உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP Violence: جمعہ کی نمازکے بعد ہوئے تشدد میں اب تک 306 افراد گرفتار، دیکھئے ضلع وار اعداد و شمار

    UP Violence: جمعہ کی نمازکے بعد ہوئے تشدد میں اب تک 306 افراد گرفتار، دیکھئے ضلع وار اعداد و شمار ۔ تصویر : ANI

    UP Violence: جمعہ کی نمازکے بعد ہوئے تشدد میں اب تک 306 افراد گرفتار، دیکھئے ضلع وار اعداد و شمار ۔ تصویر : ANI

    UP Violence: اتر پردیش پولیس نے نو اضلاع میں نماز جمعہ کے بعد ہوئے تشدد کے سلسلے میں اب تک 306 افراد کو گرفتار کیا ہے۔

    • Share this:
      لکھنؤ: اتر پردیش پولیس نے نو اضلاع میں نماز جمعہ کے بعد ہوئے تشدد کے سلسلے میں اب تک 306 افراد کو گرفتار کیا ہے۔ دراصل بی جے پی کی معطل ترجمان نوپور شرما اور پارٹی کی دہلی اکائی سے معطل میڈیا انچارج نوین جندل کے تبصرہ کے خلاف احتجاج کے دوران ہوئے تشدد میں کئی پولس اہلکار بھی زخمی ہوئے تھے ، عوامی اور سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا گیا تھا ۔ یوپی کے نو اضلاع میں اس تشدد کے سلسلہ میں اب تک 13 ایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔

       

      یہ بھی پڑھئے: شیو سینا لیڈر سنجے راوت نے مرکزی حکومت پر نشانہ سادھا


      یوپی پولیس کے مطابق جمعہ کے تشدد میں اب تک 306 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ اس دوران سہارنپور میں 71، ہاتھرس میں 51، امبیڈکر نگر میں 34، پریاگ راج میں 92، مراد آباد میں 35، فیروز آباد میں 15، علی گڑھ میں 6 اور جالون میں 2 کو گرفتار کیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی لکھیم پور کھیری کا ایک ملزم پولیس کی گرفت سے باہر ہے۔ یہاں ایک ہی ملزم کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی تھی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: سونیا گاندھی کو گنگارام اسپتال میں کیا گیا داخل، کورونا انفیکشن کے سبب ہو رہی ہے پریشانی


      یوپی کے اے ڈی جی لا اینڈ آرڈر پرشانت کمار کے مطابق نماز جمعہ کے بعد نو اضلاع میں تشدد کے واقعات پیش آئے تھے۔ پریاگ راج اور سہارنپور میں تین تین، فیروز آباد، علی گڑھ، ہاتھرس، مراد آباد، امبیڈکر نگر، کھیری اور جالون میں ایک ایک ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ اس کے ساتھ انہوں نے بتایا کہ اب تک 306 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ۔

      وہیں وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے پولیس اور انتظامی افسران کو 3 جون کو کانپور ضلع میں اور مختلف اضلاع میں نماز جمعہ کے بعد ہوئے تشدد کا نوٹس لیتے ہوئے سخت کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شرپسندوں کے خلاف کارروائی جاری رکھی جائے اور کارروائی ایسی ہونی چاہئے کہ سماج دشمن سوچ رکھنے والے تمام عناصر کے لئے مثال بن جائے اورماحول کو خراب کرنے کا کوئی سوچ بھی نہ سکے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: