ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

رانچی یونیورسٹی کے شعبہ اردو میں رسم اجرا تقریب کا انعقاد

پروگرام میں رانچی یونیورسٹی کے شعبہ اردو کے صدر ڈاکٹر منظر حسین اور انجمن ترقی اردو جھارکھنڈ کے صدر پروفیسر ابوذر عثمانی کے علاوہ شعبہ اردو کے طلبہ اور طالبات موجود تھے ۔

  • Share this:
رانچی یونیورسٹی کے شعبہ اردو میں رسم اجرا تقریب کا انعقاد
رانچی یونیورسٹی کے شعبہ اردو میں رسم اجرا تقریب کا انعقاد

رانچی یونیورسٹی کے شعبہ اردو میں آج رسم اجرا تقریب کا انعقاد کیا گیا ۔ اس موقع پر دہشت گرد نامی احمد عزیز کا مجموعہ کلام اور مور کے پاوں نامی کہکشاں پروین کے افسانوی مجوعہ کلام کا اجرا کیا گیا ۔ ساتھ ہی بنارس ہندو یونیورسٹی سے شائع ہونے والا دستک نامی رسالہ کا اجرا کیا گیا ۔ اس موقع پر رانچی یونیورسٹی کے شعبہ اردو کے صدر ڈاکٹر منظر حسین اور انجمن ترقی اردو جھارکھنڈ کے صدر پروفیسر ابوذر عثمانی کے علاوہ شعبہ اردو کے طلبہ اور طالبات موجود تھے ۔ اس موقع پر دہشت گرد نامی کتاب کے مصنف احمد عزیز نے واضح کیا کہ اس کتاب میں انہوں نے یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ امریکہ دنیا کا سب سے بڑا دہشت گرد ہے اور وہ پوری دنیا میں دہشتگردی کر رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس کتاب میں انہوں نے یہ بات ثابت کرنے کی کوشش کی ہے ۔ ساتھ ہی اسلام کو امن پسند مذہب قرار دیا ہے ۔


بی ایچ یو کے شعبہ اردو کے صدر اور رسالہ دستک کے مدیر پروفیسر آفتاب احمد آفاقی نے کہا یہ ششماہی رسالہ گذشتہ دو سالوں سے بی ایچ یو سے شائع کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے اس کی خصوصیت بتاتے ہوئے کہا کہ اس رسالہ کے ہر شمارہ میں اردو دنیا کے کسی خاص شخصیت کی حیات و خدمات کا ذکر کیا جاتا ہے ۔ حالیہ رسالہ میں عبد الرحمان بجنوری کے حیات و خدمات کو پیش کیا گیا ہے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ اس شمارہ میں بجنوری کے نایاب مضمون کو شامل کیا گیا ہے ۔ انہوں نے امید کا اظہار کیا کہ بجنوری کے یہ مضمون دستاویز کے طور پر استعمال کیا جائے گا۔


مور کے پائوں کی مصننفہ کہکشاں پروین نے کہا کہ مور کے پاوں کو زندگی کے طور پر لیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ زندگی واقعی میں خوبصورت ہوتی ہے ، لیکن انسان کے کچھ حالات ایسے ہو جاتے ہیں ، جب اس کی زندگی میں پریشانیاں آجاتی ہیں اور زندگی تھم جاتی ہے ۔ بائیس افسانوں پر مشتمل اس کتاب میں انہوں نے اسی بات کو کہنے کی کوشش کی ہیں ۔ اس سے قبل کہکشاں پروین کے چار افسانوی مجوعے ایک مٹھی دھوپ ، دھوپ کا سفر ، سرخ لکیریں اور پانی کا چاند نامی مجموعے منظر عام پر آچکے ہیں ۔ مور کے پاوں کہکشاں پروین کے پانچواں مجوعہ کلام ہیں ۔

First published: Jan 20, 2020 10:23 PM IST