ہوم » نیوز » وطن نامہ

اناؤریپ کیس:متاثرہ کولکھنؤ سے دہلی منتقل کرنے پرپیرتک کےلئے روک

سپریم کورٹ نےاناؤعصمت دری معاملے کو بہترعلاج کےلئے دہلی منتقل کرنے کے فیصلے پرآج فوری طورپرروک لگادی گئی ہے۔عدالت نے،حالانکہ سکیورٹی وجوہات سے متاثرہ کے چچا کو جلد از جلد رائے بریلی کی جیل سے دہلی کی تہاڑ جیل منتقل کرنے کا حکم دیا ہے۔متاثرہ کے چچا نے عدالت کو خط لکھ کر جیل کے اندر جان کا خطرہ بتایا تھا۔

  • Share this:
اناؤریپ کیس:متاثرہ کولکھنؤ سے دہلی منتقل کرنے پرپیرتک کےلئے روک
آئین کی نظر میں سبھی آستھائیں (عقیدے) یکساں ہیں۔ کورٹ آستھا نہیں ثبوتوں پرفیصلہ دیتا ہے۔

سپریم کورٹ نےاناؤعصمت دری معاملے کو بہتر علاج کےلئے دہلی منتقل کرنے کے فیصلے پرآج فوری طورپر روک لگادی گئی ہے۔عدالت نے،حالانکہ سکیورٹی وجوہات سے متاثرہ کے چچا کو جلد از جلد رائے بریلی کی جیل سے دہلی کی تہاڑ جیل منتقل کرنے کا حکم دیا ہے۔متاثرہ کے چچا نے عدالت کو خط لکھ کر جیل کے اندر جان کا خطرہ بتایا تھا۔


جسٹس رنجن گوگوئی اور جسٹس دیپک گپتا کی بینچ نے متاثرہ کی حالت اور اس کی ماں کی بات کو توجہ میں رکھتے ہوئے اسے علاج کے لئے فی الحال دہلی منتقل نہ کئے جانے کا فیصلہ کیا ہے۔عدالت نے کہا کہ متاثرہ کی حالت میں بہتری ہونے کے بعد اسے دہلی منتقل کیا جاسکتا ہے،لیکن اس پر پیر کو فیصلہ کیا جائےگا۔


متاثرہ کی ماں نے بینچ کو بتایا کہ وہ اپنی بیٹی کا علاج لکھنؤ کے کنگ جارج میڈیکل کالج میں ہی جاری رکھنا چاہتی ہیں وہ علاج کے لئے اسے دہلی منتقل نہیں کرنا چاہتیں۔سالیسیٹرجنرل تشار مہتا نے کہا کہ متاثرہ کا کنبہ یہ نہیں چاہتا ہے کہ اسےدہلی منتقل کی جائے۔خاندان کا کہنا ہے کہ متاثرہ کو ابھی تک ہوش بھی نہیں آپایا ہے تو اس کا علاج لکھنؤمیں ہی ہو۔

First published: Aug 02, 2019 03:08 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading