ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

امفان طوفان کی تباہی سے ہزاروں کی کتابیں تہس نہس

مغربی بنگال کے کولکاتا شہر میں لاکھوں کی کتابیں برباد ہونے سے جہاں دوکاندار پریشان ہیں وہیں امسال طلبا کے لئے کٸی اہم کتابوں تک رسائی بھی مشکل ہوگی کیونکہ بیشتر کتابیں پانی میں بھیگنے سے برباد ہوچکی ہیں۔

  • Share this:
امفان طوفان کی تباہی سے ہزاروں کی کتابیں تہس نہس
امفان طوفان کی تباہی سے ہزاروں کی کتابیں تہس نہس

کولکاتا: ملک بھر میں شروع ہوٸے ان لاک 1.0 سے زندگی پٹری پر لوٹ رہی ہے۔ مغربی بنگال کی راجدھانی کولکاتا شہر کی رونق بھی واپس لوٹی ہے، دیگر بازار و مارکیٹ کے ساتھ شہر کے سب سے بڑے کتابوں کے بازار کالج اسٹریٹ کو بھی کھول دیا گیا، لیکن کالج اسٹریٹ میں دکانیں کھولے جانے کے باوجود طلبإ کے لٸے کتابوں کا ملنا مشکل ہوگیا ہے۔ امفان طوفان کی تباہی نے کولکاتا شہر کے اس سب س بڑے کتابوں کے بازار کو بھی نقصان پہنچایا ہے۔


لاکھوں کی کتابیں برباد ہونے سے جہاں دوکاندار پریشان ہیں وہیں امسال طلبا کے لٸے کٸی اہم کتابوں تک رساٸی بھی مشکل ہوگی کیونکہ بیشتر کتابیں پانی میں بھیگنے سے برباد ہوچکی ہیں۔ کالج اسٹریٹ کولکاتاکا مشہور علاقہ ہے۔ کلکتہ یونیورسٹی، پریسڈینسی یونیورسٹی، ہندو اسکول اسی علاقے میں قاٸم ہیں۔ یہاں طلبا و طالبات کے ساتھ کتابوں سے دلچسی رکھنے والے لوگوں کی بھیڑ لگی رہتی ہے، دنیا کی ہر زبان کی کتابیں یہاں اسانی سے مل جاتی ہیں۔ کتابوں کے حصول کے لٸے ہر عمر کے لوگ یہاں کا چکر لگاتے ہیں، لیکن اس بار طوفان امفان کی تباہی سے نادر کتابیں برباد ہوچکی ہیں۔ وہیں لمبے لاک ڈاٶن نے یہاں کے دکانداروں کو معاشی طور پر کمزور کردیا ہے۔


لاک ڈاٶن کے بعد واپس لوٹے دکاندار اپنے دکانوں و کتابوں کا حال دیکھ کر پریشان ہیں۔ حکومت سے مدد کی گہار لگا رہے ہیں۔ کالج اسٹریٹ میں جگہ جگہ کتابیں بکھری ہڑی ہیں جبکہ کٸی دکانداروں نے زمین پر کتابیں رکھ کر سکھانے کی کوشش شروع کی ہے تاکہ اسے پڑھنے کے قابل بنایا جاسکے۔ دکانداروں کے مطابق اگرکچھ کتابوں کو محفوظ کر لیا گیا، تو وہ طلبا میں مفت تقسیم کی جاٸے گی۔ طوفان امفان سے ہوٸی تباہی کے بعد حکومت نے متاثرین کو مدد پہنچانے کا فیصلہ کیا ہے۔ وہیں ان کانداروں کو بھی امید ہے کہ حکومت ان کی مدد کے لٸے اگے آٸے گی۔

First published: Jun 11, 2020 02:08 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading