உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP Election Results:رجحانات پر اکھیلیش یادو نے کہا : وقت آگیا ہے اب 'فیصلوں' کا

    UP Election Results 2022: سمبلی انتخابات کے نتائج کے ابتدائی رجحانات کے بعد ایس پی لیڈر اکھلیش یادو نے اپنے کارکنوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ 'امتحان باقی ہے ابھی حوصلوں ، وقت آگیا ہے اب 'فیصلوں' کا ۔

    UP Election Results 2022: سمبلی انتخابات کے نتائج کے ابتدائی رجحانات کے بعد ایس پی لیڈر اکھلیش یادو نے اپنے کارکنوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ 'امتحان باقی ہے ابھی حوصلوں ، وقت آگیا ہے اب 'فیصلوں' کا ۔

    UP Election Results 2022: سمبلی انتخابات کے نتائج کے ابتدائی رجحانات کے بعد ایس پی لیڈر اکھلیش یادو نے اپنے کارکنوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ 'امتحان باقی ہے ابھی حوصلوں ، وقت آگیا ہے اب 'فیصلوں' کا ۔

    • Share this:
      UP Election Results: اترپردیش اسمبلی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی شروع ہوتے ہی تجربہ کار لیڈروں کے ردعمل سامنے آنے لگے ہیں۔ اسمبلی انتخابات کے نتائج کے ابتدائی رجحانات کے بعد ایس پی لیڈر اکھلیش یادو نے اپنے کارکنوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ 'امتحان باقی ہے ابھی حوصلوں ، وقت آگیا ہے اب 'فیصلوں' کا ۔ اکھلیش نے مزید لکھا کہ 'گنتی مراکز پر دن رات چوکسی اور مستعدی کے ساتھ سرگرم رہنے کے لئے ایس پی اتحاد کے ہر کارکن، حامی، لیڈر، عہدیدار اور خیر خواہ کا تہہ دل سے شکریہ! 'جمہوریت کے سپاہی' صرف جیت کا سرٹیفکیٹ لے کر لوٹتے ہیں!

       

      یہ بھی پڑھئے :  اپنی اپنی سیٹوں سے پیچھے چل رہے ہیں تین موجودہ وزرائے اعلی، دو ریاستوں میں بی جے پی کی ساکھ داو پر


      اکھلیش نے اس سے قبل بدھ کی رات بھی ٹویٹ کیا تھا کہ 'گنتی کے مراکز کو 'جمہوریت کی یاترا' سمجھ کر وہاں جائیں اور ڈٹے رہیں اور حکمراں پارٹی کی طرف سے انتخابی نتائج میں ہیرا پھیری کی ہر سازش کو نا ممکن بنادیں!'۔ اس کے علاوہ اکھلیش نے ایس پی اتحاد کی جیت کا دعویٰ کرتے ہوئے بی جی پے پر الزام بھی لگایا۔ اکھلیش نے لکھا کہ 'ایس پی اتحاد جیت رہا ہے، تبھی تو بی جے پی دھاندلی کی کوشش کر رہی ہے'۔

      ابتدائی رجحانات میں بی جے پی کو اتر پردیش، منی پور، اتراکھنڈ میں زبردست برتری حاصل ہوتی دکھائی دے رہی ہے۔ تاہم پنجاب عام آدمی پارٹی اور گوا میں کانریس بھی ٹکر دیتی نظر آرہی ۔ ابتدائی اعداد و شمار بتا رہے ہیں کہ یوپی میں ایک بار پھر بی جے پی حکومت اقتدار میں واپس آ رہی ہے۔

      یہ بھی پڑھئے : یوپی، اتراکھنڈ کے رحجانات میں BJP کو اکثریت، پنجاب میں آپ نے سب کو پچھاڑا


      اپنی اپنی سیٹوں سے پیچھے چل رہے ہیں تین موجودہ وزیر اعلی

      دریں اثنا خبر ہے کہ تین وزرائے اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی، پشکر سنگھ دھامی اور پرمود ساونت اپنی اپنی سیٹوں سے پیچھے چل رہے ہیں۔ ایک طرف اتر پردیش میں بھارتیہ جنتا پارٹی کو زبردست برتری ملتی نظر آ رہی ہے تو وہیں اتراکھنڈ اور منی پور میں بھی بی جے پی آگے ہے۔ انتخابی مرحلے سے گزرنے والی پانچ میں سے چار ریاستوں میں بی جے پی کی حکومت ہے۔

      پنجاب کے وزیر اعلی چرنجیت سنگھ چنی چمکور صاحب اور بھدور دو سیٹوں سے میدان میں ہیں۔ ابتدائی رجحانات میں چنی عام آدمی پارٹی کے ہاتھوں دونوں سیٹوں سے پیچھے دکھائی دے رہے ہیں۔ ایک طرف چمکور صاحب سے عام آدمی پارٹی کے چرنجیت سنگھ آگے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی بھدور میں بھی اے اے پی کے امیدوار لبھ سنگھ بڑے فرق سے آگے چل رہے ہیں۔

      اتراکھنڈ میں سی ایم دھامی کھٹیما سیٹ سے پیچھے چل رہے ہیں۔ اس کے علاوہ سابق سی وزیر اعلی منوہر پاریکر کے انتقال کے بعد گوا کا چارج سنبھالنے والے پرمود ساونت بھی سنکلم سیٹ سے پیچھے ہیں۔ یہاں کانگریس امیدوار دھرمیش سنگلانی ساونت کو سخت مقابلہ دے رہے ہیں۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: