உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Firing on Owaisi:اسدالدین اویسی پرحملے کے ملزمین سے پولیس کی پوچھ تاچھ،کیےگئےکئی نئےانکشافات

    Youtube Video

    اسدالدین اویسی اس حملے میں بال بال بچ گئے ۔ حملے کے بعد دہلی پہنچے اسدالدین اویسی نے کہا کہ ہم مودی حکومت اور ریاستی حکومت دونوں سے آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ کیسے ہوسکتا ہے کہ اےممبر پارلیمنٹرین 4 راؤنڈ فائر کیے گئے۔

    • Share this:
      لکھنؤ۔ اس وقت کی سب سے بڑی خبر اتر پردیش سے سامنے آرہی ہے۔ اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی (Asaduddin Owaisi)کے قافلے پر جمعرات کی شام حملہ کیا گیا۔ اویسی کا دعویٰ ہے کہ حملہ آوروں نے 3 سے 4راؤنڈگولیاں چلائی تھیں۔ اس حملے میں اسدالدین اویسی بال بال بچ گئے۔ اس معاملے میں اتر پردیش پولیس (UP Police)نے اسد الدین اویسی کی گاڑی پر فائرنگ کرنے والے دو ملزمین کو پکڑ لیا۔ دونوں ملزمان نے پولیس کی تفتیش میں چونکا دینے والے انکشافات کیے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے ملزم سچن (Sachin)اور شبھم (Shubham)نے بتایا کہ اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی نے سال 2013-14 میں رام مندر کے بارے میں بیان دیا تھاجس کی وجہ سے انہیں تکلیف ہوئی تھی۔ اس لیے انہوں نے اسدالدین اویسی کے قافلے پر حملہ کرنے کا فیصلہ کیاہے اور اسے انجام بھی دیا۔

      اتر پردیش پولیس کے اے ڈی جی (Law & Order) پرشانت کمار نے جمعہ کو کہا کہ ملزمین نے پوچھ گچھ کے دوران بتایا کہ انہیں اسد الدین اویسی کے سال 2013-14 میں رام مندر کے بارے میں دیے گئے بیان سے تکلیف ہوئی ہے۔یوپی پولیس کے ایک سینئر افسر نے کہا کہ گرفتار ملزم سچن اور شبھم کو اسدالدین اویسی کے مخصوص مذہب کے خلاف بیانات سے کافی دکھ ہوا ہے۔ اسی وجہ سے اس نےانہوں نے اسدالدین اویسی پر حملہ کرنے کا فیصلہ کیاتھا۔ بتا دیں کہ گرفتار ملزمین میں سچن گوتم بدھ نگر کا رہنے والا ہے اور شبھم سہارنپور کا رہنے والا ہے۔ سچن سے 9 ایم ایم کا غیر قانونی آتشیں اسلحہ بھی برآمد کیاگیاہے۔ اتر پردیش پولیس نے اس واقعہ کی مکمل رپورٹ الیکشن کمیشن اور لوک سبھا کو بھیج دی ہے۔

       


      یوپی چناؤ: میرٹھ کے چھجرسی ٹول پلازہ کے قریب اسد الدین اویسی کی گاڑی پر فائرنگ، بال بال بچ گئے

      اسدالدین اویسی کی گاڑی پر ہاپوڑ کے پلکھوا میں چھجرسی ٹول پلازہ پر حملہ کیا گیا۔ اسدالدین اویسی اس حملے میں بال بال بچ گئے ۔ حملے کے بعد دہلی پہنچے اسدالدین اویسی نے کہا کہ ہم مودی حکومت اور ریاستی حکومت دونوں سے آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ کیسے ہوسکتا ہے کہ اےممبر پارلیمنٹرین 4 راؤنڈ فائر کیے گئے۔ اسد الدین اویسی نے مزید کہا کہ کچھ دیر پہلے ایڈیشنل ایس پی سے بات ہوئی تھی انہوں نے کہا ہے کہ ایک شخص پکڑا گیا ہے۔اسدالدین اویسی نے کہا کہ ہم الیکشن کمیشن سے درخواست کرتے ہیں کہ اس معاملے کی آزادانہ تحقیقات کرائی جائیں۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: