مرکزی وزیر پرکاش جاوڑیکر نے بتایا کیسے کم ہوئی دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی ، یہ ہے اصل وجہ

پرکاش جاوڈیکر نے کہا ہے کہ مودی حکومت نے اپنے دور اقتدار کے آغاز سے ہی فضائی آلودگی کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے اسے کنٹرول کرنے کے لئے كئی قدم اٹھائے ہیں ، جس کی وجہ سے قومی دارالحکومت اور ملک کے دیگر حصوں میں بھی ہوا کے معیار میں بہتری ہوئی ہے۔

Oct 07, 2019 08:32 PM IST | Updated on: Oct 07, 2019 08:32 PM IST
مرکزی وزیر پرکاش جاوڑیکر نے بتایا کیسے کم ہوئی دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی ، یہ ہے اصل وجہ

مرکزی وزیر پرکاش جاوڑیکر نے بتایا کیسے کم ہوئی دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی

ماحولیات، جنگلات اور موسمیاتی تبدیلی کے مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر نے کہا ہے کہ مودی حکومت نے اپنے دور اقتدار کے آغاز سے ہی فضائی آلودگی کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے اسے کنٹرول کرنے کے لئے كئی قدم اٹھائے ہیں ، جس کی وجہ سے قومی دارالحکومت اور ملک کے دیگر حصوں میں بھی ہوا کے معیار میں بہتری ہوئی ہے۔ پرکاش جاوڈیکر نے پیر کو یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ 2006 سے دہلی کی ہوا مسلسل خراب ہوتی جا رہی تھی ، لیکن 2014 تک اس بارے میں نہ تو بات کی گئی اور نہ ہی اس کو بہتر بنانے کے لئے زیادہ کام کیا گیا۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے اس معاملے میں 2015 میں انقلابی قدم اٹھاتے ہوئے ایئر کوالٹی انڈیکس شروع کئے اور ملک بھر میں بی ایس 4 معیار نافذ ہوا ، جس سے بھاری گاڑیوں ، بسوں اور ٹركوں سے نکلنے والا پارٹكیلیٹ میٹر 80 فیصد تک کم ہوا ۔ اب یکم اپریل 2020 سے گریڈ 6 ایندھن مارکیٹ میں آ جائے گا اور اس سے بھی گاڑیوں کی آلودگی میں کمی آئے گی ۔ اس پر حکومت نے 60 ہزار کروڑ روپے خرچ کئے ہیں۔

Loading...

وزیر ماحولیات نے کہا کہ ایسٹرن اور ویسٹرن ایکسپریس وے بنایا گیا ، جس کی وجہ سے اب روزانہ 40 ہزار ٹرک دہلی سے باہر سے نکل جاتے ہیں اور اس سے دارالحکومت میں ہونے والی آلودگی میں کمی آئی ہے ۔ پہلے یہ ٹرک دارالحکومت سے ہوکر گزرتے تھے اور ان سے کافی آلودگی پھیلتی تھی ۔ اس کے علاوہ حکومت نے موٹر گاڑی ایکٹ 2019 کو سختی سے نافذ کیا ہے ۔ دارالحکومت میں پہلے گاڑی آلودگی سرٹیفکیٹ پی يوسی روزانہ دس سے بارہ ہزار لوگ لیتے تھے ، لیکن اب قوانین سخت ہو جانے کی وجہ سے 40 سے 45 ہزار سرٹیفکیٹ روزانہ لئے جا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا میں بہترین نیٹ ورک دہلی میٹرو کا ہے۔ اب یہ ہریانہ، اتر پردیش تک جا رہا ہے۔ اس سے سڑکوں پر چار لاکھ گاڑیوں میں کمی آئی ہے ۔ صنعتوں سے آلودگی کم کرنے کے لئے بدرپور تھرمل پاور پلانٹ کو بند کیا گیا ، جس سے آٹھ ٹن پارٹیكلیٹ میٹر ، 44.7 ٹن سلفر ڈائی آکسائیڈ اور 128.4 ٹن نائٹروجن آکسائڈ کے اخراج میں کمی آئی ہے۔  انہوں نے کہا کہ تین ہزار اینٹ بھٹوں میں حیاتیاتی ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گیا ، جس سے آلودگی میں کمی آئی۔ حکومت نے کچرا کا نمٹارہ کے لئے کئی منصوبے لاگو کئے ہیں ، جس دہلی میں 52 میگاواٹ بجلی ابھی کچرا سے پیدا ہو رہی ہے۔ اس کے ساتھ ہی ویسٹ کمپوسٹ پلانٹ لگایا گیا ہے۔

Loading...