உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Maharashtra Political Crisis: دوبار استعفیٰ دینے کے موڈ میں تھے ادھو ٹھاکرے، لیکن اتحاد کے ساتھیوں نے روکے ہاتھ: ذرائع

    Maharashtra Political crisis: مہاراشٹر میں جس دن سیاسی رسہ کشی کی شروعات ہوئی تھی، اسی دن وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے استعفیٰ دینے کا ارادہ کرلیا تھا، لیکن اتحادی ساتھیوں نے ایسا کرنے سے منع کردیا۔

    Maharashtra Political crisis: مہاراشٹر میں جس دن سیاسی رسہ کشی کی شروعات ہوئی تھی، اسی دن وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے استعفیٰ دینے کا ارادہ کرلیا تھا، لیکن اتحادی ساتھیوں نے ایسا کرنے سے منع کردیا۔

    Maharashtra Political crisis: مہاراشٹر میں جس دن سیاسی رسہ کشی کی شروعات ہوئی تھی، اسی دن وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے استعفیٰ دینے کا ارادہ کرلیا تھا، لیکن اتحادی ساتھیوں نے ایسا کرنے سے منع کردیا۔

    • Share this:
      ممبئی: مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے سیاسی رسہ کشی کے بعد سے دو بار استعفیٰ دینے کا ارادہ کرلیا تھا، لیکن دونوں بار اتحاد کے ساتھیوں کی طرف سے انہیں ایسا کرنے سے روک دیا گیا تھا۔ ذرائع کے مطابق، 21 جون کو جب 21 باغی اراکین اسمبلی سورت چلے گئے تھے اور ان سے رابطہ ٹوٹ چکا تھا، تب اس کے اگلے ہی دن انہوں نے استعفیٰ دینے کا ارادہ کرلیا تھا، لیکن اتحاد کے ساتھیوں نے ایسا ہونے نہیں دیا۔

      ذرائع کے مطابق، 21 جون کو شیو سینا اراکین اسمبلی نے بغاوت کردی۔ اس کے بعد انہوں نے سیاسی بحران کو ختم کرنے کی بہت کوشش کی، لیکن کوئی راستہ نکلتا ہوا نہیں نظر آیا اور اسی دن استعفیٰ دینے کے لئے تیار ہوگئے۔ حالانکہ مہاوکاس اگھاڑی حکومت کی اتحادی جماعتوں نے انہیں استعفیٰ نہ دینے کے لئے راضی کرلیا۔

      استعفیٰ دینے کے بعد شام کو شیو سینا کے بانی بالا صاحب ٹھاکرے میموریل پر جانے کا پروگرام بھی بنا لیا تھا، لیکن ایسا نہیں ہوسکا۔
      استعفیٰ دینے کے بعد شام کو شیو سینا کے بانی بالا صاحب ٹھاکرے میموریل پر جانے کا پروگرام بھی بنا لیا تھا، لیکن ایسا نہیں ہوسکا۔


      استعفیٰ دے کر بالا صاحب کے میموریل پر جانے کا منصوبہ تھا

      ذرائع کے مطابق، ادھو ٹھاکرے نے اس سیاسی بحران کو حل کرنے کے لئے بی جے پی کے لیڈران سے بھی رابطہ کیا تھا۔ جب باغی اراکین اسمبلی کے ساتھ مصالحت کے تمام راستے بند ہوگئے، تب انہوں نے 22 جون کو استعفیٰ دینے کا پورا ارادہ کرلیا تھا۔ استعفیٰ دینے کے بعد شام کو شیو سینا کے بانی بالا صاحب ٹھاکرے میموریل پر جانے کا پروگرام بھی بنا لیا تھا، لیکن ایسا نہیں ہوسکا۔ یہی وجہ تھی کہ ادھو ٹھاکرے کا پہلے سے طے پروگرام کے تحت 5 بجے شام پارٹی کارکنان کو خطاب کرنا تھا، لیکن انہیں اس میں بہت تاخیر ہوگئی۔

      مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے دیر شام کو فیس بک لائیو پر خطاب کیا اور استعفیٰ دینے کی خواہش ظاہر کی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ اگر باغی اراکین اسمبلی ممبئی آتے ہیں تو وہ استعفیٰ دینے کے لئے تیار ہیں۔ اس کے کچھ ہی دیر بعد ادھو ٹھاکرے نے وزیر اعلیٰ کی سرکاری رہائش گاہ ورشا کو چھوڑ دیا اور اپنے آبائی رہائش گاہ ماتوشری میں چلے گئے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: