ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

کورونا قہر کے بیچ سوا 7 لاکھ کا فروخت ہوا قربانی کا بکرا

بھوپال کے آصف علی بکروں کی خرید و فروخت کا کاروبار کرتے ہیں۔ انہوں نے اس سال 176 کلو کا بکرا تیار کیا ہے، جسے مہاراشٹر کے پونہ شہر کے محمد ثقلین نے عیدالاضحیٰ کے موقع پر 7,25,000 میں خریدا ہے۔

  • Share this:
کورونا قہر کے بیچ سوا 7 لاکھ کا فروخت ہوا قربانی کا بکرا
کورونا قہر کے بیچ سوا 7 لاکھ کا فروخت ہوا قربانی کا بکرا

بھوپال: کورونا قہر اور بڑھتی مہنگائی کے بیچ جہاں عام انسانوں پر عرصہ حیات تنگ ہوگیا ہے وہاں پر لاکھوں کی بات سوچنا بھی بے معنی ہے۔ عید قرباں کے نزدیک آتے ہی پہلے کی طرح بکروں کے بازار شہر میں اب تک کھل نہیں سکے ہیں، لیکن کچھ تاجروں نے آن لائن بکروں کی خرید و فروخت شروع کردی ہے۔ بھوپال میں عید قرباں کے موقع پر کچھ خاص بازار سج کرتیار ہوجاتے ہیں۔ عید الفطر کے بعد ہی ان بازاروں میں بکروں کی خرید وفروخت شروع ہوجاتی ہے۔ یہ بازارجنسی، شبن چوراہا، بڑا باغ، اتوارہ، میدامل میدان میں تو لگائے ہی جاتے ہیں، رسول احمد صدیقی چوراہا چار بتی پر تو عید قرباں کے موقع پر رات میں بھی بکروں کا بازار لگتا ہے، جہاں بکروں کے شوقین رات بھر بکروں کی خرید وفروخت کرتے ہوئے پہلے نظر آتے تھے، مگر اس بار کورونا قہر کے سبب تمام بازاروں کی رونقیں معدوم ہوگئی ہیں۔

بھوپال کے آصف علی بکروں کی خرید و فروخت کا کاروبار کرتے ہیں۔ قربانی کے لئے وہ ہر سال خاص بکروں کو تیار کرتے ہیں۔ امسال بھی انہوں نے خاص بکرا تیار کیا ہے۔ آصف کا تیار کردہ بکرا 20-10 کلو کا نہیں بلکہ ایک سو چھیہتر (176)کلو کا ہے۔ آصف اس بکرے کو روز دودھ پلانےکے ساتھ بادام بھی کھلاتے ہیں۔ آصف علی بھوپال کے قاضی کیمپ میں رہتے ہیں اور امسال ان کے بکرے کی آن لائن قیمت سات لاکھ پچیس ہزار روپئے (7,25,000) لگائی گئی ہے۔ آن لائن بکرے کو خریدنے والے ملک کے بہت سے صوبوں کے لوگ آئے، لیکن اس کی سب سے زیادہ قیمت لگا کر پونہ مہاراشٹر کے شخص نے خریدا ہے۔ آصف کا تیار کردہ بکرا 176 کلو کا ہے۔ بکرے کی عمر دیڑھ سال بتائی جاتی ہے۔ آصف اس کی روز مالش کرنے کے ساتھ اس کی خوراک کا خاص خیال رکھتے ہیں۔ آصف کہتے ہیں کہ بکرا دودھ بھی پیتا ہے اور بادام بھی کھاتا ہے اور ہر روز یہ تین سے چار لیٹر دودھ پیتا ہے۔


بھوپال کے آصف علی بکروں کی خرید و فروخت کا کاروبار کرتے ہیں۔ قربانی کے لئے وہ ہر سال خاص بکروں کو تیار کرتے ہیں۔ امسال بھی انہوں نے خاص بکرا تیار کیا ہے۔
بھوپال کے آصف علی بکروں کی خرید و فروخت کا کاروبار کرتے ہیں۔ قربانی کے لئے وہ ہر سال خاص بکروں کو تیار کرتے ہیں۔ امسال بھی انہوں نے خاص بکرا تیار کیا ہے۔


آصف علی کہتے ہیں کہ ہر سال وہ  قربانی کےلئے تیار کردہ اپنے بکروں کی نمائش لگاتے تھے، لیکن اس بار کورونا قہر کے سبب بکروں کی نمائش لگانا تو ممکن نہیں ہے اس لئے انہوں نے بکرے کی فروخت کےلئے آن لائن کا سہارا لیا اور سب سے زیادہ قیمت پونہ کے تاجر ثقلین نے لگائی ہے۔ بکرا آن لائن 7,25,000 میں فروخت کیا گیا ہے۔ آصف کہتے ہیں کہ ہر سال بکرے کے پیچھے اتنی محنت اس لئے بھی کرتے ہیں کیونکہ اس جو آمدنی ہوتی ہے اس کا ایک بڑا حصہ وہ غریبوں کی تعلیم کےلئے مخصوص کردیتے ہیں اور جب انہیں کسی بچے کی فیس کے متعلق معلوم ہوتا ہے تو خاموشی سے جاکر اسکول میں فیس جمع کردیتے ہیں اور کوئی غریب بچہ جو پڑھنے میں اچھا ہے، لیکن مفلسی کے سبب اس کی تعلیم کا سلسلہ منقطع ہوتا ہےکہ اس کی خاموشی سے مدد بھی کرتےہیں اور اس سے جتنی خوشی ہوتی ہے اس کو  لفظوں میں بیان نہیں کرسکتے ہیں ۔میرے اس شوق کو لےکر لوگ طرح طرح کی باتیں تو کرتے ہیں لیکن مجھے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے۔ میں بکروں کےذریعہ اپنا کاروبار بھی کرتا ہوں اور اس سے ہونے والی آمدنی سے لوگوں کی مدد بھی خاص مقصد ہوتا ہے۔

اس خاص بکرے کو خریدنے والے پونہ کے ثقلین بتاتے ہیں کہ اس بکرے کو 7,25,000 میں انہوں نے خریدا ہے اور اس بکرے کی وہ قربانی کریں گے۔
اس خاص بکرے کو خریدنے والے پونہ کے ثقلین بتاتے ہیں کہ اس بکرے کو 7,25,000 میں انہوں نے خریدا ہے اور اس بکرے کی وہ قربانی کریں گے۔


وہیں اس خاص بکرے کو خریدنے والے پونہ کے ثقلین بتاتے ہیں کہ اس بکرے کو 7,25,000 میں انہوں نے خریدا ہے اور اس بکرے کی وہ قربانی کریں گے۔ ثقلین کہتے ہیں کہ اللہ نے انہیں نوازا ہے تو وہ ہر سال ملک سے بہترین قسم کا بکرا خریدتے ہیں۔ اس بار ان کی پسند کا خاص بکرا انہیں بھوپال میں ملا ہے۔ ثقلین کہتے ہیں کہ جب انہوں نے اس خاص بکرے کے بکرے میں سوشل میڈیا پر سنا تو انہیں یقین نہیں ہوا۔ پھر آن لائن بکرے کی خرید کےلئے شامل ہوئے اور اس کی قیمت اداکر کے اب اسے لے جانے کے لئے بھوپال آئے ہیں۔ بکروں کو پونہ لے جاکر اس کی خدمت کریں گے اور پھر عید قرباں کے موقع پر اس کی قربانی کریں گے۔ آصف علی کا تیار کردہ بکرا گزشتہ سال بھی ملک میں شہرت کا حامل بنا تھا۔ سال 2019 میں آصف علی کا بکرا ایک سو ستاون (157) کلوکا تھا اور اسے انہوں نے نمائش لگا کر فروحت کیا تھا۔ آصف اس کی نمائش اس لئے بھی لگاتے ہیں تاکہ بکروں کا کاروبار کرنے والوں کو معلوم ہوسکے کہ جانوروں کی خدمت کیسے کرنا چاہئے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 05, 2020 11:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading