ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سی اے اے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچا اقوام متحدہ انسانی حقوق کمیشن ، ہندوستان نے دیا یہ جواب

یو این ایچ آر سی کے اس قدم کی مرکزی حکومت نے سخت مخالفت کی ہے اور کہا ہے کہ ہندوستان کی اقتدار اعلی سے جڑے موضوعات پر غیر ملکی فریق کاکوئی کردار نہیں ہوسکتا ہے۔

  • Share this:
سی اے اے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچا اقوام متحدہ انسانی حقوق کمیشن ، ہندوستان نے دیا یہ جواب
سپریم کورٹ

شہریت ترمیمی قانونی ( سی اے اے ) کے خلاف اقوام متحدہ انسانی حقوق کمیشن ( یو این یچ آر سی ) نے ہندوستان کی سپریم کورٹ کا دروازاہ کھٹکھٹایا ہے ۔ تاہم یو این ایچ آر سی کے اس قدم کی مرکزی حکومت نے سخت مخالفت کی ہے اور کہا ہے کہ ہندوستان کی اقتدار اعلی سے جڑے موضوعات پر غیر ملکی فریق کاکوئی کردار نہیں ہوسکتا ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے منگل کو نئی دہلی میں نامہ نگاروں سے کہا کہ جنیوا میں واقع ہندوستانی مشن نے کل شام اقوام متحدہ حقوقی انسانی کمیشن کو اطلاع دی ہے کہ ان کے دفتر نے شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے )2019 کے سلسلے میں ہندوستان کی سپریم کورٹ میں ایک مداخلت کی عرضی داخل کی ہے۔


انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ حقوق انسانی کمیشن نے کہا ہے کہ سی اے اے ہندوستان کا اندرونی معاملہ ہے اور یہ ہندوستانی پارلیمنٹ کے قانون بنانے کی آزادانہ اختیاروں سے جڑا موضوع ہے۔ ہمارا پختہ یقین ہے کہ ہندوستان کے اقتدار اعلی سے وابستہ موضوعات پر کسی بھی غیر ملکی فریق کا کوئی کردار نہیں ہے ۔


رویش کمار نے کہا کہ ہندوستان نے کہا ہے کہ ہمارا واضح مؤقف ہے کہ سی اے اے آئینی طور سے جائز ہے اورہمارے آئینی اقدار کی سبھی ضروریات پوری کرتا ہے ۔ یہ تقسیم کے سانحہ کی وجہ سے انسانی حقوق سے وابستہ مسائل پر ہماری طویل مدتی قومی عزم کا مظہر ہے۔ ترجمان نے بتایا کہ حکومت نے کہا ہے کہ ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے اور قانون کے مطابق چلتا ہے۔ ہماری آزاد عدلیہ پر ہمیں پورا اعتماد ہے اور اس کے تئیں مکمل احترام ہے ۔ ہمیں یقین ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلہ میں ہمارے اس آئینی مؤقف کی تصدیق ہوگی ۔


یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ 
First published: Mar 03, 2020 05:51 PM IST