ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Kisan Andolan: سنگھو - غازی آباد اور ٹکری بارڈر پر انٹرنیٹ خدمات 31 جنوری تک کے لئے بند

Internet Services Suspended: وزارت داخلہ نے ان تینوں مقامات پر کسانوں کے بڑی تعداد میں جمع ہونے کے بعد انڈین ٹیلی گراف ایکٹ 1885کے تحت حاصل اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے سنیچر کی صبح گیارہ بجے سے 31جنوری صبح گیارہ بجے تک انٹرنیٹ خدمات عارضی طورپر بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

  • Share this:
Kisan Andolan: سنگھو - غازی آباد اور ٹکری بارڈر پر انٹرنیٹ خدمات 31 جنوری تک کے لئے بند
سنگھو - غازی آباد اور ٹکری بارڈر پر انٹرنیٹ خدمات 31 جنوری تک کے لئے بند

نئی دہلی: کسانوں کے دھرنے کے مقامات پر پھر سے جمع ہونے کے پیش نظر مرکزی وزارت داخلہ نے آج ایک بار پھر ہنگامی دفعات کا استعمال کرتے ہوے دارالحکومت کی سرحدوں سے متصل سندھو بارڈر، غازی پور اور ٹکری بارڈر علاقوں میں انٹرنیٹ خدمات عارضی طورپر دو دن کے لئے بند کردی ہیں۔ وزارت داخلہ نے ان تینوں مقامات پر کسانوں کے بڑی تعداد میں جمع ہونے کے بعد انڈین ٹیلی گراف ایکٹ 1885کے تحت حاصل اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے سنیچر کی صبح گیارہ بجے سے 31جنوری صبح گیارہ بجے تک انٹرنیٹ خدمات عارضی طورپر بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومت نے ا س سے پہلے گزشتہ26جنوری کو بھی ان علاقوں اور ان سے متصل قومی دارالحکومت کے علاقوں میں انٹرنیٹ خدمات عارضی طورپر بنبد کردی تھیں۔ وزارت داخلہ کے نئے احکامات میں کہا گیا ہے کہ سلامتی صورتحال کو قائم رکھنے اور کسی طرح کی ہنگامی حالت پیدانہ اس کو مد نظر رکھتے ہوئے سندھو، غازی پور اور ٹکری اوراس کے آس پاس کے قومی دارالحکومت کے علاقوں کے حصوں میں انٹرنیٹ خدمات عارضی طورپر بندکی جارہی ہیں۔



واضح رہے کہ یوم جمہوریہ کے دن ٹریکٹر ٹرالی کے دوران تشدد اور ہنگامہ کے بعد سے وزارت داخلہ نے پولیس کو حالات سے نپٹنے کے لئے سختی کرنے کے لئے کہا ہے۔ اس کے علاوہ ہنگامہ میں شامل لوگوں اور کچھ کسان لیڈروں کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کرائی گئی ہیں۔ پولیس اور انتظامیہ کی سختی کے بعد ایک بار پھر یہ لگا کہ یہ احتجاج یہیں تھم جائے گا۔ تاہم رات ڈھلتے ڈھلتے آندولن نے پھر اپنی شکل اختیار کرلی۔ غازی پور علاقے میں کسانوں کی زبردست بھیڑ جمع ہوچکی ہے۔




راکیش ٹکیٹ کو آر ایل ڈی کے ساتھ


وہیں انتظامیہ کے نشانے پر آئے کسان لیڈر راکیش ٹکیٹ کو آر ایل ڈی کا ساتھ ملا ہے۔ آر ایل ڈی لیڈر اجیت سنگھ نے راکیش ٹکیٹ سے بات کی ہے اور کہا ہے کہ آپ فکر مت کیجئے، سب آپ کے ساتھ ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ کسانوں نے فیصلہ لیا ہے کہ وہ غازی آباد انتظامیہ کے حکم کو عدالت میں چیلنج کریں گے اور اس بارے میں عرضی داخل کی جائے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ نے بھی پُرامن احتجاج کی اجازت دے دی ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Jan 30, 2021 04:48 PM IST