کملیش تیواری قتل کیس : راہگیروں سے فون مانگ کر استعمال کررہے ہیں قتل کے ملزمین

ہندو سماج پارٹی کے قومی صدر کملیش تیواری قتل کیس میں شامل مشتبہ ملزمین اب راہ گیروں سے فون مانگ کر استعمال کررہے ہیں ۔

Oct 21, 2019 04:27 PM IST | Updated on: Oct 21, 2019 04:27 PM IST
کملیش تیواری قتل کیس : راہگیروں سے فون مانگ کر استعمال کررہے ہیں قتل کے ملزمین

کملیش تیواری قتل کیس : راہگیروں سے فون مانگ کر استعمال کررہے ہیں قتل کے ملزمین

ہندو سماج پارٹی کے قومی صدر کملیش تیواری قتل کیس میں شامل مشتبہ ملزمین اب راہ گیروں سے فون مانگ کر استعمال کررہے ہیں ۔ پولیس ذرائع کے مطابق دونوں ملزمین پکڑے جانے کے ڈر سے مسلسل اپنی جگہ تبدیل کررہے ہیں ۔ اتوار رات کو پولیس کو دونوں کی جگہ ہریانہ کے امبالہ میں ہونے کی جانکاری ملی تھی ۔ حالانکہ رات 12 بجے پولیس کو پتہ لگا کہ یہ اترپردیش کے شاہجہاں پور میں ہوسکتے ہیں ۔

پولیس ذرائع کے مطابق دونوں ملزمین اپنا فون استعمال کرنے کی بجائے کسی راہ گیر سے بہانہ بناکر فون مانگ کر استعمال کرتے ہیں اور آگے نکل جاتے ہیں ۔ فی الحال پولیس کی کئی ٹیمیں دونوں ملزمین کی تلاش کررہی ہیں ۔ ذرائع کے مطابق ملزمین نیپال نہیں جانا چاہتے ہیں ، بلکہ ان کا مقصد کچھ اور ہی ہے ۔ وہیں گجرات کے سورت سے لکھنو لائے گئے تین مشتبہ افراد سے پوچھ گچھ کر کے دونوں ملزمین کے بارے میں جانکاری حاصل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

Loading...

اس معاملہ میں اب تک پولیس نے 74 سی سی ٹی وی فوٹیج کو کھنگالا ہے ، جس کی بنیاد پر یو پی پولیس قتل کے ملزمین کے نزدیک پہنچنے کی کوشش میں ہے ۔ حالانکہ ابھی تک پولیس کو کوئی کامیابی نہیں ملی ہے ۔ دونوں مسلسل اپنا حلیہ بدل کر چھپ رہے ہیں ۔ وہ اپنا موبائل بھی سات آٹھ گھنٹے بعد آن کر رہے ہیں اور اس کے بعد پھر سوئچ آف کردے رہے ہیں ۔

بتادیں کہ گزشتہ 18 اکتوبر کو کملیش تیواری کا لکھنو میں اس کے گھر میں قتل کردیا گیا تھا ۔ اس قتل میں گجرات سے تین اور اترپردیش سے دو افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ اترپردیش کے دو مولاناوں کی بھی جانچ کی جارہی ہے ۔ سال 2015 میں ان دونوں نے کملیش تیواری کا سر قلم کرنے والوں کو ڈیڑھ کروڑ روپے انعام کے طور پر دینے کا اعلان کیا تھا ۔

Loading...