اناو آبروریزی کیس : ملزم ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر سے آج پوری رات ہوسکتی ہے پوچھ گچھ

اناو اجتماعی آبروریزی کیس میں متاثرہ کے والد کی موت کے معاملہ میں ملزم ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر کی گرفتاری تقریبا طے ہوچکی ہے ۔

Apr 13, 2018 06:35 PM IST | Updated on: Apr 13, 2018 06:35 PM IST
اناو آبروریزی کیس : ملزم ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر سے آج پوری رات ہوسکتی ہے پوچھ گچھ

ملزم ممبر اسمبلی کو سی بی آئی اپنے ساتھ لے جاتی ہوئی ۔

لکھنو : اناو اجتماعی آبروریزی کیس میں متاثرہ کے والد کی موت کے معاملہ میں ملزم ممبر اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر کی گرفتاری تقریبا طے ہوچکی ہے ۔ حالانکہ ابھی تک باضابطہ طور پر اس کی تصدیق نہیں کی گئی ہے۔ تاہم بتایا جارہا ہے کہ لکھنو کی سی بی آئی عدلت میں ملزم ممبر اسمبلی کی کل پیشی ہوگی ۔ سی بی آئی عدالت میں سینگر کی ٹرانزٹ ریمانڈ کیلئے بھی عرضی داخل کرے گی ۔ اس کے ساتھ ہی سی بی آئی آج پوری رات ممبر اسمبلی اور اناو کے ماکھی تھانہ سے حراست میں لئے گئے 6 پولیس اہلکاروں کو آمنے سامنے بیٹھا پوچھ گچھ کرے گی ۔اس کیلئے انہیں پی ڈبلیو ڈی گیسٹ ہاوس میں منتقل کیا جائے گا۔ گیسٹ ہاوس کے ارد گرد سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ جمعہ کی صبح سویرے چار بجے سی بی آئی کی ٹیم نے ملزم ممبر اسمبلی کو اپنی حراست میں لیا تھا ۔ اس کے بعد سے ہی سی بی آئی کی ٹیم مسلسل بی جے پی ممبر اسمبلی سے کئی امور پر پوچھ گچھ کررہی تھی۔ اس درمیان سی بی آئی کی ٹیم اناو بھی پہنچی ۔ وہاں متاثرہ اور اس کے اہل خانہ سے پوچھ گچھ کی گئی ۔ اس کے بعد ماکھی تھانہ کے چھ پولیس اہلکاروں کو بھی حراست میں لے لیا ،جنہیں لے کر سی بی آئی کی ٹیم لکھنو آرہی ہے۔ اس کے علاوہ پولیس نے ایس پی ، پوسٹ مارٹم رپورٹ کرنے والے ڈاکٹر ، علاج کرنے والے ڈاکٹروں سے بھی پوچھ گچھ کی ہے۔

اس سے پہلے ہائی کورٹ نے بھی معاملہ میں داخل ایک عرضی پر فیصلہ دیتے ہوئے ریاستی حکومت کے وکیل راگھویندر سنگھ سے گرفتاری نہ ہونے پر اعتراض کیا تھا ۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ حراست نہیں ، سی بی آئی ملزم ممبر اسمبلی کی فوری گرفتاری کرے۔

Loading...

Loading...