ہوم » نیوز » وطن نامہ

بچوں کی اموات کامعاملہ: ڈاکٹرکفیل الزامات سے بری،کرائی جائے سی بی آئی تحقیقات:ڈاکٹرکفیل

ڈاکٹر کفیل نے بدعنوانی ، ڈیوٹی کی عدم کارکردگی کے الزامات کے تحت 9 ماہ جیل میں گزارے۔ اب، تقریباً دو سال بعد وہ ان الزامات سے بری ہوئے ہیں۔ اس معاملے میں،کفیل نے سی بی آئی تحقیقات کامطالبہ کیا ہے۔ کفیل کا کہنا ہے کہ مجرم وہ ہیں جنہوں نے آکسیجن سلنڈرس کی فراہمی کے لئے قیمت ادا نہیں کی تھی۔

  • Share this:
بچوں کی اموات کامعاملہ: ڈاکٹرکفیل الزامات سے بری،کرائی جائے سی بی آئی تحقیقات:ڈاکٹرکفیل
ڈاکٹر کفیل خان کی فائل فوٹو

اترپردیش کے گورکھپور کے ڈاکٹرکفیل کواگست 2017 میں،گورکھپور بابا راگھو داس میڈیکل کالج (بی آر ڈی میڈیکل کالج) میں یکیوٹ انسیفلائٹس سنڈروم سے 60 بچوں کی موت کے معاملے میں راحت ملی۔ محکمہ جاتی ٹیم نے گذشتہ دو سالوں سے معطل ڈاکٹر کفیل پرلگائے گئے الزامات کی جانچ کرکے اپنی رپورٹ پیش کی ہے یادرہے ڈاکٹرکفیل پرحادثے کے دن اپنی ذمہ داری ادا نہ کرنے سمیت بدعنوانی کے الزامات لگائے گئے تھے۔ محکمہ جاتی ٹیم نے تحقیقات کے بعد ڈاکٹرکفیل کوتمام الزامات سے بری کردیاگیاہے۔

بی آر ڈی عہدیداروں کے ذریعہ پیش کردہ 15 صفحات پرمشتمل رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حادثے کے وقت ڈاکٹرکفیل انسیفلائٹس وارڈ کے نوڈل آفیسر نہیں تھے۔ صرف اتناہی نہیں،چھٹی پرہونے کے باوجود ، کفیل نے اپنے طورپر500 آکسیجن سلنڈرس کا بندوبست کرکے بچوں کی زندگیاں بچانے میں اہم اورقابل تعریف رول ادا کیا۔

میڈیکل کالج میں 54 گھنٹوں تک آکسیجن کی تھی کمی

رپورٹ میں مزید کہاگیاہے کہ ڈاکٹرکفیل اسپتال میں بحالی، ٹینڈراورمائع آکسیجن کی ادائیگی کے ذمہ دار نہیں تھے۔ 10 سے 12 اگست تک میڈیکل کالج میں 54 گھنٹوں تک آکسیجن کی کمی تھی۔ اس کی وجہ سے ، ایک ہفتے کے اندر 60 سے زیادہ بچوں کی موت ہوگئی

میں جوکچھ کرسکتاتھا میں نے کیا،لیکن مجھے معطل کیا گیا: کفیل۔

نیوز 18 سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر کفیل نے کہا کہ وہ جانتے ہیں کہ وہ بے قصورہے۔ انہوں نے کہا ، اس دن بحیثیت ڈاکٹر،والدیا عام ہندوستانی،انہوں نے ہرممکن کوشش کی۔ لیکن اس کے باوجودان پر الزامات لگائے گئے اوران کے اہل خانہ کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا اوراتناہی نہیں انہیں ملازمت سے بھی معطل کردیا گیا۔
معصوم بچوں کی موت کے بعد ، ڈاکٹر کفیل نے بدعنوانی ، ڈیوٹی کی عدم کارکردگی کے الزامات کے تحت 9 ماہ جیل میں گزارے۔ اب، تقریباً دو سال بعد وہ ان الزامات سے بری ہوئے ہیں۔ اس معاملے میں،کفیل نے سی بی آئی تحقیقات کامطالبہ کیا ہے۔ کفیل کا کہنا ہے کہ مجرم وہ ہیں جنہوں نے آکسیجن سلنڈرس کی فراہمی کے لئے قیمت ادا نہیں کی تھی۔
First published: Sep 27, 2019 02:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading