உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    گاوں میں رہ کر سیرت فاطمہ نے یو پی ایس سی میں حاصل کی کامیابی ، مسلم خواتین کیلئے بنیں ایک مشعل راہ

    یو پی ایس سی میں 810 ویں رینک حاصل کرنے والی الہ آباد کی سیرت فاطمہ نے ایک طویل جد جہد کے بعد یہ مقام حاصل کیا ہے ۔

    یو پی ایس سی میں 810 ویں رینک حاصل کرنے والی الہ آباد کی سیرت فاطمہ نے ایک طویل جد جہد کے بعد یہ مقام حاصل کیا ہے ۔

    یو پی ایس سی میں 810 ویں رینک حاصل کرنے والی الہ آباد کی سیرت فاطمہ نے ایک طویل جد جہد کے بعد یہ مقام حاصل کیا ہے ۔

    • Share this:
      الہ آباد : یو پی ایس سی میں 810 ویں رینک حاصل کرنے والی الہ آباد کی سیرت فاطمہ نے ایک طویل جد جہد کے بعد یہ مقام حاصل کیا ہے ۔سیرت فاطمہ کا تعلق درو دراز کے دیہی علاقے سے ہے ۔گاؤں میں رہ کر انہوں نے جو غیر معمولی کا میابی حاصل کی ہے وہ مسلم خواتین کے لئے ایک مشعل راہ ہے ۔
      الہ آباد میں واقع سیرت فاطمہ کا نو تعمیر شدہ مکان ان دنوں لوگوں کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے ۔گاؤں سے نئے مکان میں شفت ہونے کے بعد ان کو پہلی خوش خبری ملی ۔سیرت فاطمہ کا تعلق الہ آباد سے پچاس کلو میٹر دور جسرا گاؤں سے ہے ۔ انہوں نے کالج تک کی تعلیم اپنے گاؤ سے ہی حاصل کی ۔سیرت فاطمہ کو بچپن سے ہی آئی اے ایس بننے کی خواہش تھی ۔
      سیرت فاطمہ کے گھر مبارک باد دینے والوں کو سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے ۔یو پی ایس سی میں ان کے انتخاب سے ان کی خوشی کا ٹھکانا نہیں ہے ۔سیرت فاطمہ کے والدین کا کہنا ہے کہ ان کو پورا یقین تھا کہ ان کی ہونہار بیٹی سول سروس کے امتحان میں ضرور کامیاب ہوگی۔
      سیرت فاطمہ کا تعلق ایک متوسط مسلم خاندان سے ہے ۔ان کے والد لیکھ پال کے عہدے پر فائز ہیں ۔دو بھائی اور دو بہنوں میں سیرت فاطمہ سب سے بڑی ہیں ۔بڑی بیٹی نے یہ کامیابی حاصل کرکے پورے خاندان کا نام روشن کیا ہے ۔دور دراز کے گاؤں میں رہنے باجود انہوں نے جو غیر معمولی کامیابی حاصل کی ہے ہو دوسروں کے لئے ایک مثال ہے ۔
      مشتاق عامر کی رپورٹ
      First published: