ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کوروناکی علامات ظاہرہونے کے بعدبھی اسپتال کی لاپرواہی:1متاثرہ خاتون سے19افرادبنے کوروناکاشکار

ان کے پڑوسی اور رشتے دار اور اسپتال کے اسٹاف سمیت 41 افراد کو فوری الگ تھلگ کرتے ہوئے انکا ٹیسٹ کیا گیا تو مرحومہ کے 17 رشتے دار اور اسپتال کے طبی اسٹاف کے دو اراکین کرونا مثبت پائے گئے ۔ جس کے بعد انتظامیہ نے مرحومہ کے گھر کے اطراف واکناف کے علاقوں کو ہاٹ اسپاٹ قراردیتے ہوئے لوگوں آمد روفت پر مکمل پابندی لگادی ہے۔

  • Share this:
کوروناکی علامات ظاہرہونے کے بعدبھی اسپتال کی لاپرواہی:1متاثرہ خاتون سے19افرادبنے کوروناکاشکار
حیدرآباد:کمیونٹی ٹرانسمیشن کا خطرہ؟

آخر وہی ہوا جس کا ڈر تھا ۔ انتظامیہ ، سرکاری و غیر سرکاری ادارے ، میڈیا ، سوشیل میڈیا اور دوسرے ذرائع سے عوام کو کورونا کے خطرہ سے واقف کروانے کے باوجود حیدرآباد کی ایک بیمار ضعیف خاتون کو باوجود علامات ظاہر ہونے کہ نہ انکے افراد خاندان بلکہ مقامی اسپتال کے ڈاکٹرس بھی اس نتیجہ پر نہ پہنچ سکے کہ یہ کورونا سے متاثر ہو سکتی ہیں ۔ چارمینار کے قریب تالاب کٹہ کی ایک خاتون گزشتہ کئی سالوں سے ذیابطیس اور گردہ سے متعلق امراض میں مبتلا تھیں اچانک انہیں پھیپڑوں میں تکلیف کی شکایت ہوئے تو انہیں ایک مقامی اسپتال میں شریک کروایا گیا۔


اسپتال میں ڈاکٹرس نے انکی بیماری کو پھیپڑوں کا انفیکشن قرار دیتے ہوئے انکا علاج کیا لیکن انہیں کوئی افاقہ نہیں ہوا اور ایک ہفتہ پہلے ان کا انتقال ہو گیا ۔ انکے انتقال کے بعد انکے swab کے نمونہ کو ٹیسٹ کیلئے بھیجا گیا ۔ اور جب رپورٹ کورونا پازیٹیو کی شکل میں سامنے آئی تو انتظامیہ نے فوری حرکت میں آکر اس کیس کی تحقیق شروع کی ان کے گھر میں رہنے والے اہل خانہ ، ان کے پڑوسی اور رشتے دار اور اسپتال کے اسٹاف سمیت 41 افراد کو فوری الگ تھلگ کرتے ہوئے انکا ٹیسٹ کیا گیا تو مرحومہ کے 17 رشتے دار اور اسپتال کے طبی اسٹاف کے دو اراکین کرونا مثبت پائے گئے ۔ جس کے بعد انتظامیہ نے مرحومہ کے گھر کے اطراف واکناف کے علاقوں کو ہاٹ اسپاٹ قراردیتے ہوئے لوگوں آمد روفت پر مکمل پابندی لگادی ہے۔


ان میں خواتین اور چھوٹے بچے بھی شامل ہیں ۔ سب حیران ہیں کہ پوری دنیا کی توجہ کورونا کی وباء پر ہونے کے باوجود جس اسپتال میں یہ خاتون زیرِ علاج وہاں کے ڈاکٹرس کیوں الرٹ نہیں ہوئے اور اس کیس کے بارے میں متعلقہ سرکاری محکمہ کو کیوں واقف نہیں کروایا ۔ یہ بھی معلوم کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے کہ کیا یہ خاتون کسی کرونا متاثر شخص سے رابطہ کی وجہ سے متاثر ہوئی تھی ۔ کورونا کی وباء پھوٹ پڑنے کے بعد حیدرآباد میں یہ دوسرا ایسا واقعہ ہے جس میں گھر کا ایک فرد متاثر ہونے کے بعد ان کےرشتے دار بھی متاثر ہوئے ہیں۔


خدشہ ہے کہ اگر احتیاط نہ برتی جائے تو حیدرآباد میں اسی طرح کے اور بھی واقعات رونما ہوں گے ۔ تلنگانہ کے وزیر صحت ایٹلا راجندر نے عوام سے اپیل کی کہ کورونا سے متاثر افراد سے رابطہ میں آنےوالے افراد خود سے آگے آگر متعلقہ اسپتالوں سے رجوع ہو جائیں۔ ایسا نہ ہو کہ سرکاری ادارے ان کا پتہ لگانے تک یہ اپنے گھر اور ان سے ملنے جلنے والوں کے لیے خطرہ بن جائیں ۔ انہوں نے متاثرہ افراد کے اعداد و شمار سے واقف کرواتے ہوئے کہا کہ حال ہی میں دہلی سے لوٹے6 افراد کی وجہ سے کل 81 افراد کورونا سے متاثر ہوئے جن میں زیادہ تر خود ان کے گھر والے ہیں۔
First published: Apr 20, 2020 09:24 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading