ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

New IT Rules:انڈیا،اپنی ڈیجیٹل خودمختاری کےساتھ کسی بھی سمجھوتےکوقبول نہیں کرےگا،روی شنکرپرساد

روی شنکر پرساد نے کہا ہم تنقید کا احترام کرتے ہیں۔ کوئی بھی تنقید کرسکتا ہے۔ یہ ہماری جمہوریت کا ایک حصہ ہے۔ لیکن قوانین اہم ہیں۔ ہندوستان کسی بھی طرح اپنی ڈیجیٹل خودمختاری سے سمجھوتہ نہیں کرسکتا۔ ہندوستان ایک جمہوریت ہے جو آئین کے مطابق چلتی ہے۔ ٹویٹر ہمیں جمہوریت کی میرٹ پر لیکچر دینا چھوڑ دے۔

  • Share this:
New IT Rules:انڈیا،اپنی ڈیجیٹل خودمختاری کےساتھ کسی بھی سمجھوتےکوقبول نہیں کرےگا،روی شنکرپرساد
روی شنکر پرساد نے کہا ہم تنقید کا احترام کرتے ہیں۔ کوئی بھی تنقید کرسکتا ہے۔ یہ ہماری جمہوریت کا ایک حصہ ہے۔

نئی دہلی: مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات روی شنکر پرساد کا کہنا ہے کہ ہندوستان، اپنی ڈیجیٹل خودمختاری کے ساتھ کسی بھی سمجھوتے کو قبول نہیں کرے گا۔ سوشل میڈیا اور ٹویٹر تنازعہ سے متعلق آئی ٹی کے نئے قوانین کے بارے میں نیوز 18 کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ، انہوں نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا کی بڑی کمپنیاں ہندوستان سے بھاری منافع کماتی ہیں۔ اس کی ملک میں ایک بڑی موجودگی ہے۔ یہاں تک کہ عام شہریوں ، صحافیوں ، صنعتکاروں کو بھی ٹرول کیا جاتا ہے۔ ہم رازداری کا احترام کرتے ہیں۔ لیکن کمپنیوں کو دہشت گردی کی سرگرمیوں ، سماج دشمن عناصر ، ملک دشمن سرگرمیوں سے متعلق امور میں معلومات فراہم کرنا ہوں گی۔


روی شنکر پرساد نے کہا ہم تنقید کا احترام کرتے ہیں۔ کوئی بھی تنقید کرسکتا ہے۔ یہ ہماری جمہوریت کا ایک حصہ ہے۔ لیکن قوانین اہم ہیں۔ ہندوستان کسی بھی طرح اپنی ڈیجیٹل خودمختاری سے سمجھوتہ نہیں کرسکتا۔ ہندوستان ایک جمہوریت ہے جو آئین کے مطابق چلتی ہے۔ ٹویٹر ہمیں جمہوریت کی میرٹ پر لیکچر دینا چھوڑ دے۔



انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں شکایت کے ازالے کے افسر کی موجودگی ہونی چاہئے۔ ان کمپنیوں کو ہندوستانی آئین کا احترام کرنا سیکھنا ہوگا۔ کچھ لوگ ٹویٹر پر سیاست کرتے ہیں۔ اب وہ ٹویٹر کے ذریعہ سیاست کر رہے ہیں ۔ اسی کے ساتھ ہی ، انہوں نے واٹس ایپ کے بارے میں کہا ، تمام صارفین کو پہلے کی طرح پلیٹ فارم استعمال کرنے کی مکمل آزادی ہے۔ ان کے مشمولات کو رنگین کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا ، لداخ چین کا ایک حصہ ہے؟ ہندوستان ، امریکہ اور دوسرے ممالک میں دوہرے معیارات دکھائے گئے ہیں۔ میڈیا کے پاس شکایات کے ازالے کا ایک طریقہ کار موجود ہے۔ بات یہ ہے کہ نیت بھی ہونی چاہئے۔


انہوں نے کہا ۔ڈیجیٹل انڈیا کو پوری دنیا میں عزت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ کسی بھی ہندوستانی کی رضامندی کے حق کا احترام کیا جانا چاہئے۔ ہم ٹیکنالوجی پر بھروسہ کرتے ہیں۔ ہم سوشل میڈیا کی بڑی بڑی کمپنیوں کی وجہ سے اقتدار میں نہیں آئے ہیں۔ ہم اقتدار میں ہیں کیونکہ ہندوستان کے عوام نے ہم پر اعتماد ظاہر کیا ہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 29, 2021 11:46 AM IST