جھارکھنڈ میں ہجومی تشدد کے واقعات سے سنسنی: فائرنگ کے بعد پولیس، متاثرین کو بچانے میں کامیاب

جھارکھنڈ میں ہجومی تشدد کا سلسلہ جاری ہے۔ دھنباد میں ہجومی تشدد کے 3 واقعات سے وہاں سنسنی پھیل گئی ہے۔بچہ چور کے شبے میں بھیڑ نےنرسا اور جھریا میں 2 افراد کی پٹائی کی۔

Sep 11, 2019 08:59 AM IST | Updated on: Sep 11, 2019 08:59 AM IST
جھارکھنڈ میں ہجومی تشدد کے واقعات سے سنسنی: فائرنگ کے بعد پولیس، متاثرین کو بچانے میں کامیاب

علامتی تصویر

جھارکھنڈ میں ہجومی تشدد کا سلسلہ جاری ہے۔ دھنباد میں ہجومی تشدد کے 2 واقعات سے وہاں سنسنی پھیل گئی ہے۔بچہ چور کے شبے میں بھیڑ نےنرسا اور جھریا میں دو شخص کی پٹائی کی۔ پولیس نے بروقت مداخلت کرتے ہوئے دونوں کی جان بچائی ۔لیکن اس دوران بھیڑ نے پولیس پر پتھراؤ کیا۔ نرسا میں پولیس نے اپنے دفاع میں4 راؤنڈ ہوائی فائرنگ کی۔

پتھراؤ کے نتیجے میں یہاں 6پولیس اہلکار زخمی ہوئے ہیں۔ جھریا کے جورا پوکھر میں بھی بیچ بچاؤ کرنے پہنچی پولیس پربھیڑ نے پتھراؤ کیا۔جس میں کئی پولیس اہلکار زخمی ہوگئے۔پولیس کا کہنا ہے کہ قصورواروں کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔پولیس نے لوگوں سے افواہوں پر دھیان نہ دینے کی اپیل کی ہے۔

بچہ چوری کے شبہ میں گاوں والوں نے سادھو کی جم کر پٹائی کی

جھارکھنڈ کے لاتیہار ضلع میں چندوا تھانہ علاقہ کے نیواڑي گاؤں میں آج بچہ چوری کے الزام میں گاوں والوں نے ایک سادھو کی جم کر پٹائی کر دی۔

Loading...

پولیس ذرائع نے یہاں بتایا کہ سادھو بھیک مانگے گاؤں آیا تھا۔ سادھو کو دیکھتے ہی کچھ شرپسند عناصرنے بچہ چور بچہ چور کہہ کر چلانا شروع کر دیا۔ اس کے بعد بھیڑ نے اس سادھو کی جم کر پٹائی کردی۔ذرائع نے بتایا کہ اطلاع ملتے ہی موقع پر پہنچی پولیس نے سادھو کو گاوں والوںسے بچالیا۔

Loading...