علماء نےکیا سرکاری حکم کا استقبال، کہا- کوئی نہیں پڑھےگا سڑک پرنماز

علماء نےکہا کہ کچھ مٹھی بھرلوگ ملک کا ماحول خراب کرنا چاہتےتھے، لیکن نائب ضلع افسر کے حکم کے بعد اب یہ نہیں ہوگا۔

Jul 27, 2019 10:28 PM IST | Updated on: Jul 27, 2019 10:28 PM IST
علماء نےکیا سرکاری حکم کا استقبال، کہا- کوئی نہیں پڑھےگا سڑک پرنماز

حکومت کے فرمان کاعلما نے کیا استقبال۔

دیوبند کےعلماء نے حکومت کےاس حکم کا استقبال کیا ہے، جس میں سڑک پرنمازنہ پڑھنے کےلئےکہا گیا ہے۔ علماء کا کہنا ہےکہ یہ حکومت کا ایک اچھا قدم ہے، اس کا استقبال ہونا چاہئے۔ چاہے ہندوہوں یا مسلمان، دونوں کوہی سڑک پرکوئی بھی مذہبی انعقاد نہیں کرنا چاہئے۔

دیوبند کےعلماء نے کہا کہ کچھ مٹھی بھرلوگ ملک کا ماحول خراب کرنا چاہتےتھے، لیکن نائب ضلع افسرکے حکم کےبعد یہ نہیں ہوگا۔ حالانکہ علماء نےاس پرصفائی بھی دی۔ انہوں نے کہا کہ ڈی ایم علی گڑھ نے جواپنا بیان جاری کیا ہے، اس میں کہا کہ سڑک پرکوئی بھی مذہبی کام نہیں ہوگا، جیسےنمازپڑھی جاتی ہے۔ یا ہمارے ہندوبھائی کوئی اورپروگرام کرتے ہیں۔ توہم ڈی ایم صاحب کےاس حکم کی حمایت کرتے ہیں۔

Loading...

اتحادعلمائےہند کےعالم دین مفتی اسد نےمزید کہا کہ اس وقت میں ملک کے حالات ایسے ہیں کہ کچھ فرقہ پرست لوگ ملک کا ماحول بگاڑنےکی کوشش میں لگے ہیں۔ سڑک پرکوئی بھی مذہبی کام یا کوئی ہمارے ہندوبھائی پروگرام کرتےہیں اورفرقہ پرست لوگ اس کو بگاڑنےکا کام کرتے ہیں۔ تواس سے ملک کا ماحول خراب ہوتا ہے۔ توڈی ایم صاحب نے جو حکم جاری کیا ہے، ہم اس کی حمایت کرتے ہیں۔

دیویش تیاگی کی رپورٹ

Loading...