உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Asaduddin Owaisi پر حملہ معاملہ میں پولیس کے ہاتھ لگے اہم سراغ، کال ریکارڈنگ اور چیٹ سے ہوگا بڑا انکشاف!

    Asaduddin Owaisi پر حملہ معاملہ میں پولیس کے ہاتھ لگے اہم سراغ، کال ریکارڈنگ اور چیٹ سے ہوگا بڑا انکشاف!

    Asaduddin Owaisi پر حملہ معاملہ میں پولیس کے ہاتھ لگے اہم سراغ، کال ریکارڈنگ اور چیٹ سے ہوگا بڑا انکشاف!

    Asaduddin Owaisi News : اترپردیش میں جاری اسمبلی انتخابات کو لے کر سیاسی گھمسان کے درمیان اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی پر ہوئے حملے کے معاملہ میں پولیس کوئی کئی سراغ ملے ہیں ۔

    • Share this:
      ہاپوڑ : اترپردیش میں جاری اسمبلی انتخابات کو لے کر سیاسی گھمسان کے درمیان اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی  (Asaduddin Owaisi) پر ہوئے حملے کے معاملہ میں پولیس کوئی کئی سراغ ملے ہیں ۔ میرٹھ سے انتخابی مہم ختم کرکے دہلی لوٹتے وقت ہاپوڑ میں چھجارسی ٹول گیٹ پر اسد الدین اویسی  (Asaduddin Owaisi News)  پر فائرنگ معاملہ میں پولیس نے دو موبائل فون برآمد کئے ہیں ۔ بتادیں کہ پلکھوا کے جھجارسی ٹول پر تین فروری کو اویسی کے قافلہ پر حملہ ہوا تھا ۔

      بتایا جارہا ہے کہ پولیس کو ملزم سچن اور شبھم کی 24 گھنٹے کی ریمانڈ ملی تھی ۔ پولیس نے ریمانڈ کے دوران ہی پوچھ گچھ میں ملزمین کی نشاندہی پر دو موبائل فون برآمد کئے ۔ پولیس کو موبائل کھنگالنے پر وہاٹس ایپ چیٹ اور کال ریکارڈنگ بھی ملی ہے ۔ بتادیں کہ پولیس نے اس شخص کو بھی گرفتار کرلیا ہے ، جس نے حملے کے اہم ملزم سچن شرما کو طمنچہ مہیا کرایا تھا ۔

      نیشنل ہائی وے پر واقع چھجارسی ٹول پلازہ پر گزشتہ تین فروری کی شام تقریبا ساڑھے پانچ بجے آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے قومی صدر اور حیدر آباد سے ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی کے قافلہ میں شامل گاڑیوں پر دو حملہ آوروں نے فائرنگ کی تھی ۔ حملے کے دوران اویسی اپنے حامیوں کے ساتھ میرٹھ کے کیٹھور میں انتخابی ریلی کرکے دہلی لوٹ رہے تھے ۔

      اویسی نے ٹویٹر پر حملے کی جانکاری دی تھی ۔ اس کے بعد لکھنو سے لے کر دہلی تک کی سیاست گرما گئی تھی ۔ ساتھ ہی لیڈروں کی سیکورٹی کو لے کر بھی سوالات اٹھنے لگے تھے ۔ پولیس نے حملے کے اگلے ہی دن چار فروری کو ملزم سچن اور شبھم کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا تھا ۔

      گرفتار ملزمین نے پولیس کی پوچھ گچھ میں ہتھیار میرٹھ کے منڈالی سے خریدنے کا انکشاف کیا تھا ۔ اسی وقت سے پولیس ملزمین کو ہتھیار سپلائی کرنے والے کی تلاش میں مصروف میں تھی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: