உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی حکومت کا نیا پتہ ہوگا Twin Tower,عمارت ہوگی 35 منزلہ، چھت پر اتریں گے ہیلی کاپٹر، جانیے اس کی خاصیت

    دہلی حکومت کا پتہ جلد ہی بدلنے والا ہے۔ نیا پتہ ITO میں تعمیر ہونے والا ٹوئن ٹاور(Twin Tower) ہوگا۔ (نیوز 18 ہندی)

    دہلی حکومت کا پتہ جلد ہی بدلنے والا ہے۔ نیا پتہ ITO میں تعمیر ہونے والا ٹوئن ٹاور(Twin Tower) ہوگا۔ (نیوز 18 ہندی)

    دہلی حکومت کے نئے سکریٹریٹ کی اس عمارت کی چھت پر ہیلی پیڈ ہوگا۔ دہلی کے محکمہ تعمیرات عامہ کے وزیر ستیندر جین نے گزشتہ ہفتے محکمہ کے افسران کو ان ٹاوروں کی منصوبہ بندی کے ساتھ آگے بڑھنے کی ہدایت دی تھی۔

    • Share this:
      نئی دہلی:دہلی حکومت(Arvind Kejriwal Government) کا پتہ جلد ہی بدلنے والا ہے۔ دہلی حکومت آئی ٹی او میں 35 منزلوں کے دو ٹاور بنائے گی، 1910 کروڑ روپے کے اس منصوبے پر کام شروع ہو چکا ہے۔ ان دونوں عمارتوں کو ٹوئن ٹاورز(Twin Tower) کہا جا رہا ہے۔ دہلی کی AAP حکومت نے اس عمارت کی تعمیر کے لیے ایک بلیو پرنٹ تیار کیا ہے۔

      اروند کیجریوال حکومت نے ITO کے قریب موجودہ 3 عمارتوں کو منہدم کرکے 35 منزلہ جڑواں ٹاور بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ دونوں عمارتیں مکمل طور پر گرین بلڈنگ ہوں گی۔

      ٹاور کی تعمیر کے بعد دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال، نائب وزیر اعلی منیش سسودیا اور دیگر تمام وزراء کے محکموں کے سکریٹریوں کے دفاتر وہاں ہوں گے۔ دہلی حکومت کے منصوبے کے مطابق ITO میں واقع وکاس بھون-1، MSO بھون (PWD ہیڈکوارٹر) اور GST بھون کے موجودہ ڈھانچے کو منہدم کر دیا جائے گا۔ ان تینوں عمارتوں کے پلاٹوں پر 30 سے ​​35 منزلہ نئی عمارت تعمیر کی جائے گی۔ یہاں موجود تین عمارتوں کا مجموعی پلاٹ رقبہ 53,603 مربع میٹر ہے۔

      نئی عمارت پر ہوگا ہیلی پیڈ
      دہلی حکومت کے نئے سکریٹریٹ کی اس عمارت کی چھت پر ہیلی پیڈ ہوگا۔ دہلی کے محکمہ تعمیرات عامہ کے وزیر ستیندر جین نے گزشتہ ہفتے محکمہ کے افسران کو ان ٹاوروں کی منصوبہ بندی کے ساتھ آگے بڑھنے کی ہدایت دی تھی۔ محکمہ تعمیرات عامہ نے اس پروجیکٹ کو ڈیزائن کرنے کے لیے ایک کنسلٹنٹ کمپنی کی تقرری کا عمل شروع کر دیا ہے۔

      حکومت نے عمارت کے لئے نکالا ہے گلوبل ٹینڈر
      بتادیں کہ محکمہ تعمیرات عامہ کی طرف سے جاری کردہ ٹینڈر دستاویز میں کہا گیا ہے کہ نئی دفتر کی عمارت کی تعمیر دہلی حکومت کے قواعد کے مطابق کرنے کی تجویز ہے۔ اس کے لیے بین الاقوامی تجربہ رکھنے والی کمپنی کو شامل کیا جائے گا، جس کے لیے گلوبل ٹینڈرز جاری کر دیے گئے ہیں۔ اسے 2025 تک تعمیر کرنے کی تجویز ہے۔ کنسلٹنٹ کمپنی کو ماسٹر پلان 2021 کے مطابق فلور ایریا ریشو (FAR) کے زیادہ سے زیادہ استعمال کی منصوبہ بندی کرنی ہوگی۔

      500 سے لے کر 2000 کی گنجائش والے ہوں گے تین آڈیٹوریم
      ان ٹاورز میں آڈیٹوریم، سیمینار روم اور کانفرنس ہال ہوں گے جن کی گنجائش 2000، 1000 اور 500 افراد کی ہوگی۔ اس کے علاوہ لائبریری، کریچ، کمیونٹی ہال، کینٹین، کیفے ٹیریا، فوڈ کورٹ اور جم بھی ہوگا۔ عمارتوں میں اسٹیلٹس اور بیسمنٹ پارکنگ ایریاز ہوں گے، بشمول گاڑیوں کے لیے الیکٹرک چارجنگ پوائنٹس۔ اس میں وائی فائی، سی سی ٹی وی کیمرے، ایکسیس کنٹرول، ایسکلیٹرز، سنٹرلائزڈ ایئر کنڈیشنگ، کانفرنس ہال کے لیے آڈیو/ویڈیو سسٹم، کامن ایریا، سیوریج ٹریٹمنٹ پلانٹ اور بارش کے پانی کی ذخیرہ اندوزی شامل ہوگی۔ یہ اب تک کا سب سے اونچا ٹاور ہوگا۔

      نئی گرین بلڈنگ میں کیا کیا ہوگا خاص
      نئی عمارت ایک سبز عمارت ہوگی جس میں پارکنگ کی سہولت کے ساتھ ساتھ ہر دفتر کے ساتھ سیمینار روم/کانفرنس روم بھی ہوگا۔ آڈیٹوریم کی گنجائش 2000، 1000 اور 500 افراد کی ہوگی۔ ٹاور مکمل طور پر وائی فائی سے لیس ہوگا۔ سی سی ٹی وی ایکسس کنٹرول سسٹم، سب اسٹیشن، سولر پاور، ہوم فائیو اسٹار ریٹنگ، لفٹ، ایسکلیٹر، سنٹرلائزڈ ایئر کنڈیشننگ سسٹم اور دیگر تمام سہولیات بشمول لائبریری، کریچ، کمیونٹی ہال کی سہولیات۔ کینٹین، کیفے ٹیریا، فوڈ کورٹ، چھوٹی مارکیٹ، جم کی سہولیات وغیرہ بھی عمارت میں ہوں گی۔

      وزیراعلیٰ سے لے کر وزیر اور سکریٹری کے بھی ہوں گے یہاں دفتر
      ان ٹاورز میں چیف سیکریٹری، ایڈیشنل چیف سیکریٹری، پرنسپل سیکریٹریز، سیکریٹریز اور ان کے معاون عملے کے علاوہ وزیر اعلیٰ اور وزراء کے دفاتر ہوں گے۔ ٹاورز گرین بلڈنگ ہوں گے اور انہیں جدید ترین انفراسٹرکچر فراہم کیا جائے گا۔ دہلی حکومت کا سکریٹریٹ جو فی الحال پلیئرز بلڈنگ میں چل رہا ہے اس ٹاور میں منتقل کیا جائے گا۔ پلیئرز بلڈنگ مکمل طور پر دیگر سرکاری دفاتر کے لیے وقف ہو گی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: