ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ: وزیر اعظم نریندر مودی کی اس بات سے  ناراض ہے وکلاء برادری

میرٹھ میں آل انڈیا لائرز یونین اور سنيوکت ادھیوکتا مورچہ (وکیلوں کا مشترکہ محاذ) نے مشترکہ نشست کا انعقاد کرکے وزیر اعظم کے اس بیان پر افسوس کا اظہار کیا اور کسان تحریک میں پہلے سے زیادہ تعاون اور حمایت کرنے کا اعلان کیا۔

  • Share this:
میرٹھ: وزیر اعظم نریندر مودی کی اس بات سے  ناراض ہے وکلاء برادری
میرٹھ: وزیر اعظم نریندر مودی کی اس بات سے  ناراض ہے وکلاء برادری

میرٹھ: کسان برادری کے علاوہ کسان تحریک کی حمایت کرنے والوں اور کسانوں کے ساتھ احتجاج میں شامل ہونے والوں کو کل اپنی پارلیمنٹ تقریر میں وزیر اعظم نے تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ کسان تحریک کی حمایت کرنے والوں کو آندولن جیوی اور پرجیوی کہے جانے پر وکلاء برادری نے وزیر اعظم کے اس بیان کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔


آج میرٹھ میں آل انڈیا لائرز یونین اور سنيوکت ادھیوکتا مورچہ (وکیلوں کا مشترکہ محاذ) نے مشترکہ نشست کا انعقاد کرکے وزیر اعظم کے اس بیان پر افسوس کا اظہار کیا اور کسان تحریک میں پہلے سے زیادہ تعاون اور حمایت کرنے کا اعلان کیا۔ سنیوکت ادهیوکتا مورچہ کے تحت وکلاء نے اب ہر ہفتے غازی پور بارڈر پہنچ کرکسانوں کے دھرنے میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔


آل انڈیا لائرز یونین کے صدر کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے پارلیمنٹ میں اپنے عہدے کا پاس نہیں رکھا اور اور جمہوری طریقہ سے اپنے حق کے تحفظ کے لیے مطالبات پیش کر رہے کسانوں اور انکی حمایت کرنے والوں کی کوششوں کا مذاق اڑا کر غیر زمہ دارانہ رویہ پیش کیا ہے  ، یونین کے سیکرٹری راج کمار گوجر کا کہنا ہے کہ مودی جی نے نہ صرف آندولن میں شامل ہونے والوں بلکہ اس ملک کی تاریخ میں تمام تحریک میں شامل ہونے والے مجاہدین کا بھی مذاق اڑایا ہے  راج کمار گوجر بتاتے ہیں کہ مودی جی کے اس بیان کے بعد اب وکلاء برادری اور بھی زیادہ کوششیں تیز کرتے ہوئی کسانوں کی ہر ممکن مدد اور تعاون کے لیے کمر کس چکی ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 10, 2021 12:46 AM IST