ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

یوگی کے وزیر نے سوشل ڈیسٹنسنگ کی اڑائی دھجیاں، کورونا اسپتال میں لگایا پارٹی کارکنان کا ہجوم

الہ آباد میں کورونا پازیٹیو کے سنگین مریضوں کے لئے سروپ رانی اسپتال میں خصوصی طور سے بنائےگئے وارڈوں کے معائنے میں موقع پر ریاستی وزیر سریش کھنہ کی طرف سے سماجی فاصلوں کی سخت خلاف ورزیاں سامنے آئی ہیں۔

  • Share this:
یوگی کے وزیر نے سوشل ڈیسٹنسنگ کی اڑائی دھجیاں، کورونا اسپتال میں لگایا پارٹی کارکنان کا ہجوم
یوگی کے وزیر نے سوشل ڈیسٹنسنگ کی اڑائی دھجیاں، کورونا اسپتال میں لگایا پارٹی کارکنان کا ہجوم

الہ آباد: ایک طرف جہاں یو پی میں کورونا مریضوں کی تعداد میں  دن بہ دن  اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ وہیں دوسری جانب یوگی حکومت کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن سریش کھنہ نے سماجی فاصلوں کی دھجیاں اڑاکر رکھ دی ہیں۔ الہ آباد میں کورونا پازیٹیو کے سنگین مریضوں کے لئے سروپ رانی اسپتال میں خصوصی طور سے بنائے گئے وارڈوں کے معائنے میں موقع پر ریاستی وزیر سریش کھنہ کی طرف سے سماجی فاصلوں کی سخت خلاف ورزیاں سامنے آئی ہیں۔


دراصل کورونا اسپتال دورے کے موقع پر سریش کھنہ کے ساتھ ساتھ بڑی تعداد میں پارٹی کارکنان بھی اسپتال پہنچ گئے۔ اس ہجوم  میں مقامی ایم ایل اے ہرش وردھن واجپئی اور پارٹی کے عہدیداران بھی شامل تھے۔ حالت یہاں تک پہنچ گئی کہ   اسپتال کے اندر پارٹی کارکنان کا ہجوم اس قدر ہوگیا کہ ڈیوٹی پر تعینات ڈاکٹرس بھی کنارے  ہٹ گئے۔ بھاری ہجوم کے درمیان پارٹی کارکنان نے ہی وزیر سریش کھنہ کو پورے اسپتال کا معائنہ کرایا۔


یوگی حکومت کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن سریش کھنہ نے سماجی فاصلوں کی دھجیاں اڑاکر رکھ دی ہیں۔ علامتی تصویر
یوگی حکومت کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن سریش کھنہ نے سماجی فاصلوں کی دھجیاں اڑاکر رکھ دی ہیں۔ علامتی تصویر


اس دوران پارٹی کارکنان وزیر سریش کھنہ سے اپنی قربت بڑھانے کے کوشش بھی کرتے رہے۔ خود سریش کھنہ نے اس بات کا بھی خیال نہیں رکھا کہ وہ جس اسپتال کا معائنہ کرنے آئے ہیں وہ کورونا پازیٹیو کے سنگین مریضوں  کےلئے مخصوص کیا گیا ہے۔ اس سے پہلے سریش کھنہ کے سروپ رانی اسپتال آمد کے موقع پر میڈیکل کالج کے پرنسپل ڈاکٹر ایس پی سنگھ  نے ان کا خیر مقدم کیا، لیکن بی جے پی عہدیداران اور مقامی کارکنان کی بھاری بھیڑ کو دیکھتے ہوئے جلد ہی ڈاکٹر ایس پی سنگھ نے خود کو ہجوم سے اپنے کو الگ کرلیا۔ سریش کھنہ پارٹی کارکنان کے ساتھ انتہائی نگہداشت والے وارڈوں میں داخل ہوگئے۔ ان وارڈوں میں پی پی ای کٹ کے ساتھ ہی جانےکی جازت ہے۔

بعد میں میڈیا نے جب  اس بارے میں سریش کھنہ سے سوال کیا گیا تو انہوں نے سرے سے اس سوال کو ہی ٹال دیا۔ بلکہ میڈیا کو کوئی سیدھا جواب نہ دے کر یوگی حکومت کے منصوبوں کی تفصیل بتاتے رہے۔ میڈیا سے بات کرتے وقت خود انہوں نے کئی بار اپنے ہاتھوں سے چہرے کو چھوا۔ جبکہ کورونا مریضوں کے وارڈوں سے نکلنےکے بعد انہیں اپنے ہاتھوں کو پہلے سینیٹائزڈ کرنا چاہئے تھا۔ یوگی حکومت کےکابینی وزیر کی جانب سے سماجی فاصلے اور کووڈ کی گائڈ لائن کی یوں سر عام دھجیاں اڑنے سے اب کئی سوال پیدا ہو گئے ہیں۔
First published: Jun 26, 2020 06:43 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading