل کو صحیح مانتے ہوئے کمیشن نے انہیں 7 فیصد انٹریسٹ کے ساتھ معاوضہ ادا کرنے کا حکم دیا۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: