உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Meerut : امیدواروں نے جھونکی طاقت، ریلیوں پر پابندی کے بعد گھر گھر کنونسنگ پر زور

    اُتر پردیش کے اسمبلی انتخابات (UP Assembly Elections 2022) میں پہلے مرحلے کی پولنگ کے لئے گیارہ اضلاع کی اٹھاون سیٹوں پر دس فروری کو ووٹ ڈالے جائیں گے ۔

    اُتر پردیش کے اسمبلی انتخابات (UP Assembly Elections 2022) میں پہلے مرحلے کی پولنگ کے لئے گیارہ اضلاع کی اٹھاون سیٹوں پر دس فروری کو ووٹ ڈالے جائیں گے ۔

    اُتر پردیش کے اسمبلی انتخابات (UP Assembly Elections 2022) میں پہلے مرحلے کی پولنگ کے لئے گیارہ اضلاع کی اٹھاون سیٹوں پر دس فروری کو ووٹ ڈالے جائیں گے ۔

    • Share this:
    میرٹھ : اُتر پردیش کے اسمبلی انتخابات (UP Assembly Elections 2022) میں پہلے مرحلے کی پولنگ کے لئے گیارہ اضلاع کی اٹھاون سیٹوں پر دس فروری کو ووٹ ڈالے جائیں گے ۔ پرچہ نامزدگی کا سلسلہ ختم ہونے کے بعد سے سبھی پارٹی کے اُمیدواروں نے کنوینسنگ میں اپنی پوری طاقت لگا دی ہے ، لیکن سیاسی ریلیوں پر الیکشن کمیشن کی پابندیوں کے سبب اب امیدوار اپنے اسمبلی حلقوں میں گھر گھر جا کر کنوینسنگ پر زیادہ زور دے رہے ہیں ۔ میرٹھ کی سات اسمبلی سیٹوں پر بڑی سیاسی جماعتوں کے امیدوار صبح سے لے کر رات تک کنوینسنگ میں مصروف ہو گئے ہیں ۔

    2017 اسمبلی انتخابات میں میرٹھ کی سات اسمبلی سیٹوں میں سے چھ پر فتح حاصل کرکے بی جے پی نے شاندار کامیابی حاصل کی تھی ، لیکن اس مرتبہ کسی بھی سیٹ پر لڑائی آسان نظر نہیں آ رہی ہے ۔ ایک طرف جہاں سماجوادی پارٹی نے آر ایل ڈی کے ساتھ اتحاد میں امیدوار اتار کر بی جے پی کے لئے چیلنج پیش کرنے کی کوشش کی ہے ۔ وہیں بی ایس پی نے بھی اپنے روایتی ووٹ بینک کے دم پر ہر سیٹ پر مقابلہ کو کڑا اور دلچسپ بنا دیا ہے ۔

    ادھر ریلیوں پر پابندی کے سبب بڑے پارٹی لیڈران کے تشہیر نہ کر پانے کی وجہ سے اب امیدواروں پر کنوینسنگ کا دباؤ بڑھ گیا ہے اور امیدواروں نے بھی پوری طاقت لگا دی ہے ۔

    الیکشن میں ایک ایک ووٹ کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے امیدوار کوئی کسر باقی نہیں رکھنا چاہتے ہیں ۔ خاص طور دیہی علاقوں میں گاؤں گاؤں جاکر پنچایت الیکشن کی طرز پر امیدوار اپنے لئے ووٹ کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: