உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Uttar Pradesh : فرقہ وارانہ تشدد اور ہماری ذمہ داریاں 

    Uttar Pradesh : فرقہ وارانہ تشدد اور ہماری ذمہ داریاں 

    Uttar Pradesh : فرقہ وارانہ تشدد اور ہماری ذمہ داریاں 

    Uttar Pradesh : گزشتہ روز کے فساد نے جو منظر نامہ پیش کیا ہے، وہ حساس لوگوں کے سامنے کئی تصویریں پیش کرتا ہے اور انہیں بہت کچھ سوچنے اور غور کرنے کی دعوت دیتا ہے ۔

    • Share this:
    لکھنو : اتر پردیش کے سیاسی سماجی اور اقتصادی حالات جتنی تیزی سے تبدیل ہوئے ہیں اور ہو رہے ہیں وہ کسی سے پوشیدہ نہیں۔ ایک طرف بر سر اقتدار حکومت کے کامیابیوں پر مشتمل دعوے ، دوسری طرف حزب اختلاف کی الزام تراشیاں اور درمیان میں زندگی کے مسائل اور الجھنوں میں گھرے ہوئے  پریشان حال لوگ ۔ کانپور میں رونما ہوئے گزشتہ روز کے فساد نے جو منظر نامہ پیش کیا ہے، وہ حساس لوگوں کے سامنے کئی تصویریں پیش کرتا ہے اور انہیں بہت کچھ سوچنے اور غور کرنے کی دعوت دیتا ہے ۔ یہ نہایت افسوسناک ہے کہ جس دن صدر جمہوریہ، وزیر اعظم،  گورنر، اتر پردیش وزیر اعلیٰ اور ملک و بیرون ملک کے چھوٹے بڑے صنعت کار اور دیگر اہم لوگ موجود ہوں، اسی دن شہر مذہبی بنیادوں پر دنگے فساد کی نذر ہونے لگے ۔ معاملہ اہانتِ رسول پر مبنی  بی جے پی لیڈر کے ایک حقارت آمیز اور نفرت انگیز بیان سے شروع ہوا اور پھر فرقہ وارانہ کشیدگی سے فساد تک پہنچ گیا۔ بی جے پی لیڈر نوپور شرما پر الزام ہے کہ انہوں نے جو کلمات رسول خدا کی شان میں اداکئے وہ قابل مذمت ہیں، ان کو معافی مانگنی چاہئے  گرفتار کیا جانا چاہئے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : دہلی میں جماعت اسلامی ہند کی پریس کانفرنس، Target Killing کی مذمت کی


    بیانات کو لے کر لوگوں میں اشتعال بھی تھا اور غم و غصہ بھی ۔ کچھ لوگوں نے نوپور کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ، احتجاجاً اپنی دوکانیں بند کرکے گستاخِ رسول کو گرفتار کرنے کے لئے آوازیں بلند کیں اور اسی دوران شر پسند عناصر نے موقع کا فائدہ اٹھاکر آگ میں گھی ڈالنے کا کام کیا ، اور پھر پتھر بازی ، پولس کی لاٹھی چارج اور کارروائیوں نے ہنستے بولتے اور چلتے پھرتے  کانپور کے کئی محلّوں اور علاقوں کو خاموش کردیا ۔ اکھلیش یادو کہتے ہیں کہ بی جی پی کی موجودہ حکومت ہر محاذ پر ناکام ہے ، خفیہ ایجنسیوں  کی یہ بڑی ناکامی ہے کہ جس شہر میں صدر جمہوریہ اور وزیر اعظم موجود ہوں وہاں کا ماحول اس قدر خراب ہوجائے ۔

    اکھلیش یادو کے بیان کے رد عمل میں  اتر پردیش کے نائب وزرائے اعلیٰ کے جو بیانات سامنے آئے ہیں وہ بھی خاصے اہم ہیں برجیش پاٹھک نے کہا کہ یہ یوگی حکومت ہے یہاں دنگائیوں کو پالا نہیں جاتا پلاین کرایا جاتا ہے ، جو لوگ بھی ان کارگزاریوں کے پیچھے ہیں انہیں بخشا نہیں جائے گا سخت سزا دی جائے گی ، کیشو پرساد موریہ کے مطابق حالیہ فساد کے پیچھے کچھ لوگوں کی منصوبہ بند سازش ہے جسے بے نقاب کرکے مجرموں کو سزا دی جائے گی اس باب میں وزیر اعلیٰ اتر پردیش نے بھی سخت ہدایات جاری کردی ہیں اور  اتر پردیش کے اے ڈی جی لا انڈ آرڈر پرشانت کمار نے تو یہاں تک کہہ دیا ہے کہ فساد برپا کرنے والوں کی املاک ضبط کرکے ان پر گینگسٹر ایکٹ لگایا جائے گا کہا جا سکتا ہے کہ اب لوگوں کو پولس کا عتاب بھی جھیلنا ہے ۔

    نوپور شرما کی  گرفتاری ہوگی یا نہیں ، ان کے خلاف پارٹی کوئی ایکشن لے گی یا نہیں یہ تو یقین سے نہیں کہا جا سکتا لیکن اتنا ضرور ہے کہ کانپور کے کچھ لوگ پولس کارروائی کی زد میں آکر متاثر ضرور ہو سکتے ہیں ۔ اہانت رسول کے ملزم کی گرفتاری کا مطالبہ کرنے  والے ظفر حیات سمیت کئی لوگوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور یہ عمل مزید تیزی سے جاری ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : Hajj 2022: کوچی امبارکیشن پوائنٹ سے ہندوستانی عازمین حج کی پہلی پرواز روانہ


    شہر کے امن پسند لوگ قومی یکجہتی اتفاق و اتحاد کو برقرار رکھنے والے علماء و دانشور اور سماجی کارکن لوگوں سے اپیل کررہے ہیں کہ وہ مشتعل نہ ہوں غم و غصے پر قابو رکھیں ،اور کوئی ایسا کام نہ کریں جس سے کسی شخص ، شہر، ریاست کا نقصان ہو، یہ ملک نفرتوں سے نہیں صرف اور صرف محبتوں سے ہی چل سکتا ہے ، نفرت پھیلانے والے مُٹّھی بھر لوگ اپنے ذاتی مفاد کے لئے  اشتعال انگیز بیان دیتے ہیں لوگوں میں مذہبی منافرت پھیلاتے انہیں لڑواتے اور فائدہ اٹھاتے ہیں۔

    لہٰذا لوگوں کو چاہئے کہ وہ اپنی ذمہداریوں کو سمجھتے ہوئے  شر پسند عناصر کی سازشوں کو سمجھیں اور صبر و تحمل سے کام لیتے ہوئے ہم آہنگی بھائی چارے اور قومی یکجہتی کو برقرار رکھیں ۔ یہ ہمیشہ یاد رکھیں کہ

    تمہاری نفرتوں کی آگ میں سب کچھ نہ جل جائے

    کہ تم دونوں کو اس بستی میں آئندہ بھی رہنا ہے
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: