ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

غازی آبادسےاپنےگھرپہنچنے والے2مسلم بھائیوں کاگوکل پوری میں قتل،سنیچر کوہوگا پوسٹ مارٹم

عامر غازی آباد میں بطور ڈرائیور کام کرتا تھا اور ہاشم اس کا معاون تھا۔ ان خاندان کو ابھی تک ان کی لاشیں نہیں مل پائیں۔ بتایا جارہا ہے کہ ان کا پوسٹ مارٹم سنیچر کے روز کیا جائے گا۔

  • Share this:
غازی آبادسےاپنےگھرپہنچنے والے2مسلم بھائیوں کاگوکل پوری میں قتل،سنیچر کوہوگا پوسٹ مارٹم
کئی گھروں، دکانوں اور گاڑیوں سے دھواں نکل رہا ہے۔ صرف یہی نہیں بدھ کی صبح بھگیرتی وہار کے قریب پانچ مکانات کو آگ لگا دی گئی۔

دہلی تشدد کے مہلوکین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ جمعہ کے روز ،مہلوکین کی تعداد بڑھ کر 42 ہوگئی۔ دہلی کے محکمہ صحت کے ایک عہدیدار نے یہ تفصیلات فراہم کی ہے۔ معلومات کے مطابق ، اب تک (جمعہ کی سہ پہر) گرو تیغ بہادر اسپتال (جی ٹی بی اسپتال) میں 38 ،لوک نائک جئے پرکاش اسپتال (ایل این جے پی اسپتال) میں 3 اور جگ پرویش چندر اسپتال میں 1 شخص کی موت ہوگئی ہے۔ اب تک تشدد اور اضطراب میں 275 سے زیادہ افراد زخمی ہوچکے ہیں ، جن کا مختلف اسپتالوں میں علاج جاری ہے۔


دوسری طرف ، شمال مشرقی دہلی کے تشدد سے متاثرہ علاقوں میں دکانیں کھولنے کے ساتھ ہی ، حالات اب معمول پر آتے نظر آرہے ہیں۔ سڑکوں پر ٹریفک پہلے کی بحال ہورہاہے۔ گذشتہ پیر سے شمال مشرقی ضلع کے تشدد متاثرہ علاقوں میں تقر یباً 7 ہزار نیم فوجی دستے تعینات کردیئے گئے ہیں۔ امن برقرار رکھنے کے لئے دہلی پولیس کے سیکڑوں اہلکار ڈیوٹی پر ہیں۔ اس دوران دہلی پولیس کے اعلی افسران مسلسل گشت کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ امن کی فضا کو بحال کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔


تشدد کے دوران وہاں کی زیادہ تر دکانوں کو آگ کے حوالے کر دیا گیا ہے۔
تشدد کے دوران وہاں کی زیادہ تر دکانوں کو آگ کے حوالے کر دیا گیا ہے۔


گوکل پوری میں مسلم بھائیوں کا قتل

تشدد کے دوران گوکل پوری میں اپنے اہل خانہ سے ملنے کے لئے یوپی کے غازی آباد سے پہنچے دو بھائیوں کا قتل کردیاگیاہے۔جمعہ کے روز دو نوجوانوں کی لاشیں ملی ہیں۔ان کے لواحقین نےجی ٹی بی اسپتال پہنچ کر مہلوکین کی لاشوں کی شناخت کرلی ہے۔تفصیلات کے مطابق ، عامر غازی آباد میں بطور ڈرائیور کام کرتا تھا اور ہاشم اس کا معاون تھا۔ کنبہ کو ابھی تک ان کی لاشیں نہیں مل پائیں۔ بتایا جارہا ہے کہ ان کا پوسٹ مارٹم سنیچر کے روز کیا جائے گا۔

جمعہ کو دہلی کے نئے پولیس کمشنر کی حیثیت سے چارج حاصل کرنے والے سینئر آئی پی ایس آفیسر ایس این سریواستو کا کہنا ہے کہ دہلی پولیس نے 100 سے زائد مقدمات درج کیے ۔مجرموں کو سخت سے سخت سزا دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے 60 گھنٹوں کے دوران کہیں بھی تشدد کے تازہ واقعات نہیں ہوئے ہیں۔یادرہے کہ پچھلے کچھ دنوں کے دوران ، پولیس پر مقامی لوگوں نے کئی سوال بھی اٹھائیں تھے۔ عام آدمی پارٹی سے معطل کارپوریٹر طاہر حسین سے متعلق سوال کیا گیا تو پولیس کمشنر سریواستو نے کہا کہ کسی ایک کیس کے متعلق بات کرنا درست نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ پولیس نے 100 سے زیادہ مقدمات درج کیے ہیں۔ایس این سریواستو کا کہناہے کہ پولیس تشدد میں ملوث افراد کے خلاف سختی کارروائی کرے گی اورقصورواروں کو سخت سزا دی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں :شمال مشرقی دہلی تشدد:1مکان،16مسلمان اوردروازے پرشرپسندعناصرپھر۔۔؟؟


راجدھانی دہلی کے مشرقی علاقے (North East Delhi) میں دو دن کے تشدد ((Delhi Violence)) کے بعد اب ماحول بہتر ہو رہا ہے۔ دہلی میں بھڑکے تشدد میںپر قابو پانے کیلئے پولیس نےدیر رات تک فلیگ مارچ کیا۔ کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لئے چپے۔چپے پر پولیس کی تعیناتی کی گئی ہے۔
راجدھانی دہلی کے مشرقی علاقے (North East Delhi) میں دو دن کے تشدد ((Delhi Violence)) کے بعد اب ماحول بہتر ہو رہا ہے۔ دہلی میں بھڑکے تشدد میںپر قابو پانے کیلئے پولیس نےدیر رات تک فلیگ مارچ کرتے ہوئے۔


دہلی تشدد کیس میں سماعت 13 اپریل کو ہوگی ۔ ہم آپ کو بتادیں کہ جمعرات کو دہلی تشدد کیس کی ہائی کورٹ میں سماعت ہوئی۔ ہائی کورٹ نے دہلی پولیس اور مرکزی حکومت سے اشتعال انگیز تقاریر کے خلاف دائر کیے گئے کیس میں تفصیلی جواب داخل کرنے کو کہا۔ عدالت نے وزارت داخلہ کو چار ہفتوں میں جواب داخل کرنے کی ہدایت کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں :مسلم نوجوانوں کی گرفتاری کا معاملہ: نمیش کمیشن کی سفارشات پرعمل آوری کیوں نہیں؟
First published: Feb 28, 2020 03:50 PM IST