உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP Budget 2022:اترپردیش حکومت کے بجٹ کو مایاوتی نے بتایا آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف تو اکھلیش نے کہا-بجٹ نہیں،بٹوارہ

    یوگی حکومت کے بجٹ پر مایاوتی اور اکھلیش یادو کا آیا ری ایکشن۔

    یوگی حکومت کے بجٹ پر مایاوتی اور اکھلیش یادو کا آیا ری ایکشن۔

    UP Budget 2022: بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے ریاست کی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کی دوسری میعاد کے پہلے بجٹ کو آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف قرار دیا ہے، جب کہ سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو نے اسے تقسیم قرار دیا۔

    • Share this:
      UP Budget 2022 : اتر پردیش کی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت نے جمعرات کو قانون ساز اسمبلی کے بجٹ اجلاس میں اپنا بجٹ پیش کیا۔ اس بجٹ پر اپوزیشن جماعتوں نے اپنے شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

      بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے ریاست کی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کی دوسری میعاد کے پہلے بجٹ کو آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف قرار دیا ہے، جب کہ سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو نے اسے تقسیم قرار دیا ہے۔ یوگی آدتیہ ناتھ حکومت نے جمعرات کو مالی سال 2022-23 کا بجٹ پیش کیا۔ یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کی دوسری میعاد کا پہلا بجٹ چھ لاکھ 15 ہزار 518 کروڑ روپے ہے۔

      بہوجن سماج پارٹی کی صدر مایاوتی نے یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کے بجٹ کے اعلان کے فوراً بعد اپنا ردعمل دیا۔ مایاوتی نے بجٹ کو لے کر دو ٹویٹ کیے ہیں۔ اتر پردیش کی سابق وزیر اعلیٰ مایاوتی نے کہا کہ اتر پردیش کی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کا بجٹ پہلی نظر میں وہی گھسا پیٹا اور ناقابل یقین ہے۔ یہ بجٹ مفاد عامہ اور عوامی بہبود بالخصوص غربت، بے روزگاری اور ریاست کی قابل رحم حالت کے معاملے میں ایک اندھے کنویں کی مانند ہے۔ جس کی وجہ سے عوام کی تنگدستی سے نجات کے امکانات مسلسل معدوم ہوتے جارہے ہیں۔


      بی ایس پی سربراہ نے سوال کیا کہ وہ بنیادی کام ہونے چاہیے تھے وہ کہاں ہیں جو اتر پردیش کے کروڑوں لوگوں کی زندگیوں میں تھوڑے اچھے دن لانے کے لیے نام نہاد ڈبل انجن والی حکومت کو ترجیحی بنیادوں پر کرنا چاہیے تھا۔ اگر یہ واضح طور پر نیت کی کمی ہے تو پھر ایسی پالیسی کہاں سے بنے گی۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کا یہ حکومتی کھیل کب تک چلے گا۔


      یہ بھی پڑھیں:
      Gyanvapi Case: عدالت میں سماعت شروع، ہندو فریق نے شیولنگ کو نقصان پہنچانے کا لگایا الزام

      یہ بھی پڑھیں:
      Amreena Bhat کا قتل، بہنوئی نے بتائی واردات کی کہانی، شوٹنگ کیلئے بلایا اور پھر۔۔۔

      ایس پی سربراہ اکھلیش یادو نے بجٹ پیش ہونے کے بعد میڈیا سے کہا کہ حکومت نے ہمیشہ دعویٰ کیا ہے کہ کسانوں کی آمدنی دوگنی ہو جائے گی لیکن اب تک ایسا نہیں ہوا۔ انہوں نے روزگار کے معاملے پر بھی حکومت پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ اعلانات میں نوکریوں کے دعوے تو کیے جاتے ہیں لیکن حقیقت میں ایسا کہیں نظر نہیں آتا۔ ساتھ ہی انہوں نے بجٹ پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ بچوں کی تعلیم کے لیے کوئی اعلان نہیں کیا گیا ہے۔اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے بھی بجٹ کو لے کر اپنا ردعمل ٹوئٹ کیا۔ اکھلیش یادو نے کہا کہ کہنے کو یہ حکومت کا چھٹا بجٹ ہے، لیکن اس میں کچھ بڑھانہیں ہے، سب کچھ گھٹ گیا ہے۔ اس میں عوامی موقف غائب ہے، صرف سرکاری محکموں کے وارے نیارے ہیں، دراصل یہ بجٹ نہیں بٹوارہ ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: