உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لکھیم پور کھیری کے لئے نکلیں پرینکا گاندھی کو پولیس نے حراست میں لیا، کانگریسیوں کا احتجاج جاری

    لکھیم پوری کھیری کے لئے نکلیں پرینکا گاندھی کو پولیس نے حراست میں لیا

    لکھیم پوری کھیری کے لئے نکلیں پرینکا گاندھی کو پولیس نے حراست میں لیا

    Lakhimpur Kheri Violence: لکھیم پور کھیری (Lakhimpur Kheri Violence) میں ہوئے پُرتشدد جھڑپ کے بعد پانچ گھنٹے کی آنکھ مچولی کے بعد پولیس نے پرینکا گاندھی (Priyanka Gandhi Vadra) کو ہرگاوں سے حراست میں لیا۔ فی الحال پرینکا گاندھی کو پولیس لائن لے جایا گیا ہے۔

    • Share this:
      سیتا پور: اترپردیش کے لکھیم پور کھیری میں ہوئے پُرتشدد (Lakhimpur Kheri Violence) حادثہ کے بعد کانگریس کی قومی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا (Priyanka Gandhi Vadra) نے اتوار کی دیر شام لکھیم پور کھیری کے لئے کوچ کیا۔ پرینکا گاندھی کے لکھیم پور کھیری جانے کی اطلاع پر سیتا پور ضلع اور پولیس انتظامیہ ہائی الرٹ موڈ پر آگئی۔ پرینکا گاندھی کے اٹونجا ٹول پار کئے جانے کی اطلاع ملتے ہی ڈی ایم وشال بھاردواج اور ایس پی آر پی سنگھ حرکت میں آگئے اور دونوں ہی افسر بھاری پولیس اور پی اے سی فورس کے ساتھ خیرآباد ٹول پلازہ پر پہنچ گئے۔ پرینکا گاندھی کے قافلے کو روکنے کے لئے پولیس انتظامیہ نے ٹول پلازہ کے چپے چپے پر پولیس اور پی اے سی کے جوانوں کو تعینات کردیا۔ اتنا ہی نیہں انتظامیہ نے ٹول بیریئر پر سبھی لائنوں پر ٹرکوں کو قطار بند طریقے سے کھڑا کرکے راستے کو روک دیا۔ باوجود اس کے پرینکا گاندھی نہیں ملیں۔ پانچ گھنٹے کی آنکھ مچولی کے بعد پولیس نے پرینکا گاندھی کو ہر گاوں سے حراست میں لیا۔ فی الحال پرینکا گاندھی کو پولیس لائن لے جایا گیا ہے۔

      دوسری جانب پرینکا گاندھی کو حراست میں لینے سے کانگریسی کارکنان مشتعل ہوگئے۔ ان کی پولیس سے نوک جھونک بھی ہوئی۔ ایم ایل سی دیپک سنگھ پی اے سی دوسری بٹالین کے باہر دھرنے پر بیٹھ گئے۔ دوسری جانب حراست میں لئے جانے کی اطلاع ملتے ہی کانگریس کے ریاستی صدر اجے کمار للو بھی سیتا پور پہنچ گئے۔ انہوں نے بی جے پی حخومت پر حملہ بولتے ہوئے کہا کہ جب سے بی جے پی کی حکومت آئی ہے، تب سے کسانوں پر ظلم ہوا ہے۔

      پولیس کو چکمہ دے کر نکلی تھیں پرینکا

      اس سے قبل پرینکا گاندھی کے لکھیم پور کھیری جانے کی اطلاع ملی تو لکھنو پولیس نے انہیں کال ہاوس میں نظر بند کرتے ہوئے پولیس فورس کو تعینات کردیا گیا۔ پرینکا نے اس کی وجہ بھی پوچھی اور پیدل ہی نکل پڑیں۔ اس کے بعد وہ بالو اڈے سے ساڑی میں بیٹھ کر لکھیم پور کھیری کے لئے روانہ ہوگئیں۔ اس کی اطلاع ملتے ہی سیتا پور ضلع اور پولیس انتظامیہ محتاط ہوگیا۔ آخر پانچ گھنٹے کی آنکھ مچولی کے بعد انہیں ہرگاوں سے حراست میں لیا گیا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: