ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ: سڑکوں پرگاڑی والوں کا چالان کاٹنے والی پولیس کو نظر نہیں آ رہی بازاروں کی بھیڑ

سرکاری ہدایات اور کورٹ کی سختی کے باوجود کورونا کو لیکر نہ صرف عام لوگ لاپرواہ نظر آ رہے ہیں بلکہ ضلع اور پولیس انتظامیہ کی کارروائی بھی گاڑی والوں کا چالان کاٹ کر اور ڈرون سے فوٹو گرافی کرنے کے دائرے تک محدود نظر آ رہی ہے۔

  • Share this:
میرٹھ: سڑکوں پرگاڑی والوں کا چالان کاٹنے والی پولیس کو نظر نہیں آ رہی بازاروں کی بھیڑ
میرٹھ: سڑکوں پرگاڑی والوں کا چالان کاٹنے والی پولیس کو نظر نہیں آ رہی بازاروں کی بھیڑ

میرٹھ: کورونا انفیکشن کے بڑھتے معاملوں کے باوجود جہاں زیادہ تر لوگ اس جان لیوا خطرے کو سنجیدگی سے نہ لیتے ہوئے احتیاطی تدابیر اور ہدایات پر سختی سے عمل نہیں کر رہے ہیں۔ وہیں احتیاطی اقدامات پر سختی سے عمل کرانے کے لئے پولیس کی کارروائی بھی محض سڑکوں پر گاڑی والوں کا چالان کاٹنے تک محدود نظر آتی ہے جبکہ بازاروں میں لوگ سرکاری گائیڈ لائن کی کھل کر خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ سرکاری ہدایات اور کورٹ کی سختی کے باوجود کورونا کو لیکر نہ صرف عام لوگ  لاپرواہ نظر آ رہے ہیں بلکہ ضلع اور پولیس انتظامیہ کی کارروائی بھی گاڑی والوں کا چالان کاٹ کر اور ڈرون سے فوٹو گرافی کرنے کے دائرے تک محدود نظر آ رہی ہے۔ وہیں سڑکوں پر گاڑیوں میں ماسک نا لگاکر چلنے والوں کا چالان کاٹنے والی پولیس کو شہر کے بازاروں میں امنڈنے والی بھیڑ نظر نہیں آتی۔


تمام احتیاطی اقدامات اور ہدایات کو بالائے طاق رکھ کر بازاروں میں نکلنے والے خریداروں اور دکانداروں سے اب کاروباری تنظیموں کے لوگ بھی پریشان ہیں اور پولیس کے اس دوہرے رویہ پر ناراضگی ظاہر کرتے ہیں۔ ویاپار سنگھ سے وابستہ کاروباریوں کا کہنا ہے کہ سڑکوں پر لوگوں کا چالان تو کیا جا رہا ہے، لیکن بازاروں میں غیر ضروری طور پر جمع ہونے والی بھیڑ کو پولیس قابو کرنے سے قاصر ہے۔ ایسے میں اگر کورونا انفیکشن کے معاملے بڑھتے ہیں تو کاروباریوں کو نشانہ بنایا جائے گا اور بازاروں کی بند کرنے کا فرمان جاری کیا جا سکتا ہے، کاروباریوں کے مطابق ان حالات میں کاروبار بند ہونے سے کاروباری اور روزگار کی کمر ٹوٹ جائے گی۔ پولیس کے چالان اور جرمانے سے بچنے کے لئے ماسک لگانے کی رسم ادائیگی کرنے والے لوگ سماجی دوری کی پرواہ نہ کرکے گائیڈ لائن کی دھجیاں اُڑا رہے ہیں اور پولیس کی کارروائی کا مخصوص اور محدود دائرہ بھی کارگر ثابت ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 27, 2020 11:59 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading