ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سستا مکان، مہنگا ہوا موبائل، جانیں نرملا سیتا رمن کے بجٹ میں آپ کے لئے کیا ہے کچھ خاص

وزیر مالیات نرملا سیتا رمن نے 22-2021 کے لئے زرعی بجٹ میں اضافہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ نئے مالی سال میں اس سیکٹر کے لئے بجٹ کو 1.5 لاکھ کروڑ روپئے بڑھا دیا گیا ہے، جس کے بعد اب یہ 16.5 لاکھ کروڑ روپئے پر پہنچ گیا ہے۔

  • Share this:
سستا مکان، مہنگا ہوا موبائل، جانیں نرملا سیتا رمن کے بجٹ میں آپ کے لئے کیا ہے کچھ خاص
سستا مکان، مہنگا ہوا موبائل، جانیں نرملا سیتا رمن کے بجٹ میں آپ کے لئے کیا ہے کچھ خاص

نئی دہلی: مالی سال 22-2021 کے لئے آج وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت بجٹ پیش کر دیا ہے۔ کورونا بحران سے پہلے ہی سست پڑی معیشت کو رفتار دینے کے لئے اس بجٹ کو بے حد اہم مانا جا رہا تھا۔ کووڈ-19 وائرس کی وجہ سے پورے ملک میں لگائے گئے لاک ڈاون سے معیشت کو بھاری نقصان پہنچا ہے۔ جون 2020 سہ ماہی میں سال در سال آدھار پر اقتصادی ترقی کی شرح 23.9 فیصدی تک گر گیا تھا۔ اس بار کے بجٹ میں کئی ایسے بڑے اعلان کی امید کی جارہی ہے تاکہ عام آدمی سے لے کر کاروباری دنیا کو راحت مل سکے۔ ساتھ ہی معیشت کے سبھی پہیئے بھی رفتار پکڑ سکیں۔ زرعی قوانین کو لے کر مخالفت کے درمیان لوک سبھا میں وزیر مالیات نرملا سیتا رمن نے بجٹ پیش کرنا شروع کیا۔


زرعی قوانین پر ہنگامے کے درمیان کھیتی - کسان کے لئے اعلان: وزیر مالیات نرملا سیتا رمن نے 22-2021 کے لئے زرعی بجٹ میں اضافہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ نئے مالی سال میں اس سیکٹر کے لئے بجٹ کو 1.5 لاکھ کروڑ روپئے بڑھا دیا گیا ہے، جس کے بعد اب یہ 16.5 لاکھ کروڑ روپئے پر پہنچ گیا ہے۔ جاری مالی سال میں یہ 15 لاکھ کروڑ روپئے پر تھا۔


کفایتی گھروں کی سود شرح چھوٹ میں اضافہ: حکومت نے کفایتی ہاوسنگ پر سود کی شرح میں چھوٹ کو ایک سال کے مزید بڑھا دیا ہے۔ افارڈیبل ہاوسنگ اور رینٹل ہاوسنگ کو جولائی 2019 میں 1.5 لاکھ کی سود شرح کی راحت دی گئی تھی۔ ایسے میں اگر آپ گھر خرید رہے ہیں اور مارچ 2022 تک لون لیتے ہیں تو آپ کو اس چھوٹ کا فائدہ مل سکے گا۔


ٹیکس کے مورچے پر اعلان: 75 سال سے زیادہ عمر کے پینشن ہولڈروں کو انکم ٹیکس ریٹرن بھرنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ چھوٹے ٹیکس دہندگان کے لئے فیس لیس ڈسپیوٹ ریزولیشن میکنزم کو بڑھایا جائے گا۔ ٹیکس انویسٹیگیشن ری اوپن کرنے کی مدت کو 6 سال سے کم کرکے 3 سال کیا گیا ہے۔

مالی خسارے کا ہدف: حکومت نے مالی سال 2022 کے لئے مالی خسارے کا ہدف ملک کی جی ڈی پی کا 9.5 فیصدی پر رکھا ہے۔ ساتھ ہی، تخمینہ ہدف  کرنے کو 2 فیصد بڑھا کر 34.50 لاکھ کروڑ روپئے رکھا گیا ہے۔ وزیر مالیات نے یہ بھی کہا کہ حکومت کی کل دینے والی رقم کا تخمینہ 12 لاکھ کروڑ روپئے پر ہے۔ مالی سال 2026 تک مالی خسارے کا ہدف 4.5 فیصد سے کم کرنے کا ہے۔

گل اور پلیٹ فارم ورکرس کے لئے سوشل سیکورٹی بینیفٹس: وزیر مالیات نے گگ اور پلیٹ فارم ورکرس کے لئے سوشل سیکورٹی بینیفٹس اسکیم لانچ کرنے کا اعلان کیا۔ ان کے لئے مارجن منی کی ضرورت کو 15 فیصدی سے بڑھا کر 25 فیصد کرنے کا اعلان کیا ہے۔

مالی سال 2022 میں پورے ہوں گے سبھی وینیویش: ابھی تک پینڈنگ پڑے سبھی وینیویش پروسیس کو مالی سال 2022 میں پورا کرلیا جائے گا۔ اس سے موصول ہونے والی رقم کا ہدف 1.75 لاکھ کروڑ روپئے رکھا گیا ہے۔ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ وینیویش پلان میں ایئر انڈیا اور دو سرکاری بینک شامل ہے۔

کورونا ویکسین پر خرچ: کورونا انفیکشن سے نمٹنے اور کنٹرول کرنے کے مد نظر اعلان کیا کہ کورونا کی ویکسین کے لئے 35 ہزار کروڑ روپئے الاٹ کئے گئے ہیں۔ وزیر مالیات نے پارلیمنٹ میں کہا کہ اگر ضرورت پڑی تو مزید رقم الاٹ کئے جائیں گے۔ اس دوران وزیر مالیات نے یہ بھی کہا کہ سال 22-2021 کے لئے ہیلتھ سیکٹر کو 2.38 لاکھ روپئے تقسیم ہوں گے۔ ایسے میں ہیلتھ بجٹ گزشتہ سال کے مقابلے 135 کروڑ بڑھ گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی وزیر مالیات نے اعلان کیا ہے کہ وزیر اعظم آتم نربھر، صحتمند بھارت اسکیم پر 64,180 کروڑ روپئے خرچ کرنے کی تجویز ہے اور اس سال مشن پوشن 2.0 کی شروعات ہوگی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 01, 2021 03:40 PM IST