உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ukraine-Russia War: پاکستانی طلبہ ہندوستانیوں کا لوٹ رہے ہیں سامان، فائرنگ کے ڈر سے سرحد تک پہنچنا مشکل

    یوکرین میں پھنسے طلبہ کو ہندوستان واپس لایا جارہا ہے ، مگر ابھی بھی بھاری تعداد میں طلبہ سرحد پر پھنسے ہوئے ہیں ۔  (AP)

    یوکرین میں پھنسے طلبہ کو ہندوستان واپس لایا جارہا ہے ، مگر ابھی بھی بھاری تعداد میں طلبہ سرحد پر پھنسے ہوئے ہیں ۔ (AP)

    Ukraine-Russia War: روس اور یوکرین کے درمیان گزشتہ کئی دنوں سے جنگ جاری ہے ، میزائل اور بم کے حملے ہورہے ہیں ، ہر کسی کو جان بچانے کی فکر ہے ، لیکن ان حالات میں بھی پاکستانی اپنی حرکتوں سے باز نہیں آرہے ہیں ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : روس اور یوکرین کے درمیان گزشتہ کئی دنوں سے جنگ جاری ہے ، میزائل اور بم کے حملے ہورہے ہیں ، ہر کسی کو جان بچانے کی فکر ہے ، لیکن ان حالات میں بھی پاکستانی اپنی حرکتوں سے باز نہیں آرہے ہیں ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق یوکرین میں پاکستانی شہری ہندوستانی طلبہ کے ساتھ لوٹ مار کررہے ہیں ۔ پاکستان کے علاوہ نائیجیریا کے طلبہ بھی اسی طرح کی حرکتیں کررہے ہیں ۔

      یوکرین میں پھنسے طلبہ کو ہندوستان واپس لایا جارہا ہے ، مگر ابھی بھی بھاری تعداد میں طلبہ سرحد پر پھنسے ہوئے ہیں ۔ انہیں سرحد پار کرنے میں پریشانی ہورہی ہے ۔ یہی نہیں ان طلبہ کو پاکستان اور نائیجیریا کے طلبہ پریشان کرکے ان کے سامان بھی چھین رہے ہیں ۔

      وہیں روس اور یوکرین کے درمیان جاری جنگ کے درمیان ہندوستانی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ یوکرین میں خار کیف ، سومی اور دیگر متاثرہ علاقوں کے حالات کو لے کر ہندوستان کافی فکرمند ہے ۔ یوکرین کے خارکیف میں منگل کو ایک ہندوستانی طالب علم کی موت ہوگئی ، جس کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی نے ایک اعلی سطحی میٹنگ کی تھی ۔ اس میٹنگ کے بارے میں جانکاری دیتے ہوئے خارجہ سکریٹری ہرش وردھن شرنگلا نے کہا کہ وزیر اعظم مودی نے خار کیف میں ہندوستانی شہری کی موت پر رنج و غم کا اظہار کیا ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ یوکرین میں خارکیف ، سومی اور دیگر متاثرہ علاقوں کو لے کر ہم بہت فکر مند ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگلے تین دنوں میں ہندوستانی شہریوں کو واپس لانے کیلئے 26 اڑانیں مقرر کی گئی ہیں ۔ شرنگلا نے یوکرین میں پھنسے ہندوستانیوں کو نکالنے کے منصوبہ کے سلسلہ میں بتایا کہ بخاریسٹ اور بوڈا پوسٹ کے علاوہ پولینڈ اور سلوواک جمہوریہ کے ہوائی اڈوں سے بھی اڑانیں آپریٹ کرکے لوگوں کو لایا جائے گا ۔

      انہوں نے کہا کہ فضائیہ کا ایک سی 17 طیارہ ہندوستانیوں کو واپس لانے کیلئے بدھ کو علی الصبح چار بجے رومانیہ کیلئے اڑان بھر سکتا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: