உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    میڈیکل ریکارڈکولنک کرنے کےلیے یو پی آئی کی طرز'ہیلتھ آئی ڈی' شروع، ہیلتھ آئی ڈی کیاہوگا؟جانئے تفصیلات

    وزیر اعظم نریندر مودی Narendra Modi کی جانب سے پیر کو لانچ کی گئی ہیلتھ آئی ڈی لوگوں کے صحت کے ریکارڈ کو اس سے جوڑ دے گی جسے وہ ڈاکٹروں ، ہیلتھ سروس فراہم کرنے والوں کے ساتھ آسانی سے اپنی خدمات تک رسائی کے لیے شیئر کر سکتے ہیں۔

    وزیر اعظم نریندر مودی Narendra Modi کی جانب سے پیر کو لانچ کی گئی ہیلتھ آئی ڈی لوگوں کے صحت کے ریکارڈ کو اس سے جوڑ دے گی جسے وہ ڈاکٹروں ، ہیلتھ سروس فراہم کرنے والوں کے ساتھ آسانی سے اپنی خدمات تک رسائی کے لیے شیئر کر سکتے ہیں۔

    وزیر اعظم نریندر مودی Narendra Modi کی جانب سے پیر کو لانچ کی گئی ہیلتھ آئی ڈی لوگوں کے صحت کے ریکارڈ کو اس سے جوڑ دے گی جسے وہ ڈاکٹروں ، ہیلتھ سروس فراہم کرنے والوں کے ساتھ آسانی سے اپنی خدمات تک رسائی کے لیے شیئر کر سکتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      یو پی آئی UPI کی طرح 'ہیلتھ آئی ڈی' Health ID میڈیکل ریکارڈ کو لنک کرنے کے لیے شروع کی گئی۔جبکہ جلدہی زرعی ، قانونی شعبوں کے لیے یوپی آئی اور 'ہیلتھ آئی ڈی' کی طرز پر ایک منفرد آئی ڈی کی خدمات شروع کی جائے گی۔

      ایک سینئر حکومتی عہدیدار نے منگل کو بتایا کہ حکومت قانونی ، زراعت اور لاجسٹکس سمیت کئی شعبوں میں ہیلتھ آئی ڈی سسٹم تیار کرنے کی تیاری کر رہی ہے تاکہ لوگوں کے لیے متعلقہ ماحولیاتی نظام میں معلومات تک رسائی اور ان کا اشتراک آسان ہو۔

      وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے پیر کو لانچ کی گئی ہیلتھ آئی ڈی لوگوں کے صحت کے ریکارڈ کو اس سے جوڑ دے گی جسے وہ ڈاکٹروں ، ہیلتھ سروس فراہم کرنے والوں کے ساتھ آسانی سے اپنی خدمات تک رسائی کے لیے شیئر کر سکتے ہیں۔

      آئی ٹی سکریٹری اجے پرکاش ساہنی نے NPCI-IAMAI کے زیر اہتمام گلوبل فنٹیک فیسٹیول میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ایک صحت مند ماحولیاتی نظام کی تعمیر کے پیچھے وزن ڈالنے والی ہے اور UPI مالی جگہ میں صحت مند ماحولیاتی نظام کی طرف ایسی ہی ایک کوشش کی نمائندگی کرتا ہے۔

      انہوں نے کہا کہ ہیلتھ آئی ڈی لوگوں کو ہیلتھ انڈسٹری ماحولیاتی نظام میں خدمات کی پوری حد تک رسائی میں مدد دے گی کیونکہ یہ ایک ایسے پلیٹ فارم سے منسلک ہے جو ڈاکٹروں ، طبی پیشہ ور افراد ، حکومت وغیرہ کو جوڑتا ہے۔ ایسا ہی کچھ زراعت میں ہو رہا ہے۔

      اسی طرح کی چیزیں لاجسٹکس میں ہونے کا امکان ہے۔ کچھ ایسا ہی ہو رہا ہے جو عدالتی نظام ، انصاف کا نظام لانا اور اسے پولیسنگ کے ساتھ جوڑنا ہے تاکہ باہمی تعاون سے مجرمانہ انصاف کا نظام رونما ہو سکے۔

      کارپوریٹس نے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر اختلاف کو دبانے کے لیے حق اشاعت کے قانون کا غلط استعمال کرنے کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں سہنی نے کہا کہ ہم توقع کرتے ہیں کہ تمام کمپنیاں اور کارپوریشنز خاص طور پر جب وہ ہندوستان کے جغرافیہ میں کام کر رہے ہوں تو زمین کے قانون کا احترام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے طریقوں سے لوگوں کے متاثر ہونے کی مخصوص مثالوں کو موجودہ قوانین کے تحت مناسب کارروائی کے لیے جانچ پڑتال کی جا سکتی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: