پارلیمنٹ میں اتراکھنڈ معاملہ پر ہنگامہ جاری،وزیر اعظم مودی کے خلاف لگے جم کر نعرے

نئی دہلی۔ اتراکھنڈ معاملے پر آج بھی پارلیمنٹ میں جم کر ہنگامہ مچا۔

Apr 26, 2016 12:35 PM IST | Updated on: Apr 26, 2016 08:24 PM IST
پارلیمنٹ میں اتراکھنڈ معاملہ پر ہنگامہ جاری،وزیر اعظم مودی کے خلاف لگے جم کر نعرے

نئی دہلی۔ اتراکھنڈ معاملے پر آج بھی پارلیمنٹ میں جم کر ہنگامہ مچا۔ کانگریس ممبران پارلیمنٹ نے وزیر اعظم مودی کے خلاف آج بھی نعرے بازی کی۔ کانگریس ممبران پارلیمنٹ ویل تک آ گئے اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کرنے لگے۔ اسے دیکھتے ہوئے ایوان 12 بجے تک ملتوی کر دیا  گیا۔

اپوزیشن لیڈر آنند شرما نے سوال اٹھایا کہ اگرچہ معاملہ کورٹ میں ہے، لیکن اس طرح کے معاملات میں بھی ایوان میں بحث کرائے جانے کے قوانین ہیں۔ اپوزیشن کے شور شرابے کے درمیان ارون جیٹلی نے کہا کہ اتراکھنڈ میں حکومت اقلیت میں آگئی تھی۔ 68 سال کی تاریخ میں یہ پہلی بار ہوا جب 67 میں سے 35 ممبران پارلیمنٹ نے لکھ کر دیا کہ وہ حکومت کے خلاف ہیں۔

Loading...

جاری کیا وہپ

آج بی جے پی اور کانگریس نے اپنے اپنے ممبران پارلیمنٹ کو ایوان میں موجود رہنے کا وہپ جاری کیا ہے۔ بی جے پی نے جمعہ تک دونوں ایوانوں میں اپنے تمام ممبران پارلیمنٹ کو موجود رہنے کا وہپ جاری کیا ہے۔ تو کانگریس نے آج راجیہ سبھا میں اپنے تمام ارکان پارلیمنٹ کے لئے وہپ جاری کر دیا ہے۔

بتا دیں کہ پیر کو شروع ہوا پارلیمنٹ کا اجلاس اتراکھنڈ پر ہنگامہ کی نذر چڑھ گیا۔ پارلیمنٹ سیشن میں اتراکھنڈ مسئلے کو لے کر دونوں ایوانوں میں زوردار ہنگامہ مچا۔ اپوزیشن نے دونوں ایوانوں میں حکومت کو گھیرا اور جم کر نعرے بازی کی۔ اس دوران راجیہ سبھا میں کانگریس نے پوسٹر بھی لہرائے۔

پیر کو ایک طرف جہاں راجیہ سبھا میں کارروائی شروع ہوتے ہی کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد نے ایوان میں اتراکھنڈ پر بحث کرائے جانے کا مطالبہ کیا وہیں دوسری طرف لوک سبھا میں بھی اس پر زبردست ہنگامہ مچا۔ کانگریس نے زور دار طریقے سے اتراکھنڈ کا مسئلہ اٹھایا۔ اپوزیشن لیڈر ملکا ارجن کھڑگے نے کہا کہ جہاں جہاں اپوزیشن کی حکومت ہے وہاں حکومت کو غیر مستحکم کیا جا رہا ہے۔

Loading...